• صفحہ اول
  • /
  • نگارشات
  • /
  • ہائی رسک پریگننسی کیا ہوتی ہے اور اس کی وجوہات کیا ہیں؟۔سائرہ شاہد

ہائی رسک پریگننسی کیا ہوتی ہے اور اس کی وجوہات کیا ہیں؟۔سائرہ شاہد

اگرعلاج معالجے کے بعد حمل ٹھہرے تو اس میں بھی کافی احتیاط کی ضرورت رہتی ہے۔ ڈاکٹر کی بتائی گئی احتیاط کے ساتھ ماں اوربچے کی صحت اورزندگی بچائی جاسکتی ہے۔ تاہم بہت سے کیسز میں ایسا بھی ممکن ہوتا ہے کہ ماں یا بچے کی جان کوخطرہ لاحق ہوسکتا ہے۔ہائی رسک پریگننسی میں اسی خطرے سے بچنے کے لئے  ماں اور بچے کی اضافی دیکھ بھال اورنگرانی انتہائی ضروری ہے۔
جب بھی کسی حاملہ عورت کواس کی ہائی رسک پرگننسی کاپتہ چلتا ہے تو ذہنی طور پر اسے بڑا دھچکہ لگتا ہے۔ اسے ہروقت یہی فکرلاحق رہتی ہے کہ کہیں اس کے بچے کوکوئی نقصان نہ پہنچ جائے۔ اس سلسلے میں آپ اپنی ڈاکٹرسے رابطہ میں رہیں اورانھیں اپنی کیفیت سے آگاہ کریں تاکہ وہ آپ کوبہتر آگاہی فراہم کرسکیں۔ان تمام مسائل اور پیچیدگیوں سے ہمت سے مقابلہ کریں کیونکہ ہائی رسک پریگننسی کایہ مطلب ہرگز نہیں ہوتاکہ آپ کابچہ صحت مند نہیں ہوگا۔

وجوہات۔۔۔خون کے مسائل

tripako tours pakistan

اگرآپ خون کی کسی بیماری میں لاحق ہیں جیسے تھیلیسیمیاوغیرہ تو اس کے اثرات آپ کی پرگیننسی پرپڑسکتے ہیں۔اس سے دوران حمل اورڈلیوری کے بعد بچے پر برا اثرپڑتا ہے کیونکہ وراثت میں یہ بیماری ماں سے بچے میں منتقل ہوسکتی ہے۔

گردے کی بیماری!

اگرحاملہ کو دائمی گردے  کی بیماری  لاحق ہوتی ہے تو حمل ٹھہرنے سے گردوں پرمزیددباؤ اورکشیدگی میں اضافہ ہوجاتا ہے۔جس کے باعث مس کیرج اوردیگرمسائل کے خطرات بڑھ جاتے ہیں۔

ذہنی دباؤ

دوران حمل ذہنی د باؤ ماں پربرے اثرات مرتب کرتاہے جب ماں کی ذہنی صحت متاثرہوتی ہے توبچے کولازماً خطرات لاحق ہوتے ہیں اگرآپ کوئی ڈپریشن کی ادویات استعمال کرتی ہیں تو فوری طورپرڈاکٹرسے مشورہ کریں اپنی مرضی سے ان ادویات کی روک تھام نہ کریں۔

ہائی بلڈ پریشر

اگردوران حمل ہائی بلڈ پریشرکی شکایت مسلسل رہے تو یہ بچے پربرااثرڈالتی ہے۔ اس سے بچے کی گروتھ آہستہ ہونے لگتی ہے ۔ساتھ ساتھ وقت سے پہلے ڈلیوری ،پریکلیمسیا اورپلیزینٹل کی خرابی کے خطرات بھی پائے جاتے ہیں۔

بڑی عمر

حاملہ عورت کی عمرپریگننسی پراثرانداز ہوتی ہے۔جس کے باعث بہت سے صحت کے مسائل اورپیچیدگیوں کے خطرات بڑھ جاتے ہیں۔اگرزچگی کے وقت عمرپینتیس یااس سے زائد ہوتو ڈاکٹر سے باقاعدگی سے چیک اپ کروائیں۔

موٹاپا

اگرحاملہ کا (بی ایم آئی ) تیس یااس سے زائد ہوتودوران حمل شوگراوربلڈ پریشرکے خطرات بڑھ جاتے ہیں۔جب بچے کی پیدائش کاوقت قریب آتاہے تو دیگر پیچیدگیوںکاسامنا یاپھرآپریشن کی نوبت آسکتی ہے۔

تھائی رائڈ کی بیماری

اگرآپ  تھائی رائیڈ کی بیماری  میں مبتلاہیں تو یہ صورتحال آپ اورآپ کے بچے دونوں کے لئے خطرات پیداکرسکتی ہے۔اس بیماری کے باعث مس کیرج،بچے کاوزن نہ بڑھنا،وقت سے پہلے پیدائش کے خطرات ہوسکتے ہیں۔

ذیابیطس

اگرآپ ذیابیطس کے مرض کوکنٹرول نہیں کرپاتی تویہ آپ کے بچے میں پیدائشی نقائص کاسبب بن سکتی ہے۔دیگر مسائل میں سانس کے مسائل،یرقان،گلوکوز کی کم سطح یاپھربچے کاوزن اس کی عمر سے زیادہ ہونا شامل ہے۔

گروتھ کے مسائل

‘دوران حمل ڈاکٹرہروزٹ پرچیک اپ کے ذریعے بچے کے سائز کااندازہ لگاتی ہیں ۔بعض صورتوں میں بچہ کاسائز نہیں بڑھتاجس کاڈاکٹرکوعلم ہوجاتاہے۔ایسی صورت میں اضافی نگرانی اورحفاظت کی ضرورت ہوتی ہے۔

دیگر وجوہات

اگرپریگننسی میں دویااس سے زائد بچے ہوں تو اضافی نگہداشت کی ضرورت رہتی ہے۔ایسی صورتحال میں جسم پراضافی بوجھ پڑھنے کے سبب صحت کے مسائل اوردیگر پیچیدگیوں کے خطرا ت میں اضافہ ہوجاتاہے۔

مہمان تحریر
مہمان تحریر
وہ تحاریر جو ہمیں نا بھیجی جائیں مگر اچھی ہوں، مہمان تحریر کے طور پہ لگائی جاتی ہیں

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *