ملالہ برطانوی فیشن میگزین کے سرورق کی زینت بن گئیں

پاکستان سے تعلق رکھنے والی نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی برطانوی فیشن میگزین ووگ کے جولائی میں آنے والے ایڈیشن کے سرورق کی زینت بن گئیں۔

23 سالہ ملالہ نے ٹوئیٹ میں آنے والے میگزین کے سرورق کی تصویر شئیر کرتے ہوئے لکھا کہ وہ جانتی ہیں کہ جب کسی لڑکی کا کوئی نظریہ ہو اور کچھ کرنے کی ہمت تو اس کے دل میں کتنی طاقت ہوتی ہے۔ اور مجھے امید ہے کہ جو بھی لڑکی یہ سرورق دیکھے گی وہ جان لے گی وہ بھی دنیا کو بدل سکتی ہے۔

tripako tours pakistan

 

ملالہ یوسفزئی نے ووگ کو انٹرویو دیتے ہوئے اپنے لباس کے بارے میں بھی بات کی، ان کا کہنا تھا کہ یہ ہمارا مذہبی اور پشتونوں کی ثقافتی علامت ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان لڑکیاں، پشتون لڑکیاں، یا پاکستانی لڑکیاں اگر اپنے روایتی لباس پہنتی ہیں تو ہمیں مظلوم، مجبور یا مردوں کی سرپرستی میں زندگی گزارنے والا سمجھا جاتا ہے، لیکن میں سب کو بتانا چاہتی ہوں کہ آپ اپنی ثقافت میں رہ کر  اپنی الگ آواز اور مساوی حقوق بھی رکھ سکتے ہیں۔

ملالہ یوسفزئی کو 2014 میں لڑکیوں کی تعلیم اور آزادی کے حق میں آواز بلند کرنے پر امن کے نوبل انعام سے نوازا گیا تھا، ملالہ کوکینیڈا کی طرف سے اعزازی شہریت، یونیورسٹی آف کنگز کالج اور ہیلی فیکس کی جانب سے اعزازی ڈاکٹریٹ کی ڈگری سے بھی نوازا جا چکا ہے۔

Advertisements
merkit.pk

جبکہ 2020 میں 22 سال کی عمر میں انہوں نے برطانیہ کی معروف آکسفورڈ یونیورسٹی سے گریجویٹ کی ڈگری حاصل کی۔

  • merkit.pk
  • merkit.pk

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply