رمشا تبسم کی تحاریر

انسانوں کے زہریلے لہجے۔۔۔رمشا تبسم

زمانہ قدیم میں تیر, نیزے, تلوار سب زہر میں بھگوئے جاتے تھے۔ تا کہ دشمن پر جب حملہ کیا جائے تو وہ بچ نہ سکے ۔اگر گھائل ہو کر  زخم سے بچ جائے تو زہر اپنا کام آہستہ آہستہ دکھا←  مزید پڑھیے

آہ!ریحان کا ٹائم آ ہی گیا۔۔۔۔رمشا تبسم

بچپن میں جب ڈر لگتا تھا تو میری ماں مجھے سکھاتی تھی کہ  کلمہ پڑھا کرو , قل شریف پڑھا کرو ۔بڑے سے بڑا جن اور بھوت بھاگ جائے گا۔تقریباً ہم سب کا بچپن ایسا ہی گزرا۔ سب نے زندگی←  مزید پڑھیے

وحشت کی اسیری۔۔رمشا تبسم کی ڈائری “خاک نشین” سے “خود کلامی کی اذیت” کا اقتباس

وصل کا نومولود احساس جب بغل گیر ہونے سے پہلے ہی مار دیا جائے تو ہجر کا سانپ بن بلائے مہمان کی طرح گود میں آ کر پناہ لے لیتا ہے۔جانتے ہو اس نومولود وصل کی لاش ٹھکانے لگانے کے←  مزید پڑھیے

لاہور کے شاپنگ مال میں عورت کی بدمعاشی۔۔۔۔رمشا تبسم

رات کتوں میں بحث جاری تھی انسانیت مر گئی  انسانوں میں! اس بات سے اب قطعی انکار نہیں کہ  ہم اس زمانے میں بے شمار جاہل لوگوں میں انکی جہالت سہتے ہوئے جی رہے ہیں۔کوئی دولت, شہرت یا رتبہ انکی←  مزید پڑھیے

شمع جلائے رکھنی ہے۔۔۔عید اسپیشل/رمشاتبسم

اماں۔ ۔ ۔ اماں یہ کیا ہے ؟ سات سالہ احمد اپنی ماں کے سامنے بھاگتا ہوا آیا۔چولہے کا دھواں احمد کا چہرہ چھپا رہا تھا۔ احمد پیچھے ہو کوئی چنگاری تجھ پر پڑ جائے گی۔ احمد کی ماں نے←  مزید پڑھیے

مسئلہ عمران خان۔۔۔رمشاتبسم

ایک عرصے سے پاکستان میں ایک آواز بلند ہو رہی ہے “ڈٹ کے کھڑا ہے کپتان” اور جتنے یو۔ٹرن عمران خان نے لے لئے اسکے بعد لفظ “ڈٹ” اب خود کھڑا ہوتے ہوئے بھی لڑکھڑاتا ہے۔عمران خان کا یہ ڈٹ←  مزید پڑھیے

وصل کی کوئل کی کائیں کائیں۔ رمشا تبسم کی ڈائری “خاک نشین” سے “خود کلامی کی اذیت کا اقتباس

ہجر کا کالا کوّا  آنکھوں میں ڈیرا ڈال کر بیٹھ چکا ہے۔پلک جھپکتی ہوں تو وہ چیختا ہے۔۔اسکی کائیں کائیں تیز ہو جاتی ہیں۔اسکی آواز بند کرنے کو میں میری پلکیں کھلی رکھے ہوئے ہوں۔اب ان آنکھوں میں نہ نیند←  مزید پڑھیے

کشمیری کوکھ۔۔۔رمشا تبسم

میں وادیِ کشمیر کی کوکھ ہوں۔۔وہ کوکھ جس میں صرف کشمیر کے بچے پیدا ہونے تک نہیں رہتے بلکہ پیدا ہو کر بھی میں ان کو اپنے دامن میں سمیٹے ہوئے ہوں۔۔وہ کوکھ جو ان بچوں کو محفوظ دیکھنے کو←  مزید پڑھیے

زندگی کا گِدھ۔۔۔۔رمشا تبسم

سخت گرمی اور حَبس کی وجہ سے راشد کا جسم پسینے میں شرابور تھا۔ٹوٹی جوتی گھسیٹ کر چلتا ہوا وہ  اُس وقت رُکا جب برگر اور شوارما کی دکان  سے ایک لفافہ  اسکے قدموں میں گرا۔ راشد نے لفافہ  اٹھایا←  مزید پڑھیے

راستے خون پیتے ہیں۔رمشا تبسم کی ڈائری “خاک نشین” سے اقتباس

راستے اکثر “راستہ” ہو کر بھی راستے میں ہی “راستہ” ڈھونڈنے والوں کو بھٹکا دیتے ہیں۔”راستہ” تو اصل میں راستے کو خود کا “راستہ” بھی نہیں دیتا۔راستے کو بھی کہاں معلوم ہوتا ہے کہ وہ کہاں سے شروع ہوتا ہے۔۔۔←  مزید پڑھیے

موت۔۔۔رمشا تبسّم

کہتے ہیں‏ جب تک زندگی لکھی ہو تو موت خود زندگی کی حفاظت کرتی ہے اور جب موت کا وقت آجائے تو زندگی خود جاکر موت کو گلے لگا لیتی ہے،زندگی سے زیادہ کوئی جی نہیں سکتا اور موت سے←  مزید پڑھیے

یومِ تشکر: شکریہ وزیراعظم عمران خان۔۔۔رمشا تبسم

نیا پاکستان اس وقت دو ہی گروپ میں تقسیم ہے. جبکہ پرانے پاکستان کا ایک ہی گروپ ہے۔ ادب کا دائرہ چھوڑ کر بات کی جائے تو نئے پاکستان کا ایک گروپ بغضِ نواز شریف اور دوسرا بغضِ پاکستان ہے←  مزید پڑھیے

محبت کے قبرستان سے لکھا گیا خط۔۔رمشا تبسم کی ڈائری “خاک نشین” سے “خود کلامی کی اذیت کا اقتباس”

اے جانِ جاں! میرے حُسن کو گلابوں سے ملانے والے, میرے وُجود کو چاندنی سا روشن کہنے والے, میری ذات کو شبنم سا پاکیزہ کہنے والے میری ویرانی کو کس سے ملاؤ گے؟۔ میرے دل کی اجڑی دنیا کو کس←  مزید پڑھیے

کتھا ایک سرکس کی ۔۔۔ رمشاء تبسم

ابھی یہ منظر جاری تھا کہ اسی اثناء میں گوالے کے ساتھ کئی لوگ پائریلو کو پکڑنے سرکس میں پہنچ گئے۔ اس سے پہلے کہ وہ اسے پکڑپاتے۔ رِکی نے گوالے سے پوچھا کہ وہ گھوڑے کوبیچنا چاہتا ہے؟ گوالے نے اثبات میں جواب دیا اور مزید کچھ سنے بغیر اپنی رقم لے کر چلتا بنا جو اس نے پائریلو کو خریدنے پر خرچ کی تھی۔ وہ اس گھوڑے سے مزید دودھ کا نقصان نہیں چاہتا تھا۔ اس کے جانے کے بعد رِکی نے کارلو کو بھی پائریلو کے ساتھ سرکس میں کام کرنے کی آفر کی جو اس نے خوشی سے قبول کرلی۔←  مزید پڑھیے

شاہد خاقان عباسی ہم شرمندہ ہیں۔۔۔رمشا تبسم

بظاہر آزاد نظر آنے والے نیب نے مسلم لیگ ن کے رہنما شاہد خاقان عباسی کو  ٹھوکر نیاز بیگ کے مقام پر ایل این جی کیس میں  گرفتار کر لیا۔ اس طرح کی بے بنیاد اور بغیر ثبوتوں کی گرفتاریوں←  مزید پڑھیے

برہنہ معاشرے کی بُجھی ہوئی قندیل۔۔۔۔رمشا تبسّم

نوٹ:قندیل بلوچ سے متعلق ہر دو طبقے کی رائے مکالمہ پر شائع ہوچکی ہے،یہ مضمون اسی سلسلے کی ایک کَڑی ہےاور آزادیِ اظہارِ رائے کے تحت شائع کیا جارہا ہے! ہم ایک ایسے برہنہ معاشرے کا حصہ ہیں جہاں ہم←  مزید پڑھیے

“درد کی تُم”۔رمشا تبسم کی ڈائری “خاک نشین” سے “خود کلامی کی اذیت” کا اقتباس

“تم کتنا بولتی ہو”۔۔۔ “اچھا چپ ہو جاتی ہوں”۔۔۔ “ارے پاگل !بولو تم بولتی ہو تو ہی مجھے میرا زندہ ہونا محسوس ہوتا ہے۔ ورنہ تو میں مر چکا ہوں۔میرا وجود کائی زدہ ہے۔میری سانسیں عذاب ہیں۔۔میری زندگی میں زندگی←  مزید پڑھیے

تَن کی میل , مَن کا اندھیرا۔۔۔رمشا تبسم کی ڈائری “خاک نشیں” سے اقتباس

بعض اوقات باہر جتنی شدید روشنی ہوتی ہے انسان کے اندر اتنا ہی گہرا اندھیرا  چھایا ہوتا ہے۔۔۔دنیا کی روشنی کبھی بھی دل و دماغ اور روح کو روشن نہیں کر  سکتی۔۔باہر کی تیز روشنی ہمیں بس مغرور کرتی ہے۔۔←  مزید پڑھیے

شیخ رشید اور پاکستان ریلوے پر چھائے نحوست کے سائے ۔۔۔ رمشا تبسم

آج 11 جولائی 2019 بروز جمعرات صبح 4.15 بجے صادق آباد کے مقام پر حادثہ ہوا۔ لاہور سے کوئٹہ جانے والی اکبر ایکسپریس کھڑی مال گاڑی سے ٹکڑا گئی۔ 6 بوگیاں اور انجن ٹریک سے اتر گئے۔ بے شمار خاندان اجڑ گئے۔ اپنے پیاروں کے لاشے خون میں لت پت لئے ہر آنکھ اشک بار تھی مگر وزیر ریلوے کا کہنا تھا میں کیا کروں یہ ماضی کی حکومتوں کی نا اہلی ہے۔←  مزید پڑھیے

رَنڈی اِن مَنڈی، ٹرینڈ۔۔۔۔۔رمشا تبسم

نوٹ:چند روز پہلے ٹویٹر پر مریم نواز کے منڈی بہاؤ الدین  جلسے کو لے کر ایک ٹرینڈ بنا یا گیا “رنڈی اِن منڈی”۔رمشا تبسم نے آج اِسی حوالے سے قلم اٹھایا ہے۔اگرچہ یہ  لفظ قابلِ مذمت ہے،لیکن اس سے بھی←  مزید پڑھیے