سائنس

آسیبی چاند۔۔۔۔محمد شاہزیب صدیقی

دو صدیاں پہلے فلکیات کے چاہنے والوں کے دماغ میں ایک عجیب سوال نے دستک دی، سوال یہ تھا کہ کیا ہوگا اگر ہم زمین سے دور ہوتے جائیں اور سورج کے نزدیک پہنچتے جائیں؟ جس کا یقینی جواب یہ←  مزید پڑھیے

فرانس کی اکیڈمی سے ڈاکنز تک ۔ گوند کے نقصانات۔۔۔۔وہارا امباکر

بعض دفعہ، معاشرے اور افراد تبدیلی سے خائف ہوتے ہیں اور ان کو بدلتے دیکھنے سے گھبراتے ہیں۔ وہ بھی جن کی مہارت ہی اس میں ہونی چاہئے لیکن ہمارے آگے بڑھنے کی طاقت ہی اس تبدیلی میں رہی ہے۔←  مزید پڑھیے

آئیوڈین والا نمک اور گاندھی۔۔۔وہارا امباکر

کہا جاتا ہے کہ تاریخ فاتح لکھتے ہیں لیکن نہیں، تاریخ وہ لکھتے ہیں جو بچ جاتے ہیں۔ بچتا تو آخر میں کوئی بھی نہیں۔ تو پھر تاریخ شاید وہ لکھتے ہیں جو زندہ ہوتے ہیں۔ یا پھر شاید کئی←  مزید پڑھیے

خلائی جہاز نے سورج کے قریب جانیکا نیا ریکارڈ بنا لیا

امریکی خلائی جہاز پارکر سولر پروب نے سورج کے قریب تر جانے کا نیا ریکارڈ قائم کر دیا۔ ناسا کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق پارکر سولر پروب سورج کے اتنے قریب پہنچ گیا کہ سورج اور خلائی جہاز←  مزید پڑھیے

الفا زیرو۔۔۔۔وہارا امباکر

دسمبر 2017 کو ایک کمپیوٹر پروگرام نے دو الگ مقابلوں میں دوسرے کمپیوٹر پروگرامز سے فتح حاصل کی۔ یہ نتائج اس قدر حیران کن اور پریشان کن تھے کہ اسے کچھ لوگ دنیا کی تاریخ کا ایک انتہائی اہم سنگِ←  مزید پڑھیے

مون لینڈنگ:صدیوں پرانے بت یکدم نہیں ٹوٹا کرتے۔۔۔۔۔ضعیغم قدیر

ہم انسان چاند پہ گئے اس بات کو بہت سے انسان نہیں مانتے کیونکہ اگر وہ اس بات کو سچ مان لیں تو انکو اپنے اندر موجود بت توڑنا پڑتے ہیں۔چاند پر جانے کی سب سے زیادہ مخالفت وہ لوگ←  مزید پڑھیے

پرسپیکٹو کیا ہے؟۔۔۔۔۔محمد جواد عمر/حصہ چہارم (آخری حصہ)

اگر ہم فضاء میں بلند خود سے کافی دور کسی متحرک چیز جس کی حرکت کی سمت ہمارے لیے عمودی Perpendicular ہو ,،کا مشاہدہ کریں تو پرسپیکٹو کے عمل کی وجہ سے اس کی حرکت کا راستہ ہمیں آرک نما←  مزید پڑھیے

برج اور ستارے۔۔۔۔احمد علی /حصہ اول

ﺍﻧﺴﺎﻧﯽ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﮨﻤﯿﺸﮧ ﮐﺴﯽ ﮐﺎﻡ ﮐﮯ ﮨﻮﻧﮯ ﺍﻭﺭ ﻧﮧ ﮨﻮﻧﮯ ﮐﯽ ﺧﻮﺍﮨﺶ ﻣﯿﮟ ﮔﺰﺭ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﮯ۔ ﺍﻧﺴﺎ ﻥ ﮐﮯ ﺳﺎﺭﮮ ﺗﻔﮑﺮﺍﺕ ﻭ ﺍﻧﺪﯾﺸﮯ ﺍﺳﯽ ﺧﻮﺍﮨﺶ ﮐﮯ ﺍﺭﺩﮔﺮﺩ ﮔﮭﻮﻣﺘﮯ ﮨﯿﮟ۔ ﺍﻧﺴﺎﻥ ﺟﻮ ﺿﺮﻭﺭﯾﺎﺕ ﻭ ﺍﺣﺴﺎﺳﺎﺕ ﮐﺎ ﺍﺯﻟﯽ ﻭ ﺍﺑﺪﯼ ﻏﻼﻡ ﮨﮯ←  مزید پڑھیے

حصہ سوئم (پرسپیکٹو کیا ہے)۔۔۔۔۔۔محمد جواد عمر

افق کیا ہے ؟ افق کیسے بنتا ہے ؟ افق Horizon 1: The horizon or skyline is the apparent line that separates earth surface line from sky at any distance. 2: The line at which the sky and Earth appear←  مزید پڑھیے

حقیقی اُڑن کھٹولا۔۔۔۔۔ محمد شاہ زیب صدیقی/قسط4

حقیقی اُڑن کھٹولا۔۔۔محمد شاہزیب صدیقی/قسط3 کائنات کے اس بیکراں  سمندر میں انسان زمین نامی کشتی میں سوار ہے، اب ہماری کوشش ہے کہ کسی طرح زمین جیسی ننھی کشتی سے نکل کر زمان و مکاں کے سمندر میں موجود دوسری←  مزید پڑھیے

قدیم ڈی این اے – ماضی کی کنجی۔۔۔۔۔وہارا امباکر

ہماری آج کی شناخت اور ہمارا اپنا پورا ماضی ہمارے جسم کے ایک ایک خلیے میں لکھا ہے اور یہ جگہ ہمارا ڈی این اے ہے۔ ڈی این اے ایک نازک چیز ہے۔ یہ خراب ہوتا رہتا ہے، خاص طور←  مزید پڑھیے

کیوں ہوتی ہے یہ خشکی، کہاں سے آتی ہے یہ خشکی؟۔۔۔۔سلطان محمود

سر کے بالوں میں خشکی (Dandruff) ایک فنگس کی وجہ سے ہوتی ہے جس کو “میلا سیزيا فرفر” کہتے ہیں۔ یہ فنگس ایک متاثرہ فرد کے بالوں سے یا اسکی زیرِ استعمال کنگھی بالوں میں پھیرنے سے دوسرے فرد کو←  مزید پڑھیے

پرسپیکٹو کیا ہے؟؟ Perspective۔۔۔۔۔۔۔محمد جواد عمر/حصہ دوم

جیسا کہ ہم جانتے ہیں کہ ہمارہ نظارہ پرسپیکٹو کے عمل کی وجہ سے منفرد ہوتا ہے ،پرسپیکٹو کے چند اصول جو ہم پہلے ہی سمجھ چکے ہیں آئیں انھیں دوبارہ منظم کرتے ہیں اور ان کی کچھ اطلاقی وضاحت←  مزید پڑھیے

پرسپیکٹو کیا ہے؟۔۔۔۔۔۔محمد جواد عمر /حصہ اول

( The appearance [size,position,speed,distance & angle] of things relative to one another as determined by their distance for the viewer.) “نظارہ میں چیزوں کا کسی بھی دوسری چیزوں سے ایک دوجے سے فاصلہ کی بنیاد پر چھوٹا یا بڑا نظر←  مزید پڑھیے

نیند کی سائنس۔۔۔وہارا امباکر

ایک موچی جوتے بنا رہا تھا۔ ابھی چمڑہ کاٹ کر رکھا تھا کہ نیند آ گئی۔ صبح اٹھا تو جوتے سلے ہوئے پڑے تھے۔ یہ بچپن کی جادوئی کہانی ہے لیکن یہ جھوٹ نہیں۔ نیند ہمارے ساتھ کچھ ایسا ہی←  مزید پڑھیے

نفسیات:احساسِ جرم, ایک نفسیاتی عارضہ۔۔۔۔ڈاکٹر مختار مغلانی

انسانوں کی اکثریت احساسِ جرم کو سمجھنے کا تکلّف نہیں برتتی، یہ احساس کم و بیش ہر شخص میں موجود ہے، ممکن ہے اچھا انسان بننے یا رہنے کیلئے اس احساس کی ایک خاص اہمیت ہو، مگر زیادہ تر لوگوں←  مزید پڑھیے

حقیقی اُڑن کھٹولا۔۔۔محمد شاہزیب صدیقی/قسط3

اس سیریز کے پچھلے حصے میں ہم نے انٹرنیشنل اسپیس اسٹیشن میں موجود پیچیدہ نظام کے متعلق سمجھنے کی کوشش کی کہ کیسے ایک چھوٹے سے اُڑن کھٹولے میں زندگی کو بھرا گیا،زندگی کو رواں دواں رکھنے کےلئے کیا کیا←  مزید پڑھیے

قدرتی ذہانت سے مصنوعی ذہانت تک – پیریوڈک ٹیبل کے کارنامے۔۔۔وہارا امباکر

ساڑھے چار ارب سال پہلے زمین وجود میں آئی۔ اپنے سے پچھلی نسل کے ستاروں کی باقیات سے۔ مرتے وقت ان ستاروں نے طرح طرح کے عناصر کو جنم دیا تھا۔ ہائیڈروجن، آکسیجن، ایلومینیم، لوہا، سنکھیا، یورینیم سب کچھ یہاں←  مزید پڑھیے

اگلے دو سالوں میں چینگ دو شہر کے آسمان پہ مصنوعی چاند بھیجا جائے گا

چین کے جنوب مغربی شہر چینگ دو کی انتظامیہ نے ایک انوکھا اعلان کیا ہے کہ اگلے دو سالوں میں چینگ دو شہر کے آسمان پہ مصنوعی چاند بھیجا جائے گا اور دعویٰ کیا ہے کہ اس انسانی چاند کی←  مزید پڑھیے

ماضی کے کائناتی دریچے۔۔۔۔ محمد شاہ زیب صدیقی

کائنات کو کھوجنا ایک ایسی exerciseہے جو انسانی سوچ کی بندشوں کو کھولتی ہے، یہی وجہ ہے کائنات کی سیر پہ نکلا ہوا شخص اپنی الگ دنیا بسا لیتا ہے،اس کے لئے زمینی مشکلات کی وقعت ختم ہوجاتی ہے، نہیں←  مزید پڑھیے