راجہ محمد احسان کی تحاریر
راجہ محمد احسان
راجہ محمد احسان
ہم ساده لوح زنده دل جذباتی سے انسان ہیں پیار کرتے ہیں آدمیت اور خدا کی خدائی سے،چھیڑتے ہیں نہ چھوڑتے

اَن سُنی اَن کہی ۔۔۔ راجہ محمد احسان

سیما جا رہی ہے تب پہلی بار دل ایسا دھڑکا کہ پہلے کبھی نہ دھڑکا تھا ۔ جب سیما چلی گئ مجھے احساس ہوا مجھ میں کچھ ٹوٹ چکا ہے۔ کھانے پینے کا ہوش نہ رہا۔ ماں تین تین بار کمرے میں آتی اور کہتی آخر تجھے ہوا کیا ہے، اتنی کتابیں نہ پڑھا کر۔ میں ماں سےکہتا کہ مجھے کیا ہونا ہے۔←  مزید پڑھیے

ساحلِ سمندر ۔۔۔میں اور علیشا/راجہ محمد احسان

کل شام ڈھلے ننگے پاؤں میں سمندر کنارے گیلی ریت پر ہوا کے مخالف سمت چلا جا رہا تھا ۔ سمندر کی اٹھتی موجیں تسلسل کے ساتھ میرے پاؤں سے ٹکراتیں اور واپس لوٹ جاتیں ۔ آبی پرندے بھی اپنے←  مزید پڑھیے

لفظ باتیں کریں۔۔۔راجہ محمد احسان

الفاظ کا جتنا انسانی زندگی، انسانی کردار، رویوں اور شخصیت پر اثر پڑتا ہے اُتنا کسی اور چیز سے نہیں پڑتا ۔ یہی الفاظ کبھی تتلیوں کے رنگ بکھیرتے ہیں تو کبھی اندھیروں میں سر پٹخانے پہ مجبور کر دیتے←  مزید پڑھیے

حکمتیں ختم شُد۔۔۔۔۔سیاحت و سیاست/راجہ محمد احسان

سیاحت اور سیاست پہ عبدالحکیم صاحب کی گہری نظر تھی ۔اسے ایسے سمجھاتے تھے کہ دیکھو بھائی اگر دو اور دو کا حاصل جمع تین ہوں تو یہ سیاحت ہے جبکہ دو اور دو کا حاصل جمع پانچ یا پانچ←  مزید پڑھیے

حکمتیں 4 ۔۔۔۔۔ تاریخِ تربوز/راجہ محمد احسان

یوں تو عبدالحکیم صاحب طبی   اور طبعی طور پہ “جٹ” ہیں لیکن کھانے پینے کے معاملے میں طبیعتاً “بٹ ” ہیں۔ مرغی پکی ہوتی تو کہتے ہیں  لو بھائی ایک لات تو میں کھاؤں گا باقی لاتیں کون کھائے←  مزید پڑھیے

حکمتیں 3 ۔۔۔۔۔ او تیرے کی/راجہ محمد احسان

“او تیرے کی” عبدالحکیم کا تکیہء کلام تھا۔ اس تکیہء کلام کی خوبصورتی یہ تھی کہ یہ خوشی غمی کے ہر موقع پر فٹ آ جاتا تھامثلاً بڑا بیٹا گھر میں داخل ہوا اور کہا ” ابا مبارک ہو میں←  مزید پڑھیے

حکمتیں2 ۔۔۔۔ جان میں آپکو کیسی لگتی ہوں/راجہ محمد احسان

عبدالحکیم کا  ذکر ہو اور اُن کے رومانس نہ یاد آئیں ہو نہیں سکتا۔آپ کی طبیعت رومانٹک ہے۔آپ کے مزاج میں رومانس ہے۔ آپ اُن کی طبیعت اور مزاج کا اندازہ اس بات سے لگائیں کہ جو کبھی حکیم صاحب←  مزید پڑھیے

حکمتیں ۔۔۔۔۔۔گنا/راجہ محمد احسان۔۔قسط1

عبدالحکیم کون ہیں وثوق سے  کُچھ کہنا ممکن نہیں۔مزاج بلغمی تو انداز شبنمی۔بلا کے دل پھینک ہیں پر مجال جو کبھی نگاہیں زمین سے اُٹھائی ہوں۔اندازِ تکلم ایسا کہ جیسے پھول جھڑ رہے ہوں پر جو مغلظات بکنے پہ آئیں←  مزید پڑھیے

صاحب اورصاحبہ ۔۔۔راجہ محمد احسان

ہم جو پریوں اور شہزادیوں کی کہانیاں پڑھتے آ رہے ہیں .۔۔ جو حسن کی دیویاں ہمارے من کے مندروں میں منصبِ خدائی پر براجمان ہیں ۔۔۔ لکشمیاں ، رادھائیں ، سیتائیں ، رضیائیں اور جودھائیں پھر میڈیا نے ہمیں←  مزید پڑھیے

نجات دہندہ۔۔۔راجہ محمد احسان

بعثتِ رسول صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم سے پہلے روم،فارس، ہند اور چین میں معاشرتی معاشی اخلاقی اقتصادی   جو بھی  رسوم و رواج تھے انکو ختم کرنے کے لئے اللہ نے اپنا رسول بھیجا اور پھر عربوں نے ان←  مزید پڑھیے

کُُچھ بے ربط باتیں ،بے ربط خیال۔۔۔۔راجہ احسان

فیروز اللغات سے بہتر ہے کہ انسان دل و دماغ کے دریچے کھول لے۔ کبھی کبھی انسان دماغ کے اتنے دروازے کھڑکیاں کھول کر بیٹھ جاتا ہے کہ وہاں رش پڑ جاتا ہے اور اس رش کی وجہ سے وہ←  مزید پڑھیے

فوج پہ چیخنا بند کرو۔۔۔۔راجہ محمد احسان

ہم لوگ صرف ستمبر 1965ء میں لڑی جانے والی جنگ کے بارے میں جانتے ہیں جب پوری قوم افواجِ پاکستان کے کندھے سے کندھا ملا کر کھڑی تھی یا زیادہ سے زیادہ سقوطِ ڈھاکہ 1971ء، جنگِ کشمیر 1948ء، جنگِ کارگل←  مزید پڑھیے

مائے نی میں کِنوں آکھاں۔راجہ محمد احسان/ قسط 7

ماں ساڑھی کا تحفہ اور میری پہلی تنخواہ پا کر بہت خوش ہوئی ۔ مجھے گلے سے لگایا اور میرے سر پر شفقت سے بوسہ دیا۔ اس دن ما ں سے ایسا پیار پا کر مجھے یوں محسوس ہوا کہ←  مزید پڑھیے

اللہ کا جواب۔راجہ محمد احسان

وہ کبھی نماز کے معاملے میں مستقل مزاج نہ رہاتھا، نہ ہی کبھی دیگر شرعی معاملات میں زیادہ بڑھ چڑھ کر حصہ لیا، غصے کا بھی بہت تیز تھا مگر جب سے ایک اللہ والے سے ملاقات ہوئی ۔ اس←  مزید پڑھیے

مائے نی میں کِنوں آکھاں۔راجہ محمداحسان/ قسط6

آٹھویں جماعت سے مجھے سکول سے بھاگنے کا جو چسکا پڑا تو بس پھر بھاگتا ہی رہا ۔ ماں سے ضد کر کے میں نے تائی مارشل آرٹس سینٹر بھی جوائن کر لیا تھا جو وانڈو سٹائل میں مارشل آرٹس←  مزید پڑھیے

چوروں کا راج۔راجہ محمد احسان

پرانے وقتوں میں ایک بادشاہ ہوا کرتا تھا جس کے دورِ حکومت میں سلطنت میں بہت چوریاں ہونا شروع ہو گئیں اور چوروں کا کوئی سراغ بھی نہیں ملتا تھا. بادشاہ کو بہت شکایات آئیں اور اس نے چوریوں کے←  مزید پڑھیے

فیسبکی چور، جھوٹے لکھاری اور مکالمہ.۔راجہ محمد احسان

ایک دن کسی پوسٹ پر ایک خاتون مردم دشمنی میں اپنی تحریر سے راکٹ برسائے جا رہی تھیں جو کبھی ہمارے دائیں کبھی بائیں کبھی سامنے اور کبھی پیچھے آ کر پھٹتا ۔ اصل کہانی تو جب شروع ہوئی جب←  مزید پڑھیے

مائے نی میں کِنوں آکھاں، قسط 5۔راجہ محمد احسان

چچا ۔۔۔۔نکڑ پہ کھڑے چچا ۔۔۔چچا گھڑی والا۔۔۔۔۔چچا کا نام خدا جانے کیا تھا لوگوں میں وہ چچا گھڑی والا کے نام سے مشہور تھے کیونکہ وہ گھڑیوں کی مرمت کا کام کرتے تھے اور ان ہی دنوں بختو بھی←  مزید پڑھیے

مائے نی میں کِنوں آکھاں۔ قسط 4

یہاں تک سب کچھ ٹھیک چل رہا تھا ماں محنت سے مجھے اور میری دونوں خالاؤں کی تعلیم و تربیت پر توجہ مرکوز کیے ہوئے تھی۔ ماں روازنہ سکول جاتے ہوئے مجھے اٹھنی بھی دیا کرتی تھی اور روزانہ رات←  مزید پڑھیے

مائے نی میں کِنوں آکھاں۔ قسط 3

نہیں نہیں نہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔ میں نے بہت جلد بازی کی بہت تیزی اور سرعت سے کام لیا دو چار برس کہہ کر میں سولہ سال آگے نکل گیا ۔۔۔۔۔۔۔۔ مجھے ان سولہ سالوں کو یوں نہیں سمیٹنا چاہیے تھا ۔۔۔۔۔۔۔اگر←  مزید پڑھیے