منور حیات کی تحاریر
منور حیات
منور حیات
ملتان میں رہائش ہے،مختلف سماجی اور دیگر موضوعات پر بلاگ لکھتے ہیں۔

گندم مرغیاں،اور تونسہ شریف کی بھیڑ۔۔منور حیات سرگانہ

اب پچھتائے کیا ہوت،جب ‘ککڑیاں’چگ گئیں کھیت۔ ککڑیوں سے مراد یہاں مرغیاں ہیں۔ تو صاحبو’خیر سے آٹے کا بحران شروع ہو چکا ہے،ابھی نئی فصل کے آنے میں کم و بیش تین ماہ باقی ہیں،اگر اس دوران ہمارے صحراؤں میں←  مزید پڑھیے

ملنگی راج۔۔منور حیات سرگانہ

وزیراعظم نے تعلیمی نصاب میں روحانیت اور تصوف کے مضامین شامل کرنے کی ہدایت کر دی ہے۔اس سے پہلے وہ تصوف کی عالمی یونیورسٹی بنانے کا ارادہ بھی ظاہر کر چکے ہیں۔ ہمارے ویژنری وزیراعظم ان عامیوں کا جینا تو←  مزید پڑھیے

دین کا نام بدنام کرنے والے ہوس پرست۔۔منور حیات سرگانہ

کیسا شرم کا مقام ہے،کہ جس بد طینت اور ہوس پرست کا بس چلتا ہے،وہ اسلام کا نام لے کر اپنے مذموم مقاصد کو پورا کر لیتا ہے۔اس سے بڑی توہین مذہب اور توہین رسالت کیا ہو سکتی ہے،کہ رحمت←  مزید پڑھیے

شکریہ جناح۔۔منور حیات سرگانہ

آج 25 دسمبر قائد اعظم محمد علی جناح کی پیدائش کا مبارک دن ہے۔وہی قائداعظم جنہوں نے قیام پاکستان کی مخالفت کرنے والے مسلمان رہنماؤں کو یہ سمجھانے کی کوشش کی تھی کہ،” آپ کی آنے والی ساری نسلوں کی←  مزید پڑھیے

یہ وقت فوج کے شانہ بشانہ کھڑا ہونے کا ہے۔۔منور حیات سرگانہ

اس وقت بھارتی حکومت شہریت کے ترمیمی قانون کو لے کر اپنے خلاف بڑھتے ہوئے مظاہروں سے اتنی پریشان ہے،کہ اس کے پاس اس کے علاوہ اور کوئی چارہ باقی نہیں  بچا کہ،پاکستان کے خلاف کوئی محاذ کھول کر اپنے←  مزید پڑھیے

چھوڑو سب ،آؤ ٹی وی دیکھو۔۔منور حیات سرگانہ

میں ٹی وی لاؤنج میں بیٹھا ہوں،آرام دہ کاؤچ پر دراز ،میں نے پاؤں لمبے کر کے سامنے والی میز پر رکھے ہوئے ہیں۔ میرے دائیں ہاتھ پر ٹی وی کا ریموٹ دھرا ہے،اور بائیں ہاتھ پر  سنیکس کا بڑا←  مزید پڑھیے

وکلاء گردی اور بزدل سرکار۔۔منور حیات سرگانہ

بالآخر ایک اور دسمبر بھی پاکستانیوں پر بہت بھاری پڑا۔16 دسمبر 1971 کو سقوط ڈھاکہ کے بعد 16 دسمبر2014 پاکستانیوں کو خون کے آنسو رُلا گیا تھا،جب مذہبی دہشت گردوں نے آرمی پبلک  سکول پشاور پر حملہ کر کے 145←  مزید پڑھیے

جا بیٹی’ گل سماء’ تیری قسمت۔۔۔منور حیات سرگانہ

صوبہ سندھ ،ضلع دادو اور علاقہ تھانہ واہی پاندھی،اس شخص کا نام علی محمد رند ہے،جس نے اپنے دوسرے رشتہ دار علی نواز رند اور دیگر دو کے ہمراہ اپنی ہی نو سے دس سالہ معصوم بیٹی ‘گل سماء’ کو←  مزید پڑھیے

پاکستان کا قومی شناخت کا بحران۔۔۔منور حیات سرگانہ

کسی بھی فرد کی شناخت کی کئی جہتیں ہوتی ہیں ،آپ ان کو اس فرد کی ذیلی شناختیں بھی کہہ سکتے ہیں ۔مثلاً ایک فرد مسلمان،ہندو یا عیسائی ہے۔یہ اس کی مذہبی شناخت ہے،وہ پنجابی یا پٹھان ہے،یہ اس کی←  مزید پڑھیے

مولانا کی پھر ناکامی۔۔۔منور حیات سرگانہ

تھی خبر گرم کہ غالبؔ کے اڑیں گے پرزے دیکھنے ہم بھی گئے تھے پہ تماشا نہ ہوا مولانا کے آزادی مارچ کا میڈیا کے مخصوص حلقوں کی جانب سے بنایا گیا ‘ہَوّا’،بالآخر ہوا بھرا غبارہ ثابت ہوا۔حکومت نے شروع←  مزید پڑھیے

