saleem mirza کی تحاریر

کچناپہ۔۔سلیم مرزا

جولوگ سمجھتے ہیں مزاح لکھنا مشکل ہے ۔میں ان سےبالکل متفق نہیں اور امید ہے  کہ وہ بھی اس مضمون کو پڑھ کر خود پہ نظرثانی کر ہی لیں گے ۔ ویسے ڈھیٹ ہونا دوسری بات ہے مزاح نگاری جیسا←  مزید پڑھیے

گالیاں بہت۔۔سلیم مرزا

لاک ڈاؤن سے مجھے ایک بات کا پتہ چلا کہ میری بیوی سے زیادہ بدذوق عورت شاید ہی دنیا میں کوئی دوسری ہو۔ تیسری چوتھی کو میں جانتا ہوں ۔ یقین کریں اتنے بُرے حالات میں بھی میرا، میرے ساتھ←  مزید پڑھیے

باڑے کا باؤ(محبت کُھرک ہے، سے اقتباس)۔۔سلیم مرزا

چونکہ ان دنوں فیس بک پہ دانشور نہیں تھے اس لئے ابا کا خیال تھا کہ فارغ دماغ شیطان کا ہوتا ہے۔ چنانچہ مجھے ایک سنار کے پاس زیورات کی جڑائی کا کام سیکھنے بھیج دیا استاد کی خوش قسمتی←  مزید پڑھیے

کھینچا تانی۔۔سلیم مرزا

پیٹ کی گولائی کے اثرات جب غربت کے مسائل سے تجاوز کرتے ہوئے درمیانہ طبقے کو بھی متاثر کرنے لگی تو پیٹ گناہگاروں کے مقبرے کی طرح دور سے ہی نظر آنے لگا ۔ ان حالات میں ازار بند کہاں←  مزید پڑھیے

میری نظم۔۔سلیم مرزا

شادی کے تین مہینے بعد ہی بیگم کے ہاتھ وہ روزنامچے لگ گئے جنہیں ناکام شرفاء ڈائریاں کہا کرتے تھے، آج کل کی سرچ ہسٹری کی طرح جنہیں ڈیلیٹ کرنے کا آپشن تومیرے پاس تھا ،مگر دل نے ان وارداتوں←  مزید پڑھیے

کُتا کہانی۔۔سلیم مرزا

اصل نام وہ تقسیم کے وقت ہندوستان ہی کہیں بھول آیا تھا ۔ کامونکی میں بدھو کی عرفیت ہی اس کی مکمل شناخت تھی ۔ٹرک اڈے پہ مزدوری کرنے والا بدھو کافی ترقی پسند تھا، اگر آج زندہ ہوتا تو←  مزید پڑھیے

گونگا کھسرا(محبت کھرک ہے سے اقتباس)۔۔سلیم مرزا

ان دنوں اتنی چھان پھٹک نہ تھی، گلاب تتلی کے چھو جانے کے تصور سے ہی سالوں مہکے مہکے مرجھا جاتے تھے، صرف لڑکی ہونا ہی “فوبی کیٹس “ہونے کے برابر تھا ۔ اب تو فیس بک پہ پروفائل دیکھیں←  مزید پڑھیے

کیونکہ میں شاعر نہیں ۔۔۔ سلیم مرزا

آغا صاحب کی پندرہ منٹ بعد واپسی ھوئی تو سیدھے اپنی موٹر سائکل کی طرف گئے ۔پہلے ہینڈل لاک کیا پھر وائر لاک لگایا اور آخر میں جھک کر موٹر سائکل کی ناقابل اشاعت جگہ پہ انگلی کروائی تو میں نے پوچھ ہی لیا ۔ "یہ کیا کر رھے ہیں آپ "؟ "چور سوئچ لگا رہا ھوں " "پارک میں اتنے پودے نہیں جتنے پولیس والے کھڑے ہیں، آپ پھر بھی چور کو سوئچ لگا رھے ھو "؟ "میں چوروں سے نہیں ، پولیس سے ڈرتا ھوں ۔وہ میری ہی موٹر سائکل کی چوری کا پرچہ مجھ پہ بھی کاٹ سکتے ہیں "یہ کہہ کر آغا جی آڈیٹوریم کی طرف بڑھے ۔←  مزید پڑھیے

ایک سیلفی کا سوال ہے بابا ۔۔سلیم مرزا

بخدمت جناب عطاءالحق قاسمی صاحب ۔ میں مسمی سلیم مرزا ،عمر پچاس سال ,رنگ کافی حد تک استعمال شدہ سکنہ کامونکی عرض پرداز ہوں کہ فدوی گذشتہ ڈھائی تین سال قبل موٹر سائکل اور مزدا ٹرک کے بےجوڑ حادثے میں←  مزید پڑھیے

میں شاعرہوں۔۔سلیم مرزا

سلیم ہاشمی کا دعوی تھا کہ وہ مشاعرہ تھا ۔،جبکہ میرا خیال تھا کہ میلہ مویشیاں کی طرح کا کچھ ہے ۔۔پروفیسر صاحب کہاں ماننے والے تھے ۔ مجھے گھور کر پوچھا “کیا تم بیل ہو “؟ میں مان گیا←  مزید پڑھیے

ظاہری سکوٹر۔۔سلیم مرزا

بچوں کے شوق بھی عجیب ہیں۔ظاہر محمود نے فیس بک پہ اشتہار دیا کہ اسے ایک  سکوٹر کی ضرورت ہے ۔قیمت دس ہزار سے زیادہ نہ ہو،بزرگوں کے پاس سے عموماً کوئی نہ کوئی قدیم نسخہ ہوتا ہی ہے۔ ۔میرے←  مزید پڑھیے

ملنگ شلنگ۔۔سلیم مرزا

بقول فرح خاں ،سرائیکی اتنی میٹھی زبان ہے کہ کسی کو پاگل کہنا ہو تو “سئیں، تسی وی بادشاہ ای او “کہہ کر کام چلا لیتے ہیں، اس بیچاری کو یہ نہیں معلوم کہ لاہور میں صرف “سائیں “کہہ کر←  مزید پڑھیے

باکردار ویڈیو۔۔۔سلیم مرزا

عموما دکانداروں کی تعلیمی قابلیت کم ہوتی ہے ان کی صلاحیت اور استعداد ان کے اپنے کاروبار کی حد تک بہترین ہوتی ہے ۔ان کی اکثریت اپنے موروثی کاروبار پہ عموماًآٹھ دس جماعتیں پڑھ کر بیٹھ جاتی ہے، چھوٹی عمر←  مزید پڑھیے

بلونگڑہ۔۔۔سلیم مرزا

بڑے بھیا کو شرط لگا کر کلائی پکڑنے کا شوق تھا، لوہار کی گرفت اتنی سخت کہ جس کی کلائی پکڑی، چھڑا نہ پایا،مقابل کی چیخیں نکل جاتیں،جب چھوڑتے تو نشان رہ جاتا۔۔۔”پھر ایک مرمریں ہاتھ چھوٹ گیا”۔ سارا مغلاپہ←  مزید پڑھیے

محبت کُھرک ہے،سے اقتباس۔۔۔سلیم مرزا

مقدر کا عروج ملاحظہ ہو، ،پومی بٹ کی چھ دکانوں میں سے ایک ملی کرائے دار بھی ہوئے تو کس کے؟ نہ کوئی ایگریمنٹ، نہ ایڈوانس، سیدھا کرایہ پوچھا اور گھس گئے، مدت  معاہدہ کا بھی  کوئی تکلف نہیں تھا،←  مزید پڑھیے

یہ کیا ہورہا ہے؟۔۔۔سلیم مرزا

یہ ہو کیا رہا ہے ؟ اچھے بھلے لکھنے والے بھی کمنٹ میں آتے ہیں تو جگت کرنے کو خوش خطی کے اضافی نمبروں جیسا سمجھ کر فٹاک سے کچھ بھی لکھ دیتے ہیں ۔ اللہ کے نیک بندوں چار←  مزید پڑھیے

ہم معذرت خواہ ہیں ۔۔۔سلیم مرزا

ان زمانوں کی بات ہے، جب فیس بک اور وٹس ایپ کا اتنا کھلواڑ نہیں تھا۔کال کے نائٹ پیکج چلتے تھے۔ان دنوں ہم بھی چند طرح دار آوازوں کے اسیر، رات بھر کیا کھایا؟ کیا پہنا ؟اور فرض کرو، کھیلتے←  مزید پڑھیے

محبت کُھرک ہے،سے اقتباس۔۔۔سلیم مرزا

سعودیہ ائیر لائن کی ائیر ہوسٹس مصری تھی ۔آتے ہی میرے سر پہ کھڑی ہوگئی ۔مجھے اس کا چہرہ دکھائی نہیں دیا ۔ “پانی یا چائے ” “چائے” “دودھ والی یا بغیر دودھ “؟ میں نے پھر اس کا چہرہ←  مزید پڑھیے

تبدیلی۔۔۔سلیم مرزا

نجانے تبدیلی مجھے ہی کیوں نظر آتی ہے، حالانکہ ان دنوں میری حالت یہ ہے کہ بیوی کے علاوہ کچھ بھی بدلنے کو جی نہیں کرتا ۔ ٹی وی کا چینل بدلنا بھی مشکل لگتا ہے ۔ آج پندرہ منٹ←  مزید پڑھیے

آلو بخارے چار ہیں۔۔۔سلیم مرزا

منصور حسین موٹر سائکل چلاتے جس انداز میں ٹریفک اور رشتوں کو یکجان کرتا ہے اس سے اندازہ ہوتا ہے کہ اندرون لاہوریے، اندرونی معاملات پہ کافی گہری نظر رکھتے ہیں ۔ میں اس کے پیچھے بیٹھا اکثر سوچتا ہوں←  مزید پڑھیے