ڈاکٹر مختار مغلانی کی تحاریر

سایہ /ڈاکٹر مختیار ملغانی

پہلی نظر میں ہمارے، میں، اور ، غیر میں، کے درمیان فرق بہت آسان لگے گا، ہم سب جانتے ہیں کہ ہمارے جسمانی وجود کی حدود کہاں سے شروع ہو کر کہاں ختم ہو رہی ہیں ۔ یہی نہیں بلکہ←  مزید پڑھیے

اشرافیہ کے مغالطے /ڈاکٹر مختیار ملغانی

والٹیئر کے اس بیان کو غیر ضروری شہرت حاصل ہوئی کہ اگر خدا موجود نہیں بھی ہے تو اسے گھڑ لینا چاہیئے۔ ان کے کہنے کا مقصد یہ تھا کہ خدا اگر نہیں بھی ہے تو اس کے تراشنے سے←  مزید پڑھیے

روح کی تاریک شب /ڈاکٹر مختیار ملغانی

اپنی زندگی میں ہر انسان مشکلات، ناکامیوں، اضطراب اور مایوسیوں سے گزرتا ہے، بعض اوقات یہ دورانیہ اس قدر طویل ہو سکتا ہے کہ فرد اسے ہی زندگی کی حقیقت سمجھتے ہوئے سمجھوتہ کر لیتا ہے یا پھر آخری وار←  مزید پڑھیے

افسانۂ غار/ڈاکٹر مختیار ملغانی

اساطیر میں سب سے اہم اسطورہ جس کا فلسفیانہ بیانیے میں بارہا ذکر ہوتا آیا ہے وہ افلاطون کا افسانۂ غار ہے، اس کے بے دریغ استعمال کا نقصان یہ ہوا کہ اس کی گہرائی نظر انداز ہوتی چلی گئی۔←  مزید پڑھیے

نئی دنیائیں /ڈاکٹر مختیار ملغانی

انسان کا اپنے اردگرد کی دنیا کے ساتھ تعلق کچھ یوں استوار ہے کہ انفرادی یا اجتماعی سطح پر کچھ بھی اچھا برا اس پہ مسلط کر دیا جائے تو وقت کے ساتھ یہ تسلط ایک معمول میں بدل جاتا←  مزید پڑھیے

سرخ اور سیاہ/ڈاکٹر مختیار ملغانی

یہ فرانسیسی ادیب سٹینڈال کا ناول ہے جو 1830 ء میں لکھا گیا ۔ سٹینڈال کو سمجھنے کیلئے ان کے فلسفیانہ مضامین کو پڑھنا ضروری ہے، محبت پر اپنے ایک مضمون میں انہوں نے آبگینے کا نظریہ پیش کیا، انگریزی←  مزید پڑھیے

اتفاق کیا بلا ہے ؟-ڈاکٹر مختیار ملغانی

یہاں ہم اس اتفاق کی بات نہیں کر رہے جس میں برکت کی وعید دی گئی ہے ، بلکہ وہ اتفاق جس کے ظہور پر “کیا حسین اتفاق ہے” یا پھر “عجیب اتفاق ہے ” جیسے جملے سننے کو ملتے←  مزید پڑھیے

سیاسی معاشرہ اور ریاست /ڈاکٹر مختیار ملغانی

سیاسی سماج اور ریاست دو مختلف بلکہ متضاد تصورات ہیں، ان کی عمومی تشریح اس مادی حد سے آگے نہیں بڑھ پاتی جو ماڈرنزم کے بعد طے پائی ، حالانکہ ان تصورات کا غیر مادی پہلو کہیں اہم اور ضروری←  مزید پڑھیے

ہیں کواکب کچھ/ڈاکٹر مختیار ملغانی

ایک عمومی رائے ہے کہ وہ مرد حضرات جو تن سازی یا کشتی گیری کی طرف رجحان رکھتے ہیں اور مسلسل اس کی مشق کرتے ہیں، ان کے اعضائے تناسل اپنے حجم میں عام افراد سے کم ہوتے ہیں، یا←  مزید پڑھیے

فلسطین اور ہم /ڈاکٹر مختیار ملغانی

اس میں شک نہیں کہ اس وقت فلسطین میں جو ظلم برپا ہے، اس کی مثال تاریخ میں بہت کم ملے گی، دوسری جنگ عظیم میں یہودیوں کے ساتھ جو سلوک ہوا، شاید اس کی “تلافی” اب اسرائیلی حکومت فلسطینیوں←  مزید پڑھیے