آج  گرو نانک دیو جی مہاراج کی جیت کا دن ہے۔۔منور حیات سرگانہ

کرت کرنا ،نام جپنا ،تے ونڈ کے چکنا’ یعنی محنت کرنا ہے،ایک رب کی عبادت کرنا ہے،اور مل بانٹ کر کھانا ہے۔یہ تھیں بابا گرو نانک دیو جی مہاراج کی بنیادی تعلیمات۔ اس سے سادہ،عام فہم اور امن و آشتی←  مزید پڑھیے

سوال تو کئی ایک ہیں۔۔۔منور حیات سرگانہ

سانحہ ساہیوال فیصلے کے بہت سے پہلو ہیں۔کلی طور پر حکومت کو موردالزام ٹھہرانا بھی درست نہیں ہوگا۔پہلی بات تو مدعی حضرات کی کریں۔جنہوں نے گورنر ہاوس لاہور میں وزیراعظم سے ملاقات والے دن ہی ایک کروڑ روپیہ پکڑ لیا←  مزید پڑھیے

پھانسی گھاٹ۔۔۔منور حیات سرگانہ

جبرو، چاچے فضل دین کا سب سے بڑا بیٹا تھا۔ جابر خان نام رکھا تھا،لیکن لاڈ سے جبرو پکارتے تھے ،پہلوٹھی کی اولاد یوں بھی اکثر ماں باپ کی زیادہ لاڈلی ہوتی ہے۔یوں تو چاچے فضل دین کے تین اور←  مزید پڑھیے

پیدل نجف سے کربلا۔۔۔منور حیات سرگانہ

عراق میں صدام حکومت کے خاتمے کے بعد جہاں عام لوگوں کے حصے میں خانہ جنگی،دہشت گرد حملے،دہشتگرد تنظیم داعش کا ظلم و ستم اور غربت آئی ،وہیں پر ایک مثبت تبدیلی یہ ہوئی کہ عالم اسلام کے لئے بالعموم←  مزید پڑھیے

کچھ الگ طرح کا سوچیں گے،سزا تو ملے گی۔۔منور حیات

یہ کہانی ہےکراچی میں رہنے والے دو بھائیوں کی،جن کا تعلق نچلے درجے کے ایک متوسط گھرانے سے تھا،لیکن انہوں نے محنت کر کے نہ صرف یہ کہ اپنا ذاتی کاروبار کھڑا کیا،بلکہ کئی لوگوں بشمول خواتین کو روزگار بھی←  مزید پڑھیے

آپ کے خیال میں ایک استاد کتنا عظیم ہو سکتا ہے ؟۔۔۔منور حیات سرگانہ

ایک نوجوان اپنے ایک دوست کی شادی میں شمولیت کے لئے   تقریب میں پہنچا،تو اس کی نظر مہمانوں کے درمیان بیٹھے ہوئے اپنے شفیق استاد پر پڑی۔وہ باقی مہمانوں کے بیچ سے گزرتا ہوا اپنے استاد محترم کے سامنے←  مزید پڑھیے

تاریخ کی ایک جامع کتاب۔۔۔منور حیات سرگانہ

آج ہی ایک محترمہ نے میری ناقص معلومات میں یہ کہہ کر اضافہ کیا کہ’تمام مرد ٹھرکی ہوتے ہیں۔۔ میں پہلے تو انگشت بدنداں ،حیران و پریشان رہ گیا کہ اتنے اہم معاملے میں میری معلومات نہ ہونے کے برابر←  مزید پڑھیے

ہم خون کے آخری قطرے تک لڑیں گے۔۔۔منور حیات سرگانہ

اگر تنقید کے نشتر تھوڑی دیر تک کے لئے ایک طرف رکھ دیے جائیں،تو بلاشبہ عمران خان  کے جنرل اسمبلی کے 74ویں سالانہ سیشن میں خطاب سے مسٹر ذوالفقار علی بھٹو کے جنرل اسمبلی کی ایک تقریر میں کہے گئے،جملے”ہم←  مزید پڑھیے

معلق روحیں۔۔۔منور حیات سرگانہ

میں صبح سے ہی اپنی پرانی ڈاٹسن لے کر شہر کی سڑکوں پر نکلا ہوا تھا۔کوئی سواری نہیں مل رہی تھی ۔کچھ تو میری گاڑی کی خستہ حالت دیکھ کر کوئی مجھے اشارے سے روکنے کی کوشش ہی نہیں کرتا←  مزید پڑھیے

تمہارے پاس اب وقت بہت کم ہے۔۔۔۔منور حیات سرگانہ

ایک بات ہمارے ملک کے نو سرباز سیاست دانوں،شاطر جرنیلوں،مکار بابوں ،فرعون صفت ججوں،درباری صحافیوں اور حریص ملاؤں کو اب اچھی طرح سے سمجھ لینی چاہیے،کہ یہ اب وہ والی پرانی دنیا نہیں رہی،کہ جہاں سیاستداں ایک دوسرے کو چور←  مزید پڑھیے