• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • بحیرہ مردار کو بچانے کے لیے،دو سو افراد نے ایک ساتھ برہنہ ہوکر تصویریں بنوا کر ریکارڈ قائم کر دیا

بحیرہ مردار کو بچانے کے لیے،دو سو افراد نے ایک ساتھ برہنہ ہوکر تصویریں بنوا کر ریکارڈ قائم کر دیا

یہ برہنہ تصاویر بحیرہ مردار کے پاس بنوائی گئیں، امریکی فوٹو گرافر نے برہنہ افراد کی تصاویر بنائیں، ان تصاویر کا مقصد بحیرہ مردار کو سکڑنے سے بچانے کے لئے عالمی توجہ حاصل کرنے کی کوشش ہے، خبر رساں ادارے کے مطابق بحیرہ مردار اس وقت سکڑ رہا ہے اسے بھی ماحولیاتی تبدیلیوں کے ساتھ ساتھ کناروں پر آباد ممالک کی مقامی علاقوں کی ضروریات اور ترجیحات کا نتیجہ قرار دیا جاتا ہے

امریکی فوٹوگرافر اسپینسر ٹیونِک نے 200 افراد کی ایسی تصاویر بنائی ہیں جو سب برہنہ ہیں اور سب نے اپنے مکمل کپڑے اتار کر جسم پر سفید رنگ لگایا ہوا تھا، اس فوٹو گرافی شوٹ کے لئے اسرائیلی وزارت سیاحت نے تعاون کیا تھا، 200 افراد اتوار کی شام بحیرہ مردار کے پاس جمع ہوئے اور سب نے کپڑے اتارے، سب افراد نے یہ کام رضاکارانہ کیا ،انہیں کسی قسم کا معاوضہ نہیں دیا گیا، کپڑے اتارنے کے بعد انہوں نے اپنے جسموں کو سفید رنگ میں ڈھک دیا، اس کے بعد انکی تصویریں بنائی گئیں یہ تصاویر جنوبی اسرائیلی شہر ارد میں بحیرہ مردار کے ساحل پر بنائی گئی ہیں

tripako tours pakistan

ارد نامی شہر بحیرہ مردار سے سولہ کلو میٹر کی مسافت پر حکومتی پلاننگ کے تحت آباد کیا گیا ہے ۔ یہ دو صحراؤں یہودا (جودیا) اور النقب (نگیف) کے سنگم پر واقع ہے اس کی آبادی محض 27 ہزار نفوس کے قریب ہے۔ امریکی فوٹوگرافر نے تین گھنٹے تک مختلف زاویوں اور مقامات پر فوٹوگرافی کی ۔اسرائیلی وزارت سیاحت کا کہنا ہے کہ یہ فنکارانہ فوٹوگرافی بحیرہ مردار کی سیاحت کو بھی مزید مقبول بنائے گی اس وقت کورونا وائرس کی وبا کی وجہ سے اسرائیل میں غیر ملکی سیاحوں کے داخلے پر سخت پابندیاں عائد ہیں جن میں بتدریج نرمی لانے کا سلسلہ جاری ہے۔

Advertisements
merkit.pk

امریکی فوٹو گرافر کا کہنا ہے کہ اسرائیل میں آمد ایک خوشگوار تجربہ ہے کیونکہ مشرق وسطیٰ میں یہ واحد ملک ہے جو جمالیاتی فن کی ترویج میں پیش پیش ہے اور اس طرح کی فوٹوگرافی کی اجازت صرف اسی ملک میں ہی مل سکتی ہے

  • merkit.pk
  • merkit.pk

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply