معاشرہ، - ٹیگ

طلب جہیز اور خواہش نمائش۔۔ولائیت حسین اعوان

سوشل میڈیا پر ان دنوں جہیز کے خلاف مہم زور و شور سے چل رہی ہے۔ یہ مہم اس وقت شروع ہوئی جب معروف ڈیزائنر علی ذیشان نے اپنے ایک فیشن شوٹ کو جہیز کے خلاف عوام میں شعور اجاگر←  مزید پڑھیے

نامکمل خواب۔۔محمد فاروق حیدر

وہ ایک دیوی تھی ، حُسن کی دیوی ، اس کی پیدائش کے دن ماں نیم بے ہوش تھی ، اسی مدہوشی ، کرب اور تکلیف کے مابین اس نے ایک خواب دیکھا اور سوچ کا تسلسل قائم ہو گیا۔۔←  مزید پڑھیے

بیمار معاشرے کے ڈاکٹر۔۔پروفیسر فتح محمد ملک

ہماری تہذیب میں ڈاکٹر کو مسیحا کہتے ہیں اور یہ ہماری تہذیب کا وہ رُخ ہے کہ جو عالمی تہذیب میں اور کہیں نظر نہیں آتا ۔لیکن افسوس صد افسوس کہ مسیحاؤں کو کہ جو ہمارے مریضوں کے لئے اللہ←  مزید پڑھیے

ابنارمل معاشرے کے شرمناک رویے۔۔عبدالستار

ترقی کی منزلوں کو چھونے کے لیے ہمیشہ آگےکی طرف دیکھنا پڑتا ہے نہ کہ پیچھے کی طرف ۔زندگی اور اس سے جڑے ہوئے مسائل اور حقیقتیں جامد و ساکت نہیں ہوتیں بلکہ بہتے ہوئے پانی کے تسلسل کی طرح←  مزید پڑھیے

یسریٰ جبین اور ہمارا معاشرہ۔۔سعید چیمہ

انعام رانا ہمارے چیف ایڈیٹر ہیں، ان کے بارے میں پہلا تاثر یہی تھا کہ لاہور میں رہنے والا کوئی بیروزگار ہو گا جو کامیابی سے “مکالمہ” کو چلا رہا ہو گا،  بعد میں حقیقت عیاں ہوئی کہ موصوف تو←  مزید پڑھیے

جڑ کھوجنے اور اکھاڑنے کی گھڑی۔۔حسان عالمگیر عباسی

مبلغ اسلام مولانا طارق جمیل صاحب کے نزدیک فحاشی سکولز، کالجز، اور جامعات میں بڑھتے ہوئے اختلاط سے امڈ رہی ہے۔ مخلوط محافل کا اسلام کبھی بھی قائل نہیں ہے لیکن مخلوط محافل کو روکنے کا پیکج یا اسکیم رکھتا←  مزید پڑھیے

طلاق کا بڑھتا ہوا رجحان۔۔رعنا اختر

والدین کے لیے وہ دن بہت سہانا ہوتا ہے، ان کی خوشی کا کوئی ٹھکانہ نہیں ہوتا جس دن وہ اپنے بچوں کو رشتہ ازدواج میں منسلک کرتے ہیں ۔ اس دن وہ خود کو بہت ہلکا پھلکا محسوس کرتے←  مزید پڑھیے

انتباہ کے چند حرف۔۔ڈاکٹر اختر علی سید

دنیا بھر کے معاشروں میں درجنوں نہیں سینکڑوں افراد روزانہ قتل ہوتے ہیں۔ اس طرح کے واقعات کی اکثریت اخبار کے صفحات اور ٹی وی کے نیوز بلیٹن میں جگہ بھی نہیں بنا پاتی۔ ایسے واقعات کی ایک بڑی تعداد←  مزید پڑھیے

ایک پرانا خط کھولا انجانے میں ۔۔اسماء مغل

کچھ روز سے خاموشی شام و سحر کا احاطہ کیے ہوئے ہے،اور اس کی سنگینی کا اندازہ اس بات سے لگا لو کہ تم سے بھی کچھ کہنے کو لفظ میسر نہ آئے۔تم روبرو رہے،اور میں تمہیں دیکھتی رہی۔اس خاموشی←  مزید پڑھیے

ذہنی دباؤ سے آزاد معاشرہ۔۔محمد شعیب

گاہے بگاہے زندگی میں ہم سب اداسی، مایوسی اور بیزاری میں مبتلا ہوتے ہیں۔ عام طور پر یہ ذہنی بیماریاں ایک یا دو ہفتے میں ٹھیک ہو جاتی ہیں اور ہماری زندگیوں پر ان کا کوئی خاص اثر نہیں ہوتا۔←  مزید پڑھیے

تلخ حقیقت۔۔انصر محمود بھٹہ

پچھلے ایک مہینے سے وہ تراویح میں قرآن پاک سنا رہا تھا۔ابھی دو دن پہلے ہی ستائیسویں کی مبارک رات کو اس نے ختم قرآن کیا۔ سب بہت خوش تھے۔اس کے گھر والے اسے اپنی سعادت اور خوش بختی سمجھ←  مزید پڑھیے

صنفی تقابل۔ایک تجزیہ۔۔۔ربیعہ فاطمہ بخاری

ایک گروپ میں عورت اور مرد پہ گرما گرم بحث جاری تھی ۔ میں نے کسی بھی پوسٹ پہ کوئی تبصرہ نہیں کیا کہ میں ہر دو اصحاب کے موقف سے اتفاق نہیں کرتی۔ میں بنیادی طور پہ “عورت بمقابلہ←  مزید پڑھیے

بچوں پہ ہونے والا جنسی تشدد اور اسکا ممکنہ تدارک۔۔محمد سعید

ہمارا عمومی رویہ ہے کہ ہم معاشرے میں پائی جانے والی کسی بھی برائی کے اسباب کو اجاگر کرنے تک محدود رہتے ہیں،جبکہ میرے نزدیک سنگین نوعیت کے جرائم کی گنجائش پڑھے لکھے تہذیب یافتہ معاشروں میں زیادہ سے زیادہ←  مزید پڑھیے

بچوں کا جنسی استحصال اور اس کا سدِباب۔۔راجہ محمد احسان

بچوں کے جنسی استحصال کی ہر معاشرہ مذمت کرتا ہے۔ ہر کوئی بچوں کے جنسی استحصال کے خلاف بولنے کے لئے تیار ہے اور بچوں کے خلاف اس غیر انسانی سلوک کو روکنے کے لئے سخت ترین سزاؤں کا مطالبہ←  مزید پڑھیے

بیٹی رحمتِ خداوندی۔۔غلام سرور

انسان کی تربیت کے طریقوں میں ایک قدرتی عمل جس کو فطرت کہتے ہیں، پیدائش کے ساتھ آتا ہے، دوسرا نرچرنگ /پرورش،جس میں انسان معاشرے سے اور اردگرد کے ماحول سے سیکھتا ہے۔ اس پرورش میں معاشرہ زبان کا کردار←  مزید پڑھیے

شدت پسندانہ نفسیات کا حامل ہمارا معاشرہ اور ” میرے پاس تم ہو “۔۔ضیغم قدیر

وفا اور بے وفائی انسان ہی کرتے ہیں لیکن ہم ہر چیز کو آئیڈیالائز کر کے دیکھنے کی کوشش کرتے ہیں۔ وہ محرومیاں جن کا ہم شکار ہوتے ہیں ہماری کوشش ہوتی ہے کہ کوئی دوسرا کردار انہی محرومیوں کا←  مزید پڑھیے

میرے معاشرے کا چھوٹو۔۔عبدالستار

ہر سماج اور سو سائٹی کے کچھ کر دار ہوتے ہیں جنھیں خود اس معاشرے کے لوگ اور ان کے رویے بناتے ہیں۔یہ کردار آسمان سے یا ماں کی کوکھ سے اپنی زندگی گزارنے کے پیمانے لکھوا کر اس دنیا←  مزید پڑھیے

ہماری زوال پذیر اخلاقیات۔۔مائرہ علی

گزشتہ دنوں سوشل میڈیا اور مین سٹریم میڈیا پر رابی پیرزادہ کی لیک شدہ اخلاق باختہ ویڈیوز کو لے کر جو طوفانِ بدتمیزی برپا کیاگیا, اس کو دیکھ کے اس بات پر یقین پختہ ہوگیا کہ ہم اخلاقی لحاظ سے←  مزید پڑھیے