منتخب تحریریں

سکونِ قلب کے متلاشی: عبداللہ یوسف علی ۔۔۔ آصف جیلانی

۱۰ دسمبر کو اس مفلس پر دل کا دورہ پڑا جو جان لیوا ثابت ہوا۔ اس شخص کا کوئی عزیز رشتہ دار اس کی میت لینے نہیں آیا۔ پولس نے جب پاکستان ہائی کمیشن سے شناخت کے لئے استفسار کیا تو انکشاف ہوا کہ یہ مفلس ، ممتاز مسلم دانشور ، مشہور تاریخ دان ،ماہر تعلیم او ر قران پاک کے انگریزی مترجم اور مفسر، عبداللہ یوسف علی تھے۔ ←  مزید پڑھیے

پی جا ایام کی تلخی کو ۔۔۔ نسرین غوری

ہم بچیوں کو کب اس ضمن میں بریف کیا جائے اور کیا اور کیسے بریف کیا جائے پر مواد جمع کرنے پر لگے ہوئے ہیں۔ یہ پہلا کالم یا پہلا قدم صرف اور صرف اس موضوع پر سے شرمندگی کی دھول اتارنے کی غرض سے لکھا گیا ہے۔ کہ یہ انسانی زندگی کا ایک نارمل لازمہ ہے۔ جس سے جڑی پریشانیوں اور الجھنوں سے ہر خاتون کو گزرنا پڑتا ہے۔ ہم کب تک اس موضوع پر شرم اور شرمندگی کا پردہ ڈالے رکھیں گے۔ اور نارمل انسانوں کی طرح اس پر بات نہیں کریں گے۔←  مزید پڑھیے

“مکالمہ عظمتِ محمد ص ایوارڈ” تحریری انعامی مقابلہ

عزیزان گرامی ہمارے آقا و مولا سیدنا محمد صلی اللہ علیہ و آل وسلم کا 1448 واں جشن میلاد آپ سب کو مبارک ہو۔ نبی آخر الزماں صلی اللہ علیہ و آله وسلم کی آمد کی خوشی بلاشبہ ہر مسلمان←  مزید پڑھیے

مکالمہ مقابلہ مضمون نویسی کے نتائج

مکالمہ قارئین، مکالمہ کی ہمیشہ کوشش رہی ہے کہ بھیڑ چال اور سنسنی خیزی کے دوڑ سے نکل کر “سوشل میڈیا سائیٹس” کی مین سٹریم میڈیا سے ہٹ کر ایک راہ نکالی جائے جو نا صرف کہ مسائل کا ادراک←  مزید پڑھیے

آسیہ کا وکیل، آستین کا سانپ اور آنچل خان

سویرے سویرے جاگا تو حسب معمول انباکس چیک کیا جو گالیوں اور دھمکیوں سے بھرا تھا۔ گھبرا کر پتہ کیا تو معلوم ہوا کہ کسی آنچل خان نامی آئی ڈی میری تصویر آسیہ کا وکیل کہہ کر لگائی گئی ہے←  مزید پڑھیے

سپاہ سالار جنرل محمد موسی خان ہزارہ ۔۔۔ اسحاق محمدی

پاکستان آرمی کے سابق کمانڈر انچیف جنرل محمد موسی خان ہزارہ 20 اکتوبر 1908ء کو کوئیٹہ میں پیدا ہوئے۔ ان کے والد سردار یزدان بخش خان المعروف یزدان خان نے 1890ء میں امیر جابر عبدالرحمان خان کی ہزارہ نسل کشی کی پالیسی سے بچنے کے لئے اس وقت کی برٹش بلوچستان میں مہاجرت اختیار کی تھی۔ ←  مزید پڑھیے

مکالمہ کا بیس ہزار روپے کا انعامی مقابلہ

مکالمہ بحیثیت ادارہ ہمیشہ سے معاشرے میں ایک مثبت تبدیلی کا خواہاں رہا ہے۔ مکالمہ نے کبھی بھی خود کو ایک “بزنس پراجیکٹ” کے طور پر نہیں چلایا۔ اگرچہ ہمیں کسی امریکی یا روسی ایڈ کی مدد حاصل نہیں مگر←  مزید پڑھیے

حکومت اور معاشی بحران ۔۔۔ ڈاکٹر عاصم اللہ بخش

اصل قصوروار خان صاحب کے وہ حاشیہ بردار حضرات ہیں جنہوں نے یہ کہہ کر انہیں بانس پر چڑھا رکھا تھا کہ ان کی ایک صدا پر بیرون ملک مقیم پاکستانی ڈالروں کے ڈھیر لگا دیں گے ۔۔۔ گویا، جیبوں میں چیک بکس ڈالے وہ بالکل تیار بیٹھے ہیں اور انہیں تو بس عمران خان صاحب کے حلف اٹھانے کا انتظار ہے۔←  مزید پڑھیے

ٹانگری۔۔۔عارف خٹک

یہ کہانی روایات، رسوم اور اونچے شملوں میں مقید ہر اس مجبور و لاچار ماں، بیٹی اور بیوی کی کہانی ہے۔ جن کے رعش زدہ ہاتھ آج بھی ہمارے لئے دعاوں کیلئے اٹھے ہوتے ہیں۔ یا وہ آج بھی کہیں←  مزید پڑھیے

