ادب نامہ

لکھاریوں کا تخیل ۔۔۔۔۔نذر محمد چوہان

آ ج کل میں زیادہ تر وقت مختلف لکھاریوں کے حالات زندگی اور خیالات کے مطالعہ پر صرف کرتا ہوں، خاص طور پر ماضی جدید کے امریکی لکھاری ۔ ہر لکھاری کی اپنی دلچسپ کہانی ہے اور بہت خوبصورت زندگی۔←  مزید پڑھیے

کتب خانہ ۔ ایک خبر ایک افسانہ ۔۔۔ معاذ بن محمود

سفید پوش شخص کے پاس کھونے کے لیے عزت کے سوا کچھ نہیں ہوا کرتا۔ عزت پر حرف لانے کا وہ سوچ بھی نہیں سکتا تھا۔ کسی کے آگے ہاتھ پھیلانا اس کے بس میں نہ تھا۔ وہ سوچ میں غرق تھا کہ کیا کرے۔ لیکن حل بھلا کہاں ذہن میں آنا تھا کہ تھا ہی نہیں۔ وہیل چئیر بھی ٹوٹ چکی تھی۔ اس نے اپنا بستر اپنی لائبریری ہی میں لگوا لیا تھا۔ ←  مزید پڑھیے

ہاؤس آف کشمیر اور کمیونٹی پنشمینٹ…. محمد اقبال دیوان

ہمارے پرانے دوست صغیر احمد جانے امریکہ کب پہنچے۔جب بھی پہنچے تب امریکہ ایسا کٹھور نہ تھا جیسا اب ہوچلا ہے۔ ان دنوں آنے والوں پر بڑی محبت کی نظر رکھتا تھا۔اس سرزمین کثرت (Land of Plenty) نے جلد ہی←  مزید پڑھیے

زرد روشنی میں خواب۔۔۔۔۔۔ابوبکر

جب میں نے اسے دیکھا تب دراصل میں خواب دیکھ رہا تھا۔ تمام انسانوں کی طرح میرے خواب بھی میری پسند سےنہیں آتے۔ میں نے دیکھا کہ اس مانوس کمرے میں مدھم زرد روشنی ہے۔ میں اس منظر کی ابتدا←  مزید پڑھیے

سمندر اور جوہڑ۔۔۔۔۔ڈاکٹر خالد سہیل

سمندر کے کنارے ریت پر لیٹا بڑی حیرت سے لہروں کو میں تکتا ہوں وہ لہریں رقص کرتی ہیں خوشی کے گیت گاتی ہیں بڑی اپنائیت سے مجھ سے کہتی ہیں سمندر کی یہ طغیانی ہمیں آزاد رکھتی ہے ہمیں←  مزید پڑھیے

اللہ میاں واٹس ایپ پہ آؤ ۔۔۔۔۔ڈاکٹر عمران آفتاب

اللہ میاں واٹس ایپ پہ آؤ یا فیس بک کا اکاؤنٹ بناؤ اپنا ہر اک سٹیٹس ڈالو خموشی سے سب کچھ نا سنبھالو کبھی تو کوئی کام لیٹ کرو کُن بولو تو اپ ڈیٹ کرو ہر ملحد کو مینشن کرو←  مزید پڑھیے

کاوہ آہن گر (نظم)۔۔۔۔۔۔ مشتاق علی شان

ایک ضحاک کے کاندھوں پر بیٹھے ہیں دو اجگر جانے کب سے چاٹ رہے ہیں ذہنوں کا جوہر اس بستی میں کب اترے گا کاوہ آہن گر “باغی” ہیں بازار کی زینت بیچ چکے لشکر شاعر کے سب شبد بکاؤ←  مزید پڑھیے

افسانہ (ف)۔۔۔۔۔ شکیل احمد چوہان

’’ف سے فرض۔۔۔ ف سے فائدہ۔۔۔ ف سے فلک۔۔۔ ف سے فیصلہ۔۔۔جی ہاں۔۔۔! فیصلہ غلط اور  صحیح  کا۔۔۔ اچھائی اور برائی کا۔۔۔ حیا اور بے حیائی کا۔‘‘ فاطمہ لغاری نے اپنی چادر اتارتے ہوئے کہا، پسینے کی وجہ سے اُس←  مزید پڑھیے

گناہ ٹیکس ۔۔۔ مہر ساجد شاد

آج خوشی ہوئی کہ گناہ بخشوانے کی ذمہ داری اب پادری اور مولوی صاحب کے ساتھ حکومت نے بھی اٹھا لی ہے۔ ابتدائی طور ہر تمباکو نوشی کا گناہ معاف کرانے کا پراجیکٹ شروع کیا گیا ہے۔ آپ بس گناہ ٹیکس ادا کریں اور مزے سے دھویں کے مرغوبے ہوا میں اڑائیں۔←  مزید پڑھیے

گھٹیا افسانہ نمبر 10۔۔۔۔۔کامریڈ فاروق بلوچ

“آپ بہت عجیب گفتگو کرتے ہیں بائی  دا وے” “مطلب کیسے” “مجھے لگتا ہے کہ آپ کے آرگومنٹس بہت چھوٹے اور عجیب طرح کے ہوتے ہیں” “چلیں کوئی مثال ہی دے دیں حضور” “مثال کیا دوں سب کچھ آپ کے←  مزید پڑھیے

