• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • غزہ میں مصنوعی ذہانت کےبطور ہتھیار استعمال پر انتونو گوتریس کا اظہارِ تشویشناک

غزہ میں مصنوعی ذہانت کےبطور ہتھیار استعمال پر انتونو گوتریس کا اظہارِ تشویشناک

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیوگوتریس نے کہا کہ اسرائیلی فوج کا غزہ کی پٹی میں مصنوعی ذہانت کا بطور ہتھیار استعمال انتہائی تشویشناک ہے، زندگی موت کے فیصلوں کو الگورتھم کی مدد سے چلنے والےانٹرنیٹ اکاؤنٹس کے سپرد کرنا ناقابل قبول ہے۔

تفصیلات کےمطابق انتونیوگوتریس نے کہا کہ جنگی اہداف کے تعین کیلئے مصنوعی ذہانت پر انحصار کا مطلب مزید بے گناہ شہریوں کی جانیں لینا ہے، گزشتہ برسوں میں مصنوعی ذہانت کو بطور ہتھیار استعمال کرنے سے خبردار کرچکا ہوں، غزہ کی پٹی میں جاری جنگ کے باعث دس لاکھ افراد فاقہ کشی کے دہانے پر پہنچ گئے ہیں، غزہ میں ممکنہ اجتماعی فاقہ کشی کو روکنا ناگزیر ہے۔

Advertisements
julia rana solicitors london

انتونیو گوتریس نے مزید کہا کہ 7 اکتوبر اسرائیل اور دنیا بھر کے لئے المناک دن تھا جس کی وجہ حماس کے حملے تھے، ا سرائیلی فورسز کے اندھا دھند حملوں کے باعث غزہ میں وسیع پیمانے پر قتل عام اور تباہی ہوئی، غزہ میں 196 امدادی کارکن مارے گئے، ہم وجہ جاننا چاہتے ہیں، اسرائیلی فوج کی موجودہ حکمت عملی اور کارروائیاں مزید غلطیاں ہونے کا عندیہ دے رہی ہیں۔

Facebook Comments

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply