صائمہ نسیم بانو کی تحاریر
صائمہ نسیم بانو
صائمہ نسیم بانو
صائمہ بانو انسان دوستی پہ یقین رکھتی ہیں اور ادب کو انسان دوستی کے پرچار کا ذریعہ مان کر قلم چلاتی ہیں

سنو اک کام کرتے ہیں ۔۔۔۔۔بانو بی

سنو! اک کام کرتے ہیں گلوں میں رنگ بھرتے ہیں ذرا یہ کیمرہ تو لو اور اک تصویر اب کھینچو گلوں میں گل, گلِ احمر ہاں اس کے سب ہی چنچل رنگ ذرا تم قید تو کر لو نگہ میں←  مزید پڑھیے

who Should Be KING۔۔۔۔صائمہ نسیم بانو

کچھ روز قبل, ایک ساتھی بلاگر نے جناب انتظار حسین صاحب کی کتاب “سنگھاسن بتیسی” پر ایک مضمون لکھا- مضمون کا لکھنا ہی تھا کہ نام نہاد بڑے لکھاریوں اور نقادوں کی جانب سے آتش فشانی و شعلہ بیانی کا←  مزید پڑھیے

پیارے ڈیڈی! ۔۔۔ صائمہ نسیم بانو

“زاویہ” پڑھ رکھی ہیں؟ آپی کے اس سوال پر میں چونک گئی ان کو بہت اچھے سے علم ہے کہ میں نے کیا کیا پڑھ رکھا ہے، کیا کیا پڑھتی ہوں، پھر اس سوال کا کیا۔  مقصد؟ میری آنکھوں میں←  مزید پڑھیے

احمد بشیر کی کہانیاں (۲) ۔۔۔ مدون: صائمہ نسیم بانو

جموں والی سردار بیگم کی کہانی (۲)   اس خیال سے میرے جسم میں طاقت آگئی بچی کو میں نے سینے سے لگایا اور لڑکھڑاتی ہوئی, لاشوں کو پھلانگتی ہوئی آہستہ آہستہ ریلوے لائن کی طرف بڑھی. ریلوے لائن کے←  مزید پڑھیے

احمد بشیر کی کہانیاں (۱)۔۔۔ مدون : صائمہ نسیم بانو

احمد بشیر ایک حساس انسان, باشعور فرد, زیرک دانشمند اور کمال لکھاری ہی نہیں بلکہ ایک سچے, آزاد, نڈر, بیباک اور دلیر صحافی بھی تھے. ایسے لوگ اب نایاب ہی نہیں بلکہ ناپید ہو چلے ہیں…… احمد بشیر اسطوروں میں←  مزید پڑھیے