ہم جنس پرستوں کو پکڑنے کے لئے خفیہ ٹیم تیار

SHOPPING

دنیا کے کئی ممالک میں ہم جنس پرستی کو قانونی حیثیت دی جا چکی ہے تاہم کئی ملک ایسے ہیں جہاں اب بھی اس قبیح فعل کو جرم تصور کیا جاتا ہے۔ ان ممالک میں تنزانیہ بھی شامل ہے جہاں اب ہم جنس پرستوں کو پکڑنے کے لیے ایک خفیہ ٹیم تیار کر لی گئی ہے۔ برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق یہ خفیہ ٹیم تنزانیہ کے معاشی مرکز دارالسلام کے گورنر پاﺅل میکونڈا نے تیار کی ہے جو شہر میں موجود ہم جنس پرستوں کا سراغ لگائے گی اور انہیں گرفتار کرے گی۔

SHOPPING

rپورٹ کے مطابق یہ ٹیم لوگوں کے سوشل میڈیا اکاﺅنٹس کی نگرانی کرے گی اور دیگر کئی حوالوں سے مشکوک افراد پر نظر رکھے گی۔ پاﺅل میکونڈا کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ ”میرے اس فیصلے کی وجہ سے مجھے عالمی سطح پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا جائے گا لیکن میں خدا کو غصہ دلانے کی بجائے ان ممالک کو غصہ دلانے کو ترجیح دوں گا جو چاہتے ہیں کہ ہمارے ملک میں بھی ہم جنسی پرستی کو قانونی حیثیت مل جائے۔ شہری ہمیں مشتبہ ہم جنس پرستوں کے نام دیں۔ میری یہ ٹیم ان کی نگرانی کرکے ایک ہفتے کے اندر انہیں رنگے ہاتھوں گرفتار کرے گی۔“

SHOPPING

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *