• صفحہ اول
  • /
  • کالم
  • /
  • پاکستان کو بچانا ہے تو چودھراہٹ اور تھانیداری ختم کرنی ہو گی۔۔۔نذر محمد چوہان

پاکستان کو بچانا ہے تو چودھراہٹ اور تھانیداری ختم کرنی ہو گی۔۔۔نذر محمد چوہان

ایمسٹرڈیم سے ایک وکیل دوست نے کل ہالینڈ کے وزیراعظم کو سیب کھاتے سائیکل پر جانے کی تصویر لگائی ۔ میں جب ہالینڈ میں تھا تو ہم تو اس وقت کے لیڈروں کو روک کر سلام دعا بھی کر لیتے تھے ۔ پاکستانی حکمران خدا ہیں، ان کو دیکھنے اور ملنے کے لیے غیب کا علم چاہیے ۔ اس علم کی چابیاں صرف ملک ریاض ، میاں منشاء اور رزاق داؤد جیسوں کے پاس ہے ۔ ایک ان پڑھ چوہدری اکرم ، ہمارا ہمسایہ راحت بیکری کا سی ای او ہے ۔اس کا کام صرف ٹھیکیداری اور سپلائی  ہے ، چوہدری پرویز الہی نے اسے مشیر بنا دیا ۔ روز وہ استانیوں اور پھل والوں کے ساتھ تصویریں کھینچواتا ہے اور طبلچیوں کی طرح واہ واہ لیتا ہے ۔ کل میں نے اسے کہا کہ  تمہاری بیکری کے چند گز دور مسجد قدسیہ کے سامنے ایک بدکار عورت   چکلہ چلاتی ہے وہ تم سے کیوں بند نہیں ہو سکتا ؟ فرمانے لگا ، “جاؤ جا کے اورسیز کمیشن میں مرو “ وہاں میری درخواست کو کوئی  چھ مہینے ہو گئے ہیں اور جواب ہے کہ  “ہم بے بس ہیں “۔ میری جوان لڑکیوں کی ہیومن ٹریفکنگ پر لاہور ہائیکورٹ میں پیٹیشن پچھلے دس سال سے پینڈنگ ہے ، اور جسٹس فرخ عرفان کے خلاف سپریم جیوڈیشل کونسل میں پناما لیکس پر عرصہ تین سال سے ۔

یہاں امریکہ میں جہاں میں رہتا ہوں ہماری کانگریس کی ممبر خاتون بونی واٹسن ہیں ۔میں پچھلے ہفتہ اس سے بات کر رہا تھا کہ  میں نے تمہیں  ایک ضروری کام سے ملنا ہے ، کہنے لگی جب مرضی آ جانا صرف اسٹاف سے پوچھ لینا میں دفتر میں ہوں یا نہیں ۔ یہ سارے لوگ ، نیوجرسی کا گورنر مرفی ہو ، ہمارا مڈل سیکس بُرو کا مئیر ڈی مُورا نہ ، نہ صرف لوگوں کو باآسانی مل سکتے ہیں عام لوگوں کی طرح بازاروں اور سڑکوں پر گھوم پھر رہے ہوتے ہیں ۔ کیونکہ یہ چور نہیں ، غاصب نہیں ، انہوں نے ماروائے قانون قتل نہیں کروائے اور نہ ہی لوگوں کا پیسہ کھایا ۔ بلکہ یہ سب اپنے ووٹر سے شدید محبت کرتے ہیں ۔ امریکہ میں اگلے سال صدر کے لیے الیکشن ہیں ، ابھی سے دونوں جماعتوں میں طے پا گیا ہے کہ  اس دفعہ ان کا ایجنڈا برنی سینڈرز والا ہو گا جس میں tax the rich اور Medicare for all سر فہرست ہو گا ۔ امریکی ووٹر بہت سیانا ہے ۔ پچھلی دفعہ ٹرمپ کو جتوا کر امیگریشن بند کروائی  اور اب برنی سینڈرز جیسے کو جتوا کر سیٹھ کا مکو ٹھپنا ہے ۔

عمران خان کے لیے یہ سب کچھ اس لیے مشکل تھا کہ  عمران خان تو خود اس بوسیدہ نظام کی پیداوار ہے ۔ اس نے تو خود آفشور کمپنیاں بنائیں  اور چندے کے پیسہ سے موج میلہ کیا ۔ ٹرمپ پر تازہ ترین الزام یہ ہے کہ  اس نے ٹرمپ چیریٹی فاؤنڈئشنز کا پیسہ بڑی چالاکی سے الیکشن کمپین پر لگایا ۔ عمران ابھی تک شوکت خانم کے بے نامی اکاؤنٹس کی وجہ نہیں بتا سکا ۔ جسٹس فرخ عرفان شوکت خانم کے بورڈ آف گورنر میں پچھلے بیس سال سے ہے اور سوائے منی لانڈرنگ کے فرخ عرفان کو کچھ نہیں آتا ۔ میں اپنے وکیل سے کہہ  رہا تھا کہ  یہاں مغرب میں صرف یہ سوال پوچھا جا رہا ہے کہ  کیا آپ نے آفشور کمپنی بنائی ؟ اور اگر جواب ہاں ، تو کیوں ؟ منی ٹریل کی تو بات ہی نہیں ہو رہی ۔ پاکستان میں کوئی  ایک ہزار لوگوں نے آفشور کمپنیاں بنائیں اسٹیٹ بینک کے گورنر طارق باجوہ کے پاس سب کا کچا چٹھا ہے لیکن چونکہ وہ خود اس سے بھی زیادہ گھناؤنے جرائم میں ملوث ہے ، لہذا پردہ ڈالے بیٹھا ہے ۔ یہ لسٹ ایف آئی اے کے پاس بھی ہے جو ڈاکٹر شاہد مسعود کو تو چند کروڑوں کے غبن پر کئی  مہینے اندر رکھ سکتی ہے لیکن ان پناما کے بدمعاشوں کوسیلوٹ مارتی ہے ۔ نواز شریف کو آج ضمانت مل گئی  ۔ وہ اب اپنا علاج تو کیا بلکہ مال سمیٹنے اور جان بچانے کا بندوبست اب احسن طریقے سے کرے گا ۔

مجھ سے پاکستانی نوجوان اکثر پوچھتے ہیں کہ  اب کیا ہو گا ؟ کیا یہ جاننا مشکل ہے ؟ ایک چیز تو یقینی ہے کہ  یہ سارے اپنی موت آپ مریں گے اور دوسری نوجوانوں کی خاموشی بھی نوجوانوں کی موت کا سبب بنے گی ۔ اللہ اللہ خیر صلی ۔ وقت کسی کا انتظار نہیں کرتا ۔ سی ایس ایس کا خاتمہ کیوں نہیں ہو سکتا ؟ یا پروفیشنلز کے امتحان دینے پر پابندی عائد کیوں نہیں کی جاتی ۔ یہ کام تو امریکہ میں کلرک کرتے ہیں جو ایک سی ایس پی پاکستان میں ایک کروڑ روپے مہینہ پر کرتا ہے ۔ پاکستان میں وہ بادشاہ بن کر تصویریں بھی کھینچوا رہا ہے ۔ عمران خان کے سیکریٹری اعظم خان نے آتے ہی اپنے ہم زلف جہانزیب خان کو ایف بی آر کا چیرمین لگوایا ۔ گورنر سرور کا گریڈ اٹھارہ کا سرکاری ملازم رشتہ دار ، پاکستان کی سرکاری خبر رساں ایجنسی APP کا ایم ڈی بنا دیا گیا ہے ۔ رشتہ داریاں ، اقربا پروریاں اور رشتے ناطے ملک کا ستیاناس کر رہے ہیں ۔ آنے والی نسلوں کو تباہ و برباد کر گئے ہیں ۔ ڈاکٹر شہباز گل کا ٹوئٹر اکاؤنٹ بند ہو گیا تو کچھ دیر کے لیے ایک باجا بجنا تو بند ہو گیا لیکن کیا کریں یہاں ہر طرف چودھراہٹ اور تھانیداری کا بینڈ باجا بج رہا ہے ۔ ایک دوست نے لکھا کہ  چھ ڈی ایس پی سسپنڈ ہو گئے ، جناب ان کا پیسہ اوپر والوں کو تقسیم کرنے کو دل نہیں کر رہا ہو گا ۔ کیا یہ ناممکن ہے کہ  پولیس کو ٹارگٹ دیے جائیں ؟   پاکستان میں تو آئے روز خود پولیس کے جرائم  پر خبریں آرہی ہوتی ہیں ۔ ۔ اصل بات ہے کہ  نہ لیڈر اور نہ عوام ، پاکستان کو ٹھیک ہی نہیں کرنا چاہتے ۔ will is missing ، صرف ڈنگ ٹپاؤ ، سانوں کی ، مٹی پاؤ والا معاملہ ہے ۔ ایک خاتون ملتان سے روز یہ رونا روتی ہے کہ  وہ کچھ کرنا چاہتی ہے لیکن کرنے نہیں دیا جاتا اور میں روز اسے یہ کہتا ہوں کہ  ضرور کریں لیکن پلیز روئیں نہ ۔ آپ کو قدرت ایسا نہیں کرنے دے گی کہ  آپ کیک بھی کھائیں اور اسے رکھیں بھی ۔ پاکستانی نوجوان بہت زبردست ہے لیکن بالکل ہمت کے بغیر ، حوصلہ ہار گیا ہے ، تقلید اور شوبازی کا شوقین ۔ اسے یہ علم ہی نہیں کہ  اپنے اہداف کے لیے جنگ لڑنی پڑتی ہے ۔ یا ہو سکتا ہے وہ جنگ کے لیے تیار نہیں اور جنگ کے لیے دل گردہ بھی نہ ہو ۔
ہمی  جب نہ ہوں گے تو کیا رنگ محفل
کسے دیکھ کر آپ شرمایئے گا
اللہ تعالی آپ سب کا حامی و ناصر ۔

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *