اردو، - ٹیگ

دیمک بہتر یا کیڑا؟۔۔روبینہ فیصل

لارڈز لندن ہے۔۔۔اس اگست2020 میں اس بات کو پورے دس سال ہو جائیں گے، ہو سکے تو اس بدنامی کی سالگرہ منالیں اور اُس وقت کے صدر ِ پاکستان آصف زرداری کے وژن کے مطابق،” مل کے کھاؤ اور مٹی←  مزید پڑھیے

مدتوں بعد آج اس نے مجھ سے کوئی گلہ کیا۔۔رؤف کلاسرا

کبھی کبھار آپ کوئی ایسی تحریریں پڑھ لیتے ہیں کہ پرانی یادیں حملہ آور ہوتی ہیں۔ آج غیر متوقع طور پر بادلوں کی گھن گرج سے آنکھ کھل گئی۔ بارشیں اسلام آباد میں ہوتی رہتی ہیں لیکن بادل کبھی کبھار←  مزید پڑھیے

زوال پذیر سیاسی عمل۔۔اسلم اعوان

قومی سیاست پہ جس گہرے جمود نے پنجے گاڑ رکھے ہیں‘ بظاہر اس سے جلد نجات کی کوئی امید نظر نہیں آتی‘ کیونکہ جس طرح اقتدار کے سنگھاسن پہ بیٹھے لوگ مایوسی کے اندھیروں میں ٹامک ٹوئیاں مار رہے ہیں‘اسی←  مزید پڑھیے

فیس ایپ کیسے کام کرتا ہے؟ ۔۔۔ پرویز بزدار

آج کل ایک مرتبہ پھر ہر طرف فیس ایپ کے چرچے ہیں۔آئیے   دیکھتے ہیں کہ یہ کیسے کام کرتا ہے؟ اگرچہ فیس ایپ کی طرف سے یہ ظاہر نہیں کیا گیا کہ وہ کیا طریقہ استعمال کرتے ہیں۔ مگر مجھے←  مزید پڑھیے

ضرورت (سو الفاظ کی کہانی)۔۔سیف الرحمٰن ادیب

“یہ قبولیت کی جگہ ہے۔ یہاں کھڑے ہو کر جس چیز کی ضرورت ہو مانگ لو۔ دعا قبول ہوگی۔ بس شرط یہ ہے کہ توجہ سے مانگنا۔” کسی نے اپنے لیے اولاد کی دعا کی، کسی نے ترقی کا سوال←  مزید پڑھیے

دم گھٹ رہا ہے، ماں۔۔۔ڈاکٹر شاہ محمد مری

کورونا نے دنیا میں تباہی مچا رکھی ہے۔ روزانہ بے شمار لوگ مرنے لگے، خاندان برباد ہوئے۔ پسماندگان کی چیخوں نے دھرتی ہلا کر رکھ دی۔ موبائل فون تعزیتوں کا لاؤڈ سپیکر بنے اور تازہ قبروں سے قبرستانوں کے پیٹ←  مزید پڑھیے

مسئلہ کشمیر پر ہمارا بدلتا ہوا بیانیہ۔۔نذر حافی

بیانیہ دماغوں کو جکڑ لیتا ہے اور دماغ افراد کو قابو کرتے ہیں، دماغوں کو ذرائع ابلاغ کے ذریعے اپنی گرفت میں لیا جاتا ہے۔ یعنی ذرائع ابلاغ اُس طاقت کا نام ہے، جو انسانی اذہان کو بنانے، سنوارنے اور←  مزید پڑھیے

اقبال، فلسفہ اور بغضِ ہودبھائی(دوسرا ،آخری حصّہ )۔۔ارسلان شکیل

ایران کی تاریخ شریعت محمدی سے بھی ہزاروں سال پرانی ہے، اس میں پارسی مذہب کا بھی بہت عمل دخل ہے، بلکہ اسلام سے پہلے ایران میں پارسی مذہب ہی سرکاری مذہب کی حیثیت کا حامل تھا، لہذا اقبال کے←  مزید پڑھیے

امریکہ خود بھی تماشے کا حصہ بن چکا ہے۔۔اسد مفتی

سنتھیا رچی کے ملک امریکہ کا بجٹ خسارہ لگ بھگ سترہ کھرب ڈالر ہوگیا ہے۔صدر ٹرمپ کی جانب سے پیش کیے جانے والے بجٹ کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ عراق اور افغانستان کی جنگوں کے باعث امریکہ کا←  مزید پڑھیے

بہادر شاہ ظفر سلطنت مغلیہ کا آخری فرمانروا۔۔مہرساجدشاد

مرزا ابو ظفر سراج الدین محمد بہادر شاہ ظفر جو اکبر شاہ ثانی کا دوسرا بیٹا تھا لال بائی کے بطن سے 24 اکتوبر 1775ء کو دہلی میں پیدا ہوا۔ ان کا سلسلہ نسب گیارھویں پشت میں شہنشاہ بابر سے←  مزید پڑھیے

چونسہ۔۔سلیم مرزا

وہ نورانی چہرے والا دکاندار ہم دونوں کا واقف نہیں تھا ۔اسی لئے سیدھے سبھاؤ ہی مُکر گیا۔گوجرانوالہ کی  سٹیل مارکیٹ میں اچھے بھلے گودام کا مالک اپنا گودام چھوڑ کر کھوتی ریڑھی پہ رکھے آموں کے کریٹ میں سے←  مزید پڑھیے

ہم ہوں نہ ہوں، گردش میں تارے رہیں گے سدا۔۔ایم بلال ایم

کچھ دن پہلے شام کے پہر طوفان آیا، بجلی بند ہو گئی، کئی درخت گر گئے۔ ہمارے گھر میں لگا سات آٹھ سال پرانا امرود کا درخت بھی شہید ہو گیا۔ کہنے والوں کے لئے اک درخت ہی تو تھا←  مزید پڑھیے

پطرس بخاری اور میرے گاؤں کے کتے۔۔سید کلیم اللہ شاہ بخاری

نوے کی دہائی میں ہمارے گاؤں میں کبھی کسی نے پنٹ شرٹ نہیں پہنی تھی یا کم سے کم گاؤں میں پہن کر اپنا مذاق بنوانے کا رسک نہیں لیا تھا۔ ہم نے بھی نہیں پہنی لیکن کالج میں فوجی←  مزید پڑھیے

وبائی صورتحال میں بلوچ طلبا کا مزاحمتی کردار۔۔زبیر بلوچ

کورونا کے وبائی مرض نے قریب نصف سال مکمل کر لیا ہے۔ اس دوران اس نے زندگی کے تمام شعبہ جات کو گوشہ نشینی اختیار کرنے پر مجبور کیا ہے۔ گوشہ نشینی کی اس زندگی میں جہاں ایک طرف انسانی←  مزید پڑھیے

کرپشن یا نااہلی کون سی چیز زیادہ خطرناک ہے؟۔۔عامر کاکازئی

پاکستان کی موجودہ نااہل، نالائق اور نکمی حکومت کی کارکردگی کے بعد پوری دنیا کے اکانومسٹ اور سوشیالوجسٹ اب یہ سوچنے پر مجبور ہو گئے  ہیں کہ کرپشن یا نااہلی میں سے کون سی چیز زیادہ خطرناک ہے، آپ کس←  مزید پڑھیے

گھروندا ریت کا(قسط18)۔۔۔سلمیٰ اعوان

اب یہ کہیں ممکن تھا کہ جادُو اور وہ بھی عشق کا بھلا سر چڑھ کر نہ بولے گا تو پھر کیا قدموں میں آہ وزاریاں کرتا پھرے گا۔ وہ اِس میدان کی کوئی تجربہ کار کھلاڑی تو تھی نہیں←  مزید پڑھیے

روبرو مرزا غالب اور ستیہ پال آنند

یاد تھیں ہم کو بھی رنگا رنگ بزم آ ٓرائیاں لیکن اب نقش و نگار ِ طاق ِ نسیاں ہو گئیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ستیہ پال آ نند یاد ، یعنی حافظہ، رفت و گذشت و بے خودی یہ سبھی کچھ تھا←  مزید پڑھیے

سعودی عرب میں نئے قائم ہونے والے عجائب گھر۔۔ندیم منصور

سعودی محکمہ سیاحت و قومی ورثے کے مطابق سعودی وژن 2030 کے تصور کی تکمیل کے لئے جو منصوبے سیاحت اور ثقافت کے حوالے سے بنائے گئے ہیں ان میں کئی تاریخی اور بڑے شہروں میں عجائب گھر کے قیام←  مزید پڑھیے

ترنگ۔۔سلیم مرزا

میری یاداشت اتنی شاندار ہے کہ میں نہ صرف لوگوں کے نام ہی بھول جاتا ہوں بلکہ،چہرے بھی یاد نہیں رہتے ۔جس مفکر نے کہا تھا کہ ” انسان ہونے کیلئے نسیان کا ہونا اشد ضروری ہے “میں اس کانام←  مزید پڑھیے

پروفیسر نثار احمد صدیقی (مرحوم) : ایک سادہ لوح انسان اور عظیم استاد۔۔۔راشد حسین شاہ

رات آدھی سے زیادہ بیت چکی ہے مگر آج نیند آنکھوں سے کوسوں دور ہے، بارہا آنکھوں میں پروفیسر نثار احمد صدیقی صاحب کا ہنستا مسکراتا چہرہ اور عاجزی سے بھرپور شخصیت ہی نظر آتی ہے۔ خبر ملی کہ پروفیسر←  مزید پڑھیے