عثمان ہاشمی کی تحاریر
عثمان ہاشمی
عثمان ہاشمی
عثمان ھاشمی "علوم اسلامیہ" کے طالب علم رھے ھیں لیکن "مولوی" نھیں ھیں ،"قانون" پڑھے ھیں مگر "وکیل" نھیں ھیں صحافت کرتے ھیں مگر "صحافی" نھیں ھیں جسمانی لحاظ سے تو "جرمنی" میں پاۓ جاتے ھیں جبکہ روحانی طور پر "پاکستان" کی ھی گلیوں میں ھوتے ھیں۔

ایک بھول ایک سبق ۔۔۔عثمان ہاشمی

 سٹٹگارٹ جرمنی کے صوبے “بادن ویوتم برگ ” کا مرکزی شہر ہے ، خوبصورت انسانوں سے بھرا یہ شہر خود بھی بہت خوبصورت، دیکھنے ،گھومنے اور رہنے لائق ہے ۔ میری رہائش سٹی سنٹر سے تقریباً  15 میل کی مسافت←  مزید پڑھیے

میری شاموں کی امام شام ۔۔عثمان ہاشمی

   ایسا لگتا ہے کہ کل ہی کی بات ہے۔۔ رمضان المبارک کی آمد میں اکیس دن باقی تھے، میں طاہرندیم شہید قرآن اکیڈمی میں درجہ حفظ کا طالب علم تھا  ۔ مغرب سے کچھ وقت پہلے ابوجان ملنے کیلئے←  مزید پڑھیے

ناموافق حالات ہی ترقی کا زینہ ہیں۔۔۔عثمان ہاشمی

   سفر زندگی میں اگر لمبے عرصے تلک موافق حالات رہیں تو ترقی کا سفر جامد ہوجاتا ہے جبکہ اس کے برعکس نا موافق حالات انسان میں اک تحریک برپا کرتے ہیں، جس کے نتیجے میں انسان کچھ قدم پیچھے←  مزید پڑھیے

سیکس ایجوکیشن ، مدارس دینیہ اور مذہبی طبقہ۔۔صاحبزادہ عثمان ہاشمی

ہمارا مسئلہ یہ ہے کہ ہمیں معلوم ہی نہیں کہ  ہمارا مسئلہ کیا ہے  ۔ آپ ماضی قریب میں رونما ہونے والے حادثے کو ہی لے لیجیے ، جس میں ایک معصوم کلی زینب کو مسل دیا گیا   اور←  مزید پڑھیے

” یورپ ” آنے کے “خواہشمند ” متوجہ ہوں ۔۔۔صاحبزادہ عثمان ہاشمی

(تربت میں ہونے والے حالیہ ” ظلم ” اور اسی طرح کے کچھ واقعات کے نتاظر میں کی گئی ایک التجا) میں جب سے یورپ میں آیا ہوں اس موضوع پر قلم اٹھانا چاہ رہا ہوں، مگر کچھ نا مساعد←  مزید پڑھیے

مسلک پرستی ” کے مرض سے اپنی اولادوں کو بچائیے۔صاحبزادہ عثمان ہاشمی

 جس طرح ” مروجہ سیاست ” کا سینہ ” دل ” سے خالی ہے اسی طرح ” مروجہ مسلکیت ” کا سر ” دماغ ” سے یکسر محروم ہے ۔ اور بڑے ہی افسوس اور دکھ کے ساتھ اس حقیقت←  مزید پڑھیے

شانِ فاروق اعظم ؓ ۔ بزبانِ اٹالین ملحدہ

 ” کرسٹینا ” نے جیسے ہی اٹالین لہجے کے تڑکے کے ساتھ ” مائن فور بلڈ است اُ مٙر بن کھطاب ” (عمر بن خطاب میرے “رول ماڈل ” ہیں ) کہا میرے سمیت سبھی ہم مکتب چونک پڑے ۔۔←  مزید پڑھیے

ایک رات “دریائے نیکر” کے کنارے

منگل کی شام میرا پڑاؤ “دریاۓ نیکر” کے کنارے واقع قدیم رومانوی شہر “ھائیڈرل برگ” میں تھا۔ تقریباً بیالیس مربع میل کے رقبہ اور374 فٹ کی بلندی پر واقع اس شہر کو “وادی نیکر” کا دل کہا جاتا ہے ۔تقریباً←  مزید پڑھیے