ایک جھوٹ اور سہی۔۔۔۔۔۔۔۔چوہدری عبدالمنان

کتنا میٹھا لہجہ تھا اُسکا ۔۔ بالکل شہد کے جیسا اور بالکل ویسا جو کانوں میں رس گھول دے ۔۔ پھر میں اُسکی باتیں سُنتے سُنتے محو سا ہوجاتا تھا ۔۔ دُنیا و مافیہا سے بے خبر ۔۔ حالانکہ مُجھے←  مزید پڑھیے

سائینس اور مذہب: کیا ضد ضروری ہے؟ ۔۔۔ معاذ بن محمود

ذاتی حیثیت میں کم سے کم میں سائینس اور مذہب کو ٹکراؤ میں نہیں پاتا۔ سائینس جستجو کا نام ہے۔ مذہب ایمان باالغیب کا۔ جستجو کا حکم مذہب کی طرف سے دیا گیا ہے جبکہ جستجو بذات خود یقین کی جانب سفر کی تحریک ہے۔ آج ہم سائینس کے دائرے میں کھڑے ہوتے ہیں تو ہمیں بتایا جاتا ہے کہ ہم علم کامل کے حامل نہیں لیکن اس کے حصول میں لگے رہیں گے تاکہ ہر نئے علم کو بنی نوع انسان کی خدمت میں استعمال کیا جاسکے۔←  مزید پڑھیے

درویشوں کا ڈیرہ -خواب نامے۔۔۔ تبصرہ:روبینہ یاسمین

کتاب پڑھنے کا صحیح لطف ایک نشست میں پڑھنے میں ہی آتا ہے .یہ بھی حقیقت ہے کہ کچھ ہی کتابیں پڑھنے والے کو اپنے آپ سے ایسا جوڑتی ہیں کہ کتاب مکمل پڑھنے کے بعد ایک اداسی سی ہوتی←  مزید پڑھیے

نامرد۔۔۔۔۔ حسن کرتار

ہاں بھئ تو سناؤ پھر آج اتنے عرصے بعد میں کیسے یاد آیا یار کاروبار سے فرصت ہی نہیں ملتی۔ ایک پاؤں ادھر کبھی ایک پاؤں اودھر۔ پر آج میں تمہارے پاس پارٹی کا موڈ بنا کر آیا ہوں۔ کیسی←  مزید پڑھیے

محبت کی چوتھی کہانی۔۔۔۔۔مریم مجید ڈار

میں  صبح جب ایک بے خواب نیند سے بیدار ہوئی تو فضا میں کچھ انوکھا پن تھا۔ ہوا بوجھل تھی اور دور پہاڑوں پر سنہرے ہوتے گھاس اور زرد، سرخ،  آتشیں خزاں رسیدہ پیڑوں کے باعث منظر ایک ایسی پینٹنگ←  مزید پڑھیے

برہمچاری۔۔۔۔ دیوندر ستیارتھی /افسانہ

پنج ترنی کی وہ رات مجھے کبھی نہ بھولے گی، نہ پہلے کسی پڑاؤ پر سورج کماری نے اِتنا سنگار کیا تھا، نہ پہلے وہ گیس کا لیمپ جلایا گیا تھا۔ اس روشنی میں سورج کماری کا عروسی لباس کتنا←  مزید پڑھیے

فرعون کے دوبدو: حصہ چہارم ۔۔۔ میاں ضیاء الحق

قدیم مصری تاریخ سےباقی دنیا کو غرض ہوگی لیکن ہم پاکستانی عوام جس سحر میں صدیوں سے مبتلا ہیں وہ حسن مصر ہے۔ مصر میں اترتے ہی اندازہ ہوگیا تھا کہ یہ اگر یورپ نہیں تو اسلامی یورپ ضرور ہے جہاں سر ڈھانپ کر باقی اثاثہ جات سے لاتعلق ہوجانا یہاں کی خواتین کا سٹائیل ہے۔←  مزید پڑھیے

ایک جائزہ کتاب لبِ گویا کا۔۔۔عامر کاکازئی

دو سال پہلے اتفاق سے سوشل میڈیا پر ایک کتاب “زمین” پر نظر پڑی۔ جب پتہ چلا کہ یہ تو رئیل سٹیٹ اور اس سے منسلک بزنس کے اوپر  لکھی گئی  کتاب ہے تو تجسس پیدا ہوا کہ کس نے←  مزید پڑھیے

توہین۔۔۔۔۔مظفر عباس نقوی

عشرہ توہین زبانیں توہین زدہ قرار دے کر کھینچ لی گئیں آنکھیں کاروکاری کی نظر ہو چکیں کان غیرت کے نام پر کاٹ لیے گئے ہونٹ حکم عدولی کے سبب سی دیے گئے مدد کو بڑھتے ہاتھ ہتھکڑیوں میں جکڑے←  مزید پڑھیے

عوامی احتجاج۔۔۔۔خالد سہیل

اب عوام تنگ آ کر ظلمتوں سے گھبرا کر آ گئے ہیں سڑکوں پر لے کے شمعیں ہاتھوں میں اپنے اپنے خوابوں کی لے کے آس آنکھوں میں اپنی اپنی صبحوں کی خوش گماں بہت خوش ہیں بد گماں ڈراتے←  مزید پڑھیے