ڈاکٹر مجاہد مرزا کی تحاریر
ڈاکٹر مجاہد مرزا
ڈاکٹر مجاہد مرزا معروف مصنف اور تجزیہ نگار ہیں۔ آپ وائس آف رشیا اور روس کی بین الاقوامی اطلاعاتی ایجنسی "سپتنک" سے وابستہ رہے۔ سماج اور تاریخ آپکے پسندیدہ موضوع ہیں

کینچلی چڑھا سانپ||ڈاکٹر مجاہد مرزا

نوید کی زندگی میں سب سے بڑا چھناکا تب ہوا جب کوئی اس کی تنہائیوں میں مخل ہو گیا لیکن یہ انجانے میں نہیں بلکہ مدہوشی کے ایک خاص وقفے کے تسلسل میں جانے بوجھے کو انجانے میں گنوانے سے←  مزید پڑھیے

مزدور سے متعلق تاثرات کی تصحیح||ڈاکٹر مجاہد مرزا

سوشل میڈیا ہر شخص کا اخبار، ہر شخص کا ڈائجسٹ اور ہر شخص کا اپنا ذریعہ اظہار یعنی میڈیم بن چکا ہے۔ یکم مئی کے روز لوگوں نے یہ جانے بغیر کہ “یوم مئی” کی تاریخ کیا ہے، یوم مئی←  مزید پڑھیے

ساحل گوادر سے تا بہ خاک کاشغر۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

ہم کچھ لوگ ماؤزے تنگ کے بے حد مداح ہوا کرتے تھے۔ اسلامی جمعیت طلباء میں شامل ہمارے دوست ہمیں “سرخے” کہتے تھے۔ ماؤ زے تنگ کی مداحی کی پاداش میں نہیں بلکہ ان کا خیال تھا کہ ہم کمیونسٹ←  مزید پڑھیے

میں اسے نہیں جانتا تھا۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

اس طرح مردانہ وار لڑنے والی اس شجیع خاتون کو جس کا نام سبین محمود تھا، میں نہیں جانتا تھا۔ سچی بات تو یہ ہے کہ اس کا نام بھی کبھی میری نظروں سے نہیں گذرا تھا۔ پھر کل رضا←  مزید پڑھیے

غیر صحت مندانہ طرز سیاست۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

انگریزوں نے تو کسی کی ذات پر “کیچڑ اچھالنے” کا ترجمہ Mud Slinging نہیں کیا ہوگا، یہ توفیق ہمیں ہی ہوئی ہوگی کہ ہم نے ان کی اصطلاح کو ترجمہ کرکے استعمال کرنا شروع کر دیا اگرچہ اس کے لیے←  مزید پڑھیے

دُنیا ٹیڑھی ہے یا ہم؟۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

سچ تو یہ ہے کہ دنیا کہیں بھی سیدھی نہیں ہے لیکن اتنی بھی کج نہیں ہوتی کہ اسے کج کہا جا سکے۔ پیچ و خم ہونا، اتار چڑھاؤ ہونا، ارتفاع و گہرائی ہونا دنیا کے تنوع کو ظاہر کرتا←  مزید پڑھیے

اپنے ہی ملک میں زباں نابلد(6)۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

پیروں اور ان کے نواسوں سے فراغت کے بعد قادر نگر کے لیے نکلے تو میں پوچھے بغیر نہ رہ سکا کہ بھائی یہ پیروں اور باچاؤں کے نواسے ہی کیوں ہیں پوتے کیوں نہیں تو راشد نے جز بز←  مزید پڑھیے

اپنے ہی ملک میں زباں نابلد(5)۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

راشد گھوڑے پر سوار آیا تھا کہ چلیں۔ میں نے اسے کمرے سے باہر جانے کو کہا، کپڑے تبدیل کیے اور ہم نکل لیے۔ گلی سے نکل کر باہر ایک اور کار کھڑی تھی۔ راشد نے بتا دیا تھا کہ←  مزید پڑھیے

اپنے ہی ملک میں زباں نابلد(4)۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

واپسی میں راشد نے پہاڑوں میں محبت کی داستان کا راگ چھیڑا مگر راستہ طے ہو جانے اور لوگوں کے کانوں کے مخل ہونے کے سبب انجام یا قبل از انجام طے نہ ہو پایا کہ آیا عاشق یا معشوق←  مزید پڑھیے

اپنے ہی ملک میں زباں نابلد(3)۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

ہوا یوں تھا کہ بلال کوچ نام کی ویگن جب پشاور موٹر وے پہ چڑھی تو راشد نے ایک سیلفی بنائی جسے میں نے اس سے مانگ لیا اور ساتھ میں عنوان دے کے فیس بک پہ پوسٹ کر دیا،←  مزید پڑھیے

اپنے ہی ملک میں زباں نابلد(2)۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

سڑک بہتر ہو گئی تھی۔ ہم ایک قصبہ پہنچ گئے تھے مگر ہمیں کوئی دو کلو میٹر دور گاؤں پیر بابا بٹئی پہنچنا تھا جو پہنچ گئے۔ اسحاق تو یہ کہہ کے کہ رات کی نماز کے بعد آؤں گا،←  مزید پڑھیے

اپنے ہی ملک میں زباں نابلد(1)۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

شاید آٹھ برس پہلے ماسکو کے ایک پاکستانی ریستوران میں پاکستان کی کوئی قومی تقریب تھی جس میں ہندی رقص کرنے والی روسی لڑکیوں کا ایک طائفہ اپنے فن کا مظاہرہ کرنے کی خاطر بلایا گیا تھا۔ ان رقاص لڑکیوں←  مزید پڑھیے

کچھ سست قدم رستے۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

پاکستان سے دور رہتے ہوئے تو میرا جیسا آدمی بھی نجم سیٹھی اور شاہزیب کا پروگرام دیکھ لیتا ہے۔ ناک بھوں چڑھا کے “خبرناک” بھی اور “مذاق رات” کے “باباجی” کو سن کر (دیکھ کر نہیں کہ وہ باباجی لگتا←  مزید پڑھیے

محبت اور بیاہ (3)۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

( اپنی تحقیقی کتاب ” محبت ۔۔۔ تصور اور حقیقت ” سے اقتباس ) مرد اور عورت نہ صرف افعال بدن کے حوالے سے مختلف ہیں بلکہ ان کے جذبات بھی مختلف ہیں۔ کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ یہ←  مزید پڑھیے

محبت اور بیاہ (2)۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

( اپنی تحقیقی کتاب ” محبت ۔۔۔ تصور اور حقیقت ” سے اقتباس ) محبت کے میدان میں عورت کا کام دوہری حیثیت کا حامل ہے۔ آدمی ڈھونڈنا اور پھر اس کو رکھنا۔ صرف آدمی پا لینا تو درحقیقت اس←  مزید پڑھیے

محبت اور بیاہ(1)۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

ڈاکٹر مجاہد مرزا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ( اپنی تحقیقی کتاب ” محبت ۔۔۔ تصور اور حقیقت ” سے اقتباس ) بیاہ، شادی یا عروسی ایک سماجی ادارہ ہے جس کا محبت سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ یہ ادارہ کب، کیوں اور کیسے←  مزید پڑھیے

مردہ لینن زندہ پوتن، دونوں مہنگے۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

چند روز پیشتر حکومت روس نے لینن کے محفوظ جسد کو برقرار رکھنے کے عمل کی خاطر امسال دولاکھ ڈالر کی منظوری دی ہے۔ لینن کا انتقال 21 جنوری 1924 کو ہوا تھا۔ ماسکو کے لال چوک میں کریملن کی←  مزید پڑھیے

کیسے چراؤں آنکھیں؟۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

تکلیف دہ واقعہ کہیں کسی کے ساتھ بھی ہو اسے تسکین آور قرار نہیں دیا جا سکتا مگر حقیقت میں ایسا ہے کہ جو بات بہت سوں کے لیے تکلیف دہ ہو وہ بہت سارے دوسروں کے لیے اگر تسکین←  مزید پڑھیے

اختلاف نظر اور اس کا اظہار۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

پارلیمان کی بالادستی پر مجھ سمیت بہت سے لوگ خوش ہو گئے تھے۔ عمران خان سے اختلاف کرنے والے مجھ سمیت بہت سے لوگ ان کے اس دعوے کو نہ صرف مان گئے تھے بلکہ ان کی تعریف کی تھی←  مزید پڑھیے

زیرجامہ گروی رکھ دیا۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا

ایک طرف پاکستان کی پارلیمانی تاریخ میں اہم واقعہ ہوا کہ میں یمنیوں سے لڑنے کی خاطر پاکستان سے فوج کو سعودی عرب بھجوائے جانے کی درخواست مسترد کر دی گئی۔ دوسری جانب متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ نے←  مزید پڑھیے