• صفحہ اول
  • /
  • خبریں
  • /
  • شیخ رشید اور عمران خان کی گرفتاری بھی ہوسکتی ہے، وزیر داخلہ

شیخ رشید اور عمران خان کی گرفتاری بھی ہوسکتی ہے، وزیر داخلہ

اسلام آباد: وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ ثبوت ہوئے تو شیخ رشید اور عمران خان کی گرفتاری بھی ہوسکتی ہے۔

وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شیخ رشید کو اغوا نہیں کریں گے بلکہ باضابطہ گرفتار کیا جائے گا۔ ثبوت ہوئے تو شیخ رشید اور عمران خان کی گرفتاری بھی ہوسکتی ہے۔

FaceLore Pakistan Social Media Site
پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com

انہوں نے کہا کہ مسجد نبویﷺ کے تقدس کو پامال کیا گیا اور اس معاملے میں نہ معافی ہونی چاہیے نہ ہو گی تاہم تفتیش کا عمل ابھی جاری ہے اور راشد شفیق کو باضابطہ گرفتار کیا گیا ہے۔ ویڈیو موجود ہے جس میں وہ خود کہہ رہے ہیں کہ ہم نے یہ کرایا ہے۔

رانا ثنا اللہ نے کہا کہ کچھ لوگوں کو پاکستان سے لے جایا گیا اور جن لوگوں کا اقبال جرم موجود ہے انہیں گرفتار کیا گیا ہے۔ لوگ ویڈیو میں کہہ رہے تھے ہم نے نماز نہیں پڑھنے دی اور 50 کے قریب لوگوں نے مختلف شہروں میں درخواستیں دی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم سعودی حکام سے رابطے میں ہیں اور ان لوگوں نے منصوبہ بندی کے تحت لوگوں کو بھیجا جس کی اطلاعات مل رہی ہیں اور ثبوت آ رہے ہیں۔ پاکستان میں بھی گرفتار لوگوں کے خلاف مقدمہ درج ہو سکتا ہے۔

نواز شریف کی سزا پر بات کرتے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ نواز شریف کو غلط سزا سنائی گئی تھی اور نوازشریف نے واپسی کا فیصلہ اپنی صحت کو دیکھ کر کرنا ہے جبکہ سزا معطل کرنے کا اختیار عدالت اور حکومت کے پاس بھی ہے۔ 120 دن میں ثبوت نہیں ملتے تو نام ای سی ایل سے نکلنا چاہیے۔

Advertisements
julia rana solicitors london

انہوں نے کہا کہ راولپنڈی اور فیصل آباد میں 2 مقدمات درج ہوئے ہیں اور مقدمات لوگوں نے اپنے جذبات کے تحت درج کرائے۔ ہر مسلمان کے اپنے جذبات ہیں اور ہم مقدمات میں رکاوٹ نہیں بنیں گے۔

  • julia rana solicitors
  • merkit.pk
  • julia rana solicitors london
  • FaceLore Pakistan Social Media Site
    پاکستان کی بہترین سوشل میڈیا سائٹ: فیس لور www.facelore.com

خبریں
مکالمہ پر لگنے والی خبریں دیگر زرائع سے لی جاتی ہیں اور مکمل غیرجانبداری سے شائع کی جاتی ہیں۔ کسی خبر کی غلطی کی نشاندہی فورا ایڈیٹر سے کیجئے

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

Leave a Reply