ادب نامہ    ( صفحہ نمبر 2 )

خامہ بگوش غالب۔۔۔ڈاکٹر ستیہ پال آنند

سب کہاں ، کچھ لالہ و گل میں نمایاں ہو گئیں خاک میں کیا صورتیں ہوں گی کہ پنہاں ہو گئیں ستیہ پال آنند دو ہی تو سطریں ہیں اور ان دو ہی سطروں میں ، جناب کیسے کوئی دیکھ←  مزید پڑھیے

امتناع محبت۔۔۔۔اجمل صدیقی

امتناع محبت ۔۔۔۔۔prohibiting love خدا کیلئے مجھے پیار نہ کرو , میں تمہیں کھونا نہیں چاہتی. محبت کرکے کیا کرو گے؟ نیند سے لڑو گے, خوابوں سے ڈروگے, اندیشوں کے طوفان اٹھیں گے, اَن جانے گمان اٹھیں گے، آنکھوں کے←  مزید پڑھیے

نگری نگری پھرا مسافر(دیویند ستیارتھی کے قدموں کے نام) ۔۔۔احمد نعیم

مائیکرو فکشن! وہ کہانیوں کا دیوانہ تھا، اندھیرے کی کہانی اندھیرے کو سناتا ، بس سنُاتا ہی رہتا جس سے عجیب اُجالا پیدا ہوتا ۔۔ سناتے سناتے وہ کہاں سے کہاں چلا جاتا ،اُسے خود بھی پتہ نہ ہوتا ،←  مزید پڑھیے

حکایت3:خالہ اور خادم۔۔۔محمدخان چوہدری

خادم کے لئے اپنے سے بڑی عمر کی لڑکی یا خاتون کی عشوہ طرازی اور ہلکی پھلکی دست اندازی کوئی نئی بات بالکل نہیں تھی۔ بچپن سے وہ اپنے   سے بڑی عمر کی کزنز کے ساتھ کھیلتا آیا تھا۔ لیکن←  مزید پڑھیے

بے ربطی سے بے ربطی تک ۔۔۔عنبر عابر

وہ بستر مرگ پر لیٹا تھا اور اس کے دماغ میں بچپن کی یادیں ابھر رہی تھیں۔ان یادوں میں ایک دھندلی سی یاد ایک ویڈیو کی بھی تھی ۔یہ اس وقت کی ویڈیو تھی جب وہ پہلی بار بولا تھا←  مزید پڑھیے

ادب میں سیکس اور ابدی زندگی۔۔۔۔اجمل صدیقی

ادبیات عالم کی پہلی کتاب گلگامش ہے ۔۔ یہ اروک( قدیم میسو پو ٹیمیا ) کے بادشاہ کا نام ہے۔ اس کتاب کا آدھاحصہ گلگامش اور ان کیدو کے واقعات پر ہے اور دوسرا حصہ صرف گلگا مش۔۔ ان کیدو←  مزید پڑھیے

مظہر حسین سید! ترقی پسند فکر کا منفرد شاعر۔۔۔۔ارشد علی

2009ء کے دسمبر یا شاید نومبر کی بات ہے کہ ایک روز مجھے اس دور کا یار دیرینہ  دوست  محمد عارف زبردستی واہ کینٹ کی نمائندہ ادبی تنظیم صریر خامہ میں لے گیا جہاں واہ کینٹ کے جانے مانے ادیب←  مزید پڑھیے

عشق کا دربار۔۔۔رابعہ الرباء

میں عشق کے دربار سے خالی ہاتھ نہیں لوٹی مانگ میری سندوری ہے، گجرے پہن کے آئی  ہوں آنکھ میری کجلائی  ہے، روپ میرا نورانی ہے میں عشق کے دربار  سےخالی  ہاتھ نہیں لو ٹی میں عشق کے دربار سے←  مزید پڑھیے