یہ کیا ہورہا ہے؟ ۔۔۔ ڈاکٹر عاصم اللہ بخش

یہ کیا ہو رہا ہے جناب ۔۔۔۔ ؟ پہلے سی پیک سے متعلق متنازعہ باتیں کی گئیں، سرکار سے وابستہ لوگوں کے ایسے بیانات سامنے آئے جس سے یہ تاثر ابھرا گویا سی پیک کوئی بہت بڑا دھوکہ ہے پاکستان←  مزید پڑھیے

مذہب اور یورپ ۔۔۔ اورنگزیب وٹو

یہ قرون وسطی کا یورپ ھے۔مزہب کی اجارہ داری ھے۔یورپ کا انسان مزہب کے ھاتھوں لہو لہان ھو چکا ھے۔مزہب ایک ناگ کی طرح پھن پھیلائے حاکم بنا بیٹھا ھے۔مزہب ان دیکھے خدا اور اس کے محبوب پیامبر کی کہانیاں←  مزید پڑھیے

امام حسین علیہ السلام کا مکتوب مبارک معززین بصرہ کے نام ۔۔۔ شجاع عباس

میں نے تمہاری طرف اس مکتوب کے ساتھ اپنا قاصد بھیجا ہے ۔میں تم لوگوں کو خدا کی کتاب اور نبی کی سنت کی طرف بلاتا ہوں۔←  مزید پڑھیے

محرم اور ثقافتی تاریخ ۔۔۔ابو بکر

قضا نے تھا مجھے چاہا خرابِ بادہء الفت فقط خراب لکھا، بس نہ چل سکا قلم آگے مجھے آدھا شیعہ کہہ لیجیے۔ ماتم کرتا ہوں، کلمہ نہیں پڑھتا۔ آتے جاتے دنوں کی بوچھاڑ میں ایذا پسندی سے کام چلاتا آیا←  مزید پڑھیے

پاکستان کے یہودی۔۔۔۔۔ سیدہ ماہم بتول

یہودیت کا شماردنیا کے قدیم مذاہب میں ہوتا ہے۔ اسلام سے قبل یہود کے تین قبائل مدینہ میں آباد تھے ان میں بنو نصیر، بنو قینقاع اور بنو قریظہ زیادہ اہم ہیں۔ قیام پاکستان سے قبل متحدہ ہندوستان میں یہودی←  مزید پڑھیے

احمدی، فرد، ریاست اور اختیار کفر۔۔۔ انعام رانا

(تحریر کی طوالت کی معزرت، مگر پوری پڑھیے۔ آج سے ڈھائی سال قبل  فیس بک وال پر یہ تحریر لکھی تو قادیانی اور قادیانیت نواز قرار پایا تھا۔دونوں کیا ہر جانب سے  گالیاں اور دھمکیاں ملیں۔ سوچا دیکھوں تو مکالمہ←  مزید پڑھیے

موسمی شیعہ ۔۔۔ مبشر علی زیدی

سب مانتے ہیں کہ سقراط بڑا آدمی تھا، ابراہام لنکن بڑا آدمی تھا، کارل مارکس بڑا آدمی تھا، نیلسن منڈیلا بڑا آدمی تھا۔ انھیں ماننے سے کسی کا دھرم بھرشٹ نہیں ہوتا۔ سسٹر روتھ فاؤ کو خراج عقیدت پیش کرنے سے کوئی ملحد ہرگز مسیحی نہیں ہوجاتا۔ گاندھی کی تحسین کرنے سے کوئی ملحد ہرگز ہندو نہیں ہوجاتا۔←  مزید پڑھیے

دیوار(سو لفظوں کی ناقابل اشاعت کہانی) ۔۔۔ مبشر علی زیدی

میں یونس کو تلاش کرتا ہوا غریب آباد پہنچا۔ گلی میں کھیلتے بچوں نے اس کے گھر تک پہنچایا۔ یونس راج مزدور ہے۔ وہ گھر پر موجود تھا۔ “یاد ہے، تم نے دس ماہ پہلے ہمارے صحن میں دیوار گرائی←  مزید پڑھیے

کمالیہ کی پھولن دیوی ۔۔۔ رانا عبدالروف خاں

آئیے اس سے ملئیے یہ ہے کمالیہ کی پھولن دیوی۔ یہ کوئی افسانوی کردار نہیں بلکہ ایک جیتا جاگتا اسی کمالیہ شہر کا ایک کردار ہے۔عمر بیالیس سال کے قریب، رنگ سیاہ قد پانچ فٹ کے قریب، فربہ جسم، منہ←  مزید پڑھیے

کیا قائداعظم کے پاس ڈگری تھی؟ ۔۔۔ رانا حاکم

کچھ دن پہلے حاشر ابن ارشاد صاحب( Hashir Ibne Irshad) نے ایک پوسٹ کی کہ جناح انڈر میٹرک تھے ۔ جس پر کچھ ہی دیر میں محب وطن پاکستانیوں نے حملہ کر دیا ۔ غدار احمق منافق جاہل کے القابات←  مزید پڑھیے

سوانح عمریاں ۔۔۔ عنبر عابد

ادیب دو طرح کے ہوتے ہیں۔ایک ہوتے ہیں وہ ادیب جو ناول،افسانے اور کالم وغیرہ لکھتے ہیں،دوسرے وہ جو صرف اور صرف اپنی سوانح عمری لکھتے ہیں۔ سوانح عمریاں بھی دو طرح کی ہوتی ہیں ایک وہ جو ادب کا←  مزید پڑھیے