ادب نامہ

دیوار گریہ کے آس پاس۔۔۔۔روایت : کاشف مصطفےٰ/تصنیف و تحقیق : محمدّ اقبال دیوان/قسط11

(اسرائیل کا سفر نامہ ۔اپریل 2016 ) ادارتی تعارف جناب محمد اقبال دیوان کی تصنیف کردہ یہ کتاب’’ دیوار گریہ کے آس پاس ‘‘کو مکالمہ میں خدمت دین اور فلسطین کے مسئلے کو اجاگر کرنے کی خاطر شائع کیا جارہا←  مزید پڑھیے

گرمیوں کے روزے، “چند خوشگوار یادیں”۔۔۔۔۔طاہر حسین

عمر ہماری یہی کوئی چھ سات برس کی ہوگی جب اپنے ہوش میں پہلی دفعہ گرمیوں کے روزوں سے واسطہ پڑا۔ یہ تو معلوم نہ تھا کہ روزے سے پہلے سحری بھی ہوتی ہے مگر یہ منظر یاداشت پر نقش←  مزید پڑھیے

نئی صبح۔۔۔۔عامر صدیقی/مختصر کہانی

موسمِ بہار کے پہلے روز، سُونی، سخت، کٹھور اور بنجر زمین نے ایک طویل، مدہوشی بھری نیند سے بیدار ہوکر، سبز رنگ کے کپڑے پہن لئے۔موسمِ بہار کی نرم گرم، زندگی بھری اور خوشبودار ہوا، ایک مہربان ماں کی طرح←  مزید پڑھیے

ابوجی کے نام۔۔۔۔طاہر حسین

مجھے آپ سے بہت شکائتیں ہیں اور بہت شکوے کرنے ہیں۔ آپ نے مجھ سے مرد بننے کی امید کیوں رکھی جبکہ آپ خود ایسا نہیں کر سکتے تھے۔ جذبات کے اظہار کو کیوں آپ مردانگی کے خلاف جانتے تھے۔←  مزید پڑھیے

استنبول کا ایشائی حصّہ ’اسکدار اور کیڈی کوئے۔۔۔سفر نامہ استنبول/سلمٰی اعوان۔قسط16

اُسکداراستنبول کے ایشیائی حصّے کا سب سے بڑا ضلع ہے تو واقعی اس کے خدوخال میں بھی مشرقیت کے رچاؤ کا غلبہ ہے۔ایمی نو نوسے فیری کے ذریعے اسکدار پہنچنے میں کتنا وقت لگا ہوگا۔زیادہ سے زیادہ پندرہ بیس منٹ←  مزید پڑھیے

دکھی ایکسپریس “صحرائے تھر، ہائے تھر”۔۔۔۔۔طاہر حسین

فطرت کے مقاصد کی نگہبانی کیسے ہوا کرتی ہے اس کا علم تو نہیں لیکن اقبال کا شعر سنتے ہی گردن اس غرور سے تن جایا کرتی کہ کسی حد تک بندہ کوہستانی تو میں تھا لیکن مردان صحرائی کے←  مزید پڑھیے

جنم ۔۔۔انور زاہد

ہم ایسے لوگوں کا ۔۔۔۔۔۔۔کوئی جنم نہیں ہوتا ہمارا کام ہے، رکھنا چراغ رستوں پر ہمارا کام ہے راتوں کی روشنی بننا ہمارا کام ہی خوابوں کی پہرے داری ہے ہم ایسوں کے لئے راتیں ہی کام ہوتی ہیں ہمارے←  مزید پڑھیے

دشمن کے سپاہی کے نام۔۔۔۔انعام رانا

دشمن کے سپاہی مرے دشمن کے شہید تری بے وقت موت پہ افسردہ ہوں تو بھی تو فقط ایک غریب میرے فوجی جیسا جسکی تنخواہ سے تھے وابستہ نہ جانے کتنے خواب تری پنشن پہ پلیں گے اب جینے کے←  مزید پڑھیے

ببلی / بابر۔۔۔۔۔قربِ عباس

لکڑی کے فریم میں بڑا آئینہ لگا ہوا تھا، جس میں نیچے سے اوپر تک ایک لمبی دراڑ تھی جو کہ اُس کے عکس کو دو حصوں میں بانٹ رہی تھی۔ آنکھوں کا کاجل جو نمکین پانی کے سا تھ←  مزید پڑھیے

دیوار گریہ کے آس پاس۔۔روایت : کاشف مصطفےٰ/تحقیق و تصنیف : محمدّ اقبال دیوان/قسط10

(اسرائیل کا سفر نامہ ۔اپریل 2016 ) ادارتی تعارف جناب محمد اقبال دیوان کی تصنیف کردہ یہ کتاب’’ دیوار گریہ کے آس پاس ‘‘کو مکالمہ میں خدمت دین اور فلسطین کے مسئلے کو اجاگر کرنے کی خاطر شائع کیا جارہا←  مزید پڑھیے

دیوار گریہ کے آس پاس۔۔۔۔روایت : کاشف مصطفےٰ/تحریر:محمد اقبال دیوان/قسط9

(اسرائیل کا سفر نامہ ۔اپریل 2016 ) ادارتی تعارف کتاب دیوار گریہ کے آس پاس کو مکالمہ میں خدمت دین اور فلسطین کے مسئلے کو اجاگر کرنے کی خاطر شائع کیا جارہا ہے۔ کتاب کا شمار اردو کی ان دنوں←  مزید پڑھیے

غالب انکل۔۔۔ستیہ پال آنند

آج مرزا غالب کی برسی پر ایک نظم دوستوں کی نذر ہے ۔۔۔ میں اس بات کی سچائی سے کبھی منحرف نہیں ہوا کہ غالب ایک عظیم شاعر تھا ۔۔ لیکن یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ وہ ایک عظیم←  مزید پڑھیے

لذتِ آشنائی ۔۔۔۔طاہر حسین

جیسے اس بات میں کوئی شبہ نہیں کہ ابن آدم اور بنت حوا ایک دوجے کے لیے لازم ملزوم ہیں’ اسی طرح یہ سمجھانے کی ضرورت نہیں ہے کہ کون الزام علیہ اور کون ملزم۔ اس طرح کے کردار دنیا←  مزید پڑھیے

دیوار گریہ کے آس پاس۔۔۔روایت : کاشف مصطفےٰ/ تحریر:محمد اقبال دیوان۔۔قسط8

(اسرائیل کا سفر نامہ ۔اپریل 2016 ) ادارتی تعارف کتاب دیوار گریہ کے آس پاس کو مکالمہ میں خدمت دین اور فلسطین کے مسئلے کو اجاگر کرنے کی خاطر شائع کیا جارہا ہے۔ کتاب کا شمار اردو کی ان دنوں←  مزید پڑھیے

ویلنٹائن ڈے سپیشل۔۔کلّو آپا۔۔۔۔۔۔۔اختر عمر

13 ﻓﺮﻭﺭﯼ 2014 صبح گیارہ ﺑﺠﮯ امارات ﺍﯾﺌﺮ ﻻﺋﻨﺰ ﮐﯽ ﭘﺮواز ﺍﯼ ﮐﮯ 800 ﮐﺮﺍﭼﯽ اﯾﺌﺮﭘﻮرٹ ﭘﺮ ﻟﯿﻨﮉ ﮐﺮﻧﮯ ﮐﮯ ﻟﯿﺌﮯ ﺗﯿﺎﺭﯼ ﮐﺮ ﺭﮨﯽ ﺗﮭﯽ۔ ﺳﯿﭧ ﺑﯿﻠﭧ ﺑﺎﻧﺪﮬﮯ جاچکے ﺗﮭﮯ۔ ﻣﯿﺮﮮ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﺑﯿﭩﮯ ﮐﮭﮍﮐﯽ ﺳﮯ ﺑﺎﮨﺮ ﺟﮭﺎﻧﮏ ﺭﮨﮯ ﺗﮭﮯ ﺍﻭﺭ←  مزید پڑھیے

کوئٹے تک۔۔۔۔طاہر حسین

ریل گاڑی پر طویل سفر کا ایک اپنا ہی لطف ہے۔ میں چلتی گاڑی کی کھڑکی سے باہر جھانکتا رہتا ہوں اور جہاں باہر کے مناظر مجھے لبھاتے ہیں وہیں میں نظر آنے والے ہر کردار کے متعلق ایک کہانی←  مزید پڑھیے

غزل۔۔۔مظہر حسین سید

  خطِ شکستہ میں کچھ ریت پر لکھا ہوا تھا جو میں نے غور سے دیکھا تو گھر لکھا ہوا تھا کتابِ زیست میں لکھا نہیں گیا مرا نام مٹا دیا ہے کسی نے اگر لکھا ہوا تھا خبیث بھیڑیے←  مزید پڑھیے

ایک ادھوری کہانی ۔۔۔۔طاہر حسین

یہ وردی مجھ پر بہت سجتی ہے بالکل کوئی فلمی ہیرو  نظر آتا  ہوں۔ میرے بوٹ کی چمچماہٹ ایسی ہے کہ جیسے آئینہ ہو۔ کتنا اچھا لگتا ہے جب سارے گاؤں کے بچے صرف مجھ سے ہاتھ ملانے کو دوڑتے←  مزید پڑھیے

گھٹیا افسانہ نمبر 20۔۔۔۔کامریڈ فاروق بلوچ

میں تو حیران   آپ لوگوں پر ہو رہا ہوں جو اینکروں کو کوئی پڑھا لکھا کوئی ادبی کوئی شعوری کوئی سمجھدار کوئی سیانا کوئی تخلیقی بندہ سمجھتے ہیں۔ جیسے اب بھی آپ کسی صوبے کے اندرون میں چلے جائیں،←  مزید پڑھیے

جدید پنجابی شاعری کے دو سب سے بڑے شاعر۔اوتار سنگھ پاش اور شو کمار بٹالوی/زاہد علی بھٹی ۔۔۔حصہ اول

انیس سو ساٹھ اور ستر کی دہائیاں دنیا بھر میں انقلابی تحریکوں کی دہائیاں تھیں عالمی جنگوں کے اختتام اور دنیا کے نئی جغرافیائی حدود کی شکل میں سامنے آنے کے بعد اب لوگوں میں سیاسی و سماجی شعور اور←  مزید پڑھیے