• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • سویڈن میں قرآن کے بعد بائبل کو بھی جلانے کی اجازت دیدی گئی

سویڈن میں قرآن کے بعد بائبل کو بھی جلانے کی اجازت دیدی گئی

سویڈن میں قرآن پاک جلانے کی ناپاک جسارت کے بعد پولیس نے اسرائیلی سفارت خانے کے باہر بائبل کو بھی جلانے کی اجازت دیدی۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق سویڈش پولیس نے کل برورز ہفتہ ہونے والے ایسے احتجاجی مظاہرے کا اجازت نامہ جاری کیا ہے جس کے تحت اسرائیلی سفارت خانے کے باہر بائبل جو کہ تورات اور عیسائیوں کی نیو ٹیسٹمنٹ پر مشتمل ہے، کو نذر آتش کیا جاسکے گا۔

اسرائیلی صدر اسحاق ہرزیوگ اور یہودی تنظیموں نے سویڈن کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس اقدام پر شدید احتجاج کیا جائے گا۔ یہ کسی طور قابل قبول نہیں۔

بائبل کو جلانے کا اعلان کرنے والے منتظمین نے پولیس کو دی گئی درخواست میں کہا کہ قرآن کو جلانے کی اجازت دی گئی تو بائبل کے لیے بھی اجازت دی جائے۔ یہ آزادی اظہار کی حمایت میں ہوگا۔

Advertisements
julia rana solicitors

پولیس نے بائبل کو جلانے کی اجازت حاصل کرنے کی درخواست گزار 30 سالہ شخص کا نام ظاہر نہیں کیا۔سویڈن پولیس نے کہا ہے کہ ملک کے آئین میں عوامی اجتماعات کی اجازت دی گئی ہے۔

Facebook Comments

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply