ادب نامہ    ( صفحہ نمبر 116 )

بیس لفظوں کی کہانی۔۔۔ سید عون رضوی

بارے کچھ یوسفی صاحب کے—– احمد رضوان

یوسفی صاحب سے ہماری اولین شناسائی شبِ تنہائی میں “چراغ تلے” ہوئی اور ایسی ہوئی کہ پھر اس کے بعد ۔۔میں میں نہ رہااور جو رہی تو باخبری رہی۔ جی ہاں ہمارے جیسے بے بضاعت ،کم فہم  و علم انسان←  مزید پڑھیے

مثنوی معنوی از مولانا روم۔۔۔ قسط نمبر 6 ۔۔۔۔ لالہ صحرائی

مثنوی معنوی از پیرِ رُوم نثر نگاری و اندازِ بیان لالہء صـحـرائی بادشاہ کا لونڈی پر عاشق ہونا: اے دوستو، یہ قصہ سنو، یہ خود ہمارے موجودہ حال کی حقیقت ہے، اگر ہم اپنی موجودہ حالتوں کا سراغ لگائیں اور←  مزید پڑھیے

خوفو……………..سجاد حیدر

وہ نہ تو کوئی عظیم جنگجو تھا, نہ ہی اس نے اردگرد کی ریاستوں کو فتح کر کے کسی عظیم سلطنت کی بنیاد رکھی تھی. نہ اس نے اپنے عوام کی حالت بہتر بنانے کے لیئے کوئی بڑی اصلاحات کی←  مزید پڑھیے

اسلام کو مولوی سے ہی کیوں بچائیں؟۔۔۔۔۔۔۔ رانا تنویر عالمگیر

رانا تنویر کتاب “اسلام کو مولوی سے بچاو” کے مصنف ہیں۔ زیر نظر مضمون کتاب کا تعارف ہے بلا ہچکچاہٹ میں یہ اعتراف کرتا ہوں کہ میں ایک ناقص طالب علم ہوں لیکن میری خواہش ہے کہ اس خوبصورت دنیا←  مزید پڑھیے

مشاہدات و عالمِ رویاتِ سہیل۔۔۔۔۔۔ سہیل اکبر کروٹانہ

چند روز قبل دیکھا کئے،،،، ایک سڑک پر جلوس رواں دواں تھا،،، اس جلوس کی قیادت کے فرائض المرشد قسم کے ایک صاحب کر رہے تھے جب کہ ان سے تین قدم کے فاصلے پر ایک اور صاحب کافی بڑے←  مزید پڑھیے

ارتقا کا اگلا قدم۔۔۔ ادریس آزاد

میرے پچھلے مضمون عید کا عنوان تھا، ’’نظریۂ ارتقأ، نیچرل سیلکشن اور انسانیت کا مستقبل‘‘۔ اس مضمون کا مرکزی مقدمہ یہی تھا یعنی ’’ارتقأ کا اگلا قدم انسان کا اخلاقی طور پر بہترہوجانا ہوگا‘‘ ۔ میرے مقدمہ پر بہت سے←  مزید پڑھیے

قربانی— سید عون شیرازی

گل نرگس۔۔۔ مبین امجد

جانے ابا کو ان پھولوں میں وہ حسن کیوں نہیں نظر آتا جو ان پھولوں کا خاصہ ہے۔ شاید ابا بوڑھا ہوگیا ہے۔ اور ورڈزورتھ جوان تھا۔ اس لیے مگر۔۔۔۔۔۔جوان تو میں بھی ہوں۔ اور پھولوں کو دیکھتا بھی ہوں۔←  مزید پڑھیے

حسرت۔۔۔ فضل قدیر خان

وہ اک عام سی شام تھی مگر میرے لئے اچانک خاص ہوگئی ابھی سورج غروب ہونے میں کچھ لمحے باقی تھے.افق کی سرخی اور سورج کی زردی بتارہی تھی کہ اندھیرے کچھ لمحوں میں اپنے پر پھیلادینگے .. میں سر←  مزید پڑھیے

