شاکر ظہیر کی تحاریر

روداد ِسفر (50،آخری قسط) مذہبی فکر کی ری کنسٹرکشن۔۔شاکر ظہیر

پاکستان منتقل ہونے کے بعد بہت سی علمی محفلوں میں شرکت کی تو اندازہ ہوا کہ جو آج کی نئی نسل ہے وہ تو بہت آگے چلی گئی ہے ۔ مذہب کے حوالے سے دو انتہائیں پائی جاتی ہیں اور←  مزید پڑھیے

روداد ِسفر (49) تشکیک کا شکار چائنیز مسلمان۔۔شاکر ظہیر

اس طویل سفر میں جو کچھ میں نے تائیوان اور چائنا میں دیکھا اسے معاشرے میں فرد کے مذہب کے حوالے سے نظریات کی تبدیلی کا سفر کہا جا سکتا ہے ۔ ہر علاقے میں لوگوں کے مزاج اور اس←  مزید پڑھیے

روداد سفر (48)چائنہ سے پاکستان واپسی کا فیصلہ۔۔شاکر ظہیر

میری بیٹی حنا کو میری بیوی نے وہیں شاہ تن گاؤں کے ایک پرائمری سکول میں داخل کروایا ۔ چھ ماہ تک وہ وہاں پڑھتی رہی ۔ آخری بار جب میں وہاں شاہ تن گاؤں میں ان کے پاس ایک←  مزید پڑھیے

روداد سفر (47)چائنہ کی ایغور برادری۔۔شاکر ظہیر

عام طور پر لوگوں کا خیال یہ ہے کہ چائنیز اچھی بیوی ثابت نہیں ہوتیں ۔ لیکن ایک معاملے میں مجھے اپنی بیوی کی ایک عادت اتنی پسند ہے  کہ بس بندہ کہتا ہے کہ اور خدا نے حور کیا←  مزید پڑھیے

روداد سفر /مولوی کے پاس صرف کہانیاں ہیں ۔۔قسط 46/شاکر ظہیر

ساتن ( shatian ) گاؤں میں ایک سال تک ہم مقیم رہے ۔ حنا بیٹی اسی اسکول میں پڑھتی تھی اور میری بیوی نے الگ مکان کرائے پر لے رکھا تھا اور وہ قرآن کلاس لیتی تھی ۔ مجھے بھی←  مزید پڑھیے

روداد سفر /عقلی دلائل اور مذہب۔۔قسط 45/شاکر ظہیر

اسی عرصے کے دوران میمونہ ایک دن ہمارے گھر آئی اور اس نے میری بیوی کو بتایا کہ اس نے اپنے بیٹے کو اپنے سسرالی شہر کے قریب ہی موجود ایک گاؤں میں قائم مدرسہ سکول میں تعلیم کےلیے داخل←  مزید پڑھیے

روداد سفر /عقلی دلائل اور مذہب۔۔قسط 44/شاکر ظہیر

تمنا عمادی صاحب کی کتاب ” الطلاق مرتان ” بہت مشکل کتاب تھی یا مجھے مشکل لگی کہ ان کا انداز بیاں ہی بہت مشکل ہے ۔ لیکن مجھے اسے سمجھنا تھا ۔ اس کی وجہ یہ تھی کہ میرے←  مزید پڑھیے

روداد سفر(حصہ 43)عقائد میں پھنسا اسلام/شاکر ظہیر

وی پی این ( VPN ) سے ایک یہ فائدہ ہوا کہ یوٹیوب پر میں نے اسلام کے حوالے سے مواد دیکھنا شروع کیا ۔ سب سے پہلے جن سے واسطہ پڑا وہ شیخ احمد دیدات ، ڈاکٹر ذاکر نائک←  مزید پڑھیے

روداد سفر /نومسلم کے سوالوں کاخوف۔۔قسط 42/شاکر ظہیر

2012 تک سوالات کا ایک ہجوم تھا جو میرے پاس جمع ہو چکا تھا بلکہ میرے سر پر سوار ہو چکا تھا جس کے جوابات میں نے جلد از جلد تلاش کرنے تھے ۔ کہیں سنت کے نام پر کجھور←  مزید پڑھیے

روداد سفر /چائنیز نوجوان کے سوال۔۔قسط 41/شاکر ظہیر

کراچی سے چھندو chengdu پہنچ کر سب گروپس کے راستے جدا جدا ہو گئے ۔ مسٹر چھن اور ان کی پارٹی نے چھنگ شاہ ( Chang sha ) کی فلائٹ لی اور دوسرے شہروں جانے والوں نے وہاں کی ۔←  مزید پڑھیے