انسانی اقدار /ڈاکٹر مختیار ملغانی

قاعدے، ضابطے، اصول اور قانون کا معاملہ یہ ہے کہ ہم کسی اندرونی محرک کے بغیر انہیں قبول کر سکتے ہیں تاکہ سماجی ہم آہنگی برقرار رہے، لیکن کسی بھی قدر (value) کو فرد صرف اسی صورت قبول کرتا ہے←  مزید پڑھیے

گیان بیان اور دھیان /ڈاکٹر مختیار ملغانی

سائنس اور الحاد کا آپس میں گہرا تعلق ہے، الحادی فکر کے افراد ہی سائنس کے میدان میں نئی دریافت اور ایجاد کا بیڑا اپنے سر اٹھائے ہوئے ہیں، آج سائنس کا سٹیٹس ،بطور مضمون، تقریبآ الحادی ہے۔ الحاد کی←  مزید پڑھیے

گناہِ بزدلی/ڈاکٹر مختیار ملغانی

ہومر کے دور سے صاحبانِ مطالعہ اس ادبی طرح سے واقف ہیں کہ ایک اندھا لائبریرین خواب دیکھتا ہے کہ انسانوں کے دو گروہ ہیں، ایک گروہ قلعے کو فتح کرنے کی کوشش کر رہا ہے، جبکہ دوسرا اس کی←  مزید پڑھیے

فریبِ عکس/ڈاکٹر مختیار ملغانی

گزشتہ دنوں پاکستان کے کسی ٹی وی شو میں معروف اینکر پرسن عمران اشرف نے چھوٹی بچی کو سٹیج پر بلایا اور اسے پیار کرنے کیلئے ہاتھ بڑھایا ہی تھا کہ اچانک رک کر اس کی والدہ سے پوچھنے لگے←  مزید پڑھیے

نکتۂ وسعت /ڈاکٹر مختیار ملغانی

پان (Pan) یونانی اساطیر کا وہ خدا ہے جو پیدا ہوا تو بکریوں جیسی ٹانگیں اور سر پہ سینگ تھے ، بچے کی اس خوفناک شکل کو دیکھتے ہی اس کی ماں خوف سے بھاگ کھڑی ہوئی، یہیں سے نفسیات←  مزید پڑھیے

تعلقات کی کنجی /ڈاکٹر مختیار ملغانی

انسان کے اندر ایک ہی ایسی چیز ہے جو اس کی کامیابی اور خوشی کی ضامن ہے، لیکن تضاد دیکھئے کہ یہی چیز اسی انسان کی تمام ناکامیوں اور مایوسیوں کی وجہ بھی ہے، یہ چیز فرد کی شخصی اہمیت←  مزید پڑھیے

مقتدر قوتوں کا سچ /ڈاکٹر مختیار ملغانی

کامل سچائی کو پانا ناممکنات میں سے ہے ، بس فرد کی استطاعت اور صلاحیت کے مطابق اپنی اپنی جزویات ہیں جنہیں ہر شخص کامل سچائی سمجھتا ہے، اسی لئے کہا جاتا ہے کہ ہر ایک کا اپنا اپنا سچ←  مزید پڑھیے

الارم /ڈاکٹر مختیار ملغانی

صبح جب الارم بجتا ہے اور آپ کو اٹھنا ہے تو اس وقت آپ کا ذہن دنیا کا چالاک ترین ذہن بن جاتا ہے، پہلے وہ آپ کو بتائے گا کہ دو دن قبل ہی تو شیو کی تھی، آج←  مزید پڑھیے

فلسفۂ مطالعہ /ڈاکٹر مختیار ملغانی

مطالعے کے انتخاب اور طریقے پر جتنا مواد میسر ہے، اس سے نتیجہ یہی نکالا ہے کہ کئی چیزیں سراسر انفرادی ہیں، ہر شخص پہ ہر اصول لاگو نہیں ہو سکتا، مثلاً کچھ ماہرین کے نزدیک ایسی بُری کتب بھی←  مزید پڑھیے

فالتو سواریوں کو اتارتے جائیں /ڈاکٹر مختیار ملغانی

ہم میں سے ہر شخص ایک مخصوص ماحول میں زندگی گزار رہا ہے، اردگرد رنگا رنگ کے لوگ اور کئی سماجی و ذاتی معاملات درپیش رہتے ہیں، ان سب کو ایک طرف رکھتے ہوئے اگر فرد خود سے سوال کرے←  مزید پڑھیے