شیخ سعدی کے تعاقب میں۔۔۔۔ اویس قرنی

سیر و سیاحت کا شوق تو تقریباً ہر انسان میں پایا جاتا ہے۔ اس دنیا کے بے شمار انسانوں میں سے مشہور سیاح بھی بہت گزرے ہیں۔ کچھ اٹھے زمین ناپ آئے، پھر اپنا وقت آنے پر مر گئے۔ اور←  مزید پڑھیے

نظریہ ارتقأ ، نیچرل سیلکشن اور انسانیت کا مستقبل۔۔۔۔۔ ادریس آزاد

میں اکثر کہا کرتاہوں کہ ارتقأ کا اگلہ مرحلہ انسان کا اخلاقی طور پر بہتر ہوجاناہوگا۔ نیچرل سیلیکشن کا عظیم قانون دیکھا جائے تو ثابت ہوتاہے کہ انسان جس چھلنی سے چھانے جارہے ہیں، اب صرف وہی ڈی این اے←  مزید پڑھیے

مناجات بیوہ جدید ۔۔۔۔ حافظ صفوان محمد چوہان

ہم اس غلط فہمی میں مبتلا رہے کہ مرد سری معاشرہ صرف ہمارے پاکستان ہندوستان میں ہے لیکن کئی سال سے بکرعید کے موقع پر شائع ہونے والی تحریروں کو پڑھنے سے اندازہ ہوا ہے کہ یہ گھناؤنا رواج ساری←  مزید پڑھیے

انشائیہ : چن چن دے سامنے آگیا ۔۔۔۔ لالہء صحرائی

چھوٹی عید کا چاند سمارٹ ہوتا ہے۔ یہ فوری طور پر نافذ العمل ہو جاتا ہے۔ اس لئے اگلی ہی صبح عید کرنی پڑتی ہے۔ بڑی عید کے چاند میں بڑاپن اور بُردباری ہوتی ہے، اس لئے دس دن سوچنے←  مزید پڑھیے

Short story

دیالو قوم کے منگتے ۔۔۔۔ شاد مردانوی

اس کی آٹھ ماہ کی بچی ضیق النفس کے عارضے میں ابتلاء سے گزر رہی تھی. ہر گزرتا دن بیماری کو بڑھاوا دے رہا تھا. اور ہر نیا دن اس کی ایک اور امید کا قاتل بن کر طلوع ہوتا←  مزید پڑھیے

دائرۃ الکہلاء۔۔۔۔ اویس قرنی

جگر صاحب کا پہلی بار تقریبا ًتین ماہ بھوپال میں قیام رہا اس کے بعد وہ واپس چلے گئے اور ایک سال بعد وہ دوبارہ تشریف لائے اور محمود علی خان جامعی کے یہاں قیام کیا ۔ جو اس وقت←  مزید پڑھیے

جنسی اختلاط –شیراز چوھان سوز

جنسی اختلاط کیا ہے ؟ اسے کیسے سمجھا جائے ، اور اس بارے بات پر کتنی توجہ دی جائے؟ کیا جنسی اختلاط ایک ایسا عمل ہے کہ جسے صرف بچے جننے کیلئے کیا جائے ؟ کیا ایک دوسرے کے لمس←  مزید پڑھیے

مثنوی معنوی از مولانا رومؒ ۔ قسط نمبر 5 ۔ لالہ صحرائی

مثنوی معنوی از پیرِ رُومی نثر نگاری و اندازِ بیان لالہء صـحـرائی بانسری کا بیان: مثنوی شریف بانسری کے باطنی مفہوم سے شروع ہوتی ھے اور اسی کی تشریح میں مولانا روم ایک سے ایک نئی گرہ کھولتے چلے جاتے←  مزید پڑھیے

ثنا قبر تہ وڑی۔۔۔۔۔ بلال حسن زئی

یہ ان دنوں کی بات ہے جب میں اپنے گاؤں کے ایک اسکول میں پڑھا کرتا تھا، اسکول کیا تھا؟ گارے کی کچی دیواریں اور ان پہ بنی ٹین کی چھت، جو معمولی آندھی سے کھیتوں میں بکھر جاتی تھی،←  مزید پڑھیے