روداد سفر /ولی اللہ کو کیسے پہچانیں ؟۔۔قسط 40/شاکر ظہیر

کوئٹہ سے کراچی پی آئی اے کی فلائٹ لی ۔ پتھروں کے کچھ سیمپلز مزید سٹڈی کےلیے ساتھ تھے جس کی وجہ سے ائیرپورٹ پر کسٹم والوں نے کچھ دیر روکا پھر خود ہی جانے دیا ۔ کراچی میں سردار←  مزید پڑھیے

روداد سفر /ریکوڈک سے کوئٹہ تک۔۔قسط 39/شاکر ظہیر

اگلے دن ہماری کراچی سے د البندین کےلیے فلائٹ تھی ۔ یہ ایک چھوٹا فوکر پی آئی اے طیارہ تھا جس میں پچیس تیس مسافر تھے اور طیارے کی سیٹیں بہت آرام دہ اور شاہانہ ۔ راستے میں طیارے پنجگور←  مزید پڑھیے

رودادِ سفر(38)۔۔شاکر ظہیر

مہمانوں کے آ جانے سے میں بھی ایک سائیڈ پر ہو گیا اور اپنی زوجہ محترمہ کو کال کر کے اپنے حالات کی رپورٹ پیش کرنے لگا ۔ وہ بھی ہر بات کی تفتیش کر رہی تھی جو اس کی←  مزید پڑھیے

رودادِ سفر ( 37)/شاکر ظہیر

ہوناں ( Hunan ) صوبے سے مسٹر چھن ( Chen ) میرے واپس ایوو آنے کے بعد بھی رابطے میں رہے ۔ مسٹر چھن ( Chen ) کا پروگرام سردار صاحب کے مائننگ پروجیکٹ میں انوسمنٹ کرنے کا تھا ۔←  مزید پڑھیے

رودادِ سفر (36) ۔۔شاکر ظہیر

مجھے نہیں معلوم ہو سکا کہ کہاں سے تھوڑے تھوڑے دنوں کے بعد میرے بیوی کی سہیلیوں کی لسٹ میں کوئی نہ کوئی نئی انٹری ہوتی رہتی اور مجھے اس کا علم بھی شام کو گھر پہنچ کر ہوتا کہ←  مزید پڑھیے

رودادِ سفر (35) ۔۔شاکر ظہیر

تائیوان بھی کبھی چائنا کا حصہ تھا اور اب بھی دونوں ایک دوسرے پر ملکیت کا دعویٰ کرتے ہیں ۔ میرے سفر تائیوان کے دوران شاید توجہ اس حد تک نہ تھی کہ تفصیل سے تائیوان میں مسلمانوں کے بارے←  مزید پڑھیے

روداد ِسفر حصہ 34 /شاکر ظہیر

چائنا قیام کے دوران جس موضوع پر کسی سے بات کرنا تقریبآ ناممکن شمار کیا جاتا ہے وہ ہے سنکیانگ ۔ لیکن میرا مسئلہ یہ تھا کہ مجھے جہاں بھی اس علاقے کے مسلمان ملتے چاہے وہ ایغور ہوں یا←  مزید پڑھیے

روداد ِسفر حصہ 33 /شاکر ظہیر

کانسو صوبہ میرا سسرالی بن گیا تھا ۔ کئی دفعہ آنا جانا ہوا ۔ تین الگ الگ ذرائع اور الگ الگ شہروں سے گزر کر اپنے سسرالی گاؤں گیا ۔ بس سے ٹرین سے جہاز سے ۔ بس سے (←  مزید پڑھیے

رودادِ سفر (32) ۔۔شاکر ظہیر

ہماری محفل کو اڑھائی گھنٹے ہو گئے تھے ۔ ( HE TONG JUN ) اور ان کی بیوی بھی بہت اطمینان سے ایک ایک بات سمجھا رہے تھے اور ساتھ ساتھ میرے سوالات کی وضاحت بھی کرتے جائے ۔ ان←  مزید پڑھیے

رودادِ سفر (31) ۔۔شاکر ظہیر

میرے جہاں بہت سے مسلمان دوست تھے وہیں ایک ہوناں ( Hunan ) صوبے سے تعلق رکھنے والے بہت پیارے سے دوست مسٹر ( HE TONG ) . بہت پڑھے لکھے اور یہ دوسرے چائینز ہیں جن سے اتنے عرصے←  مزید پڑھیے