شام امن سے جنگ تک/آواز دو کہ حلب جل رہا ہے۔۔۔۔سلمٰی اعوان/قسط17

16 دسمبر 2014ء کے دن کا گوآغاز ہوگیا تھا، مگر وقت تین بجے صبح کا تھا جب میری آنکھ کھل گئی تھی۔ دوبار ہ سونے کی کوشش کی۔ دائیں بائیں بہتیرے پلسٹے مارے، مگر نیند پلاّ پکڑانے میں نہ آر←  مزید پڑھیے

‫ماں کا مصّلہ‬ ‎۔۔۔۔راشد چوہدری

ماں ۔۔۔‬ ‎یہ ممکن ‎کہ تُم کو لوٹنے میں دیر ہو جائے ‎دئیے بُجھنے کے باعث ‎جانی بُوجھی راہ کھو جائے ‎مرا دل ‎جاگنے کی چاہ کے ہوتے بھی سو جائے ‎بہر صورت ،اگر لوٹو ‎مرے کمرے میں کچھ پَل←  مزید پڑھیے

شہرِ فنا۔۔۔۔۔۔رابعہ الرّباء

شہر ِفنا میں بیٹھے وہ گہری سمندر آنکھوں والی لڑکی وہ لڑکی جس کی صورت جھیلوں جیسی تھی شہرِ فنا میں بیٹھی اپنی روح سے ہم کلام تھی میں نے اپنے آنگن میں یہ گور بنائی ہے روز سفید جوڑا←  مزید پڑھیے

خامہ بگوش غالب۔۔۔۔ڈاکٹر ستیہ پال آنند

ساٹھ نظموں پر مشتمل یہ نیا تجربہ غالب کے اشعار کو رو پرو اور دو بدو مکالماتی فارمیٹ میں سمجھنے کی ایک ایسی کوشش ہے جس سے بہتوں کا بھلا ہو گا۔ مرزا غالب اور یہ خاکسار پہلو بدل بدل←  مزید پڑھیے

میرے صنم۔۔۔۔۔اجمل صدیقی

میں ایک ہندوستانی ہوں ۔ ہندوستان تاریخِ عالم کی کمر پر رسولی کی طرح ابھرا ہواہے۔۔ہندوستان کا کوئی مذہب نہیں۔ سماجی ارتقا کی تقدیس کو مذہب کا نام دے دیا گیا ہے۔ اس ملک میں 33 کروڑ دیوتا ،35 کروڑ←  مزید پڑھیے

ہادیہ یوسف کا ادبی محبت نامہ ڈاکٹر خالد سہیل کے نام

ہادیہ یوسف کا ادبی محبت نامہ مسیحائی سے دوستی کا حسیں سفر ہادیہ ہوسف کا خط آپ کو یاد ہوگا پرائمری اسکول میں ہم ایک مضمون لکھا کرتے تھے ، “میرا بہترین دوست ” ، کبھی انگریزی میں اور کبھی←  مزید پڑھیے

بشر علوی کے خط کا جواب الجواب۔۔۔ محمد فیاض حسرت

اسلام علیکم ! دل تہیہِ طوفاں کیے ہوئے تھا ، مگر آپ کا خط موصول ہوا تو اچانک اِس نے اپنا ارادہ بدل لیا ۔اب تو یہ کم بخت خوش ہوئے بیٹھا ہے ۔ ایک خوشی یہ کہ میری شعری←  مزید پڑھیے

داستانِ زیست۔۔۔۔محمد خان چوہدری/قسط28

یا وکیل” اللہ کریم کا صفاتی نام ہے، وکالت اللہ جل شانہُ کی سنت ٹھہرے گی۔ موجودہ زمانے میں وکالت کا پیشہ دنیا بھر میں عزت کے لحاظ سے پہلے نمبر پر ہے۔ وکالت کی بھی دیگر پروفیشن کی طرح مختلف←  مزید پڑھیے

خامہ بگوش غالب۔۔۔۔ساٹھ نظموں پر مشتمل نیا تجربہ/ڈاکٹر ستیہ پال آنند

ساٹھ نظموں پر مشتمل یہ نیا تجربہ غالب کے اشعار کو رو پرو اور دو بدو مکالماتی فارمیٹ میں سمجھنے کی ایک ایسی کوشش ہے جس سے بہتوں کا بھلا ہو گا۔ مرزا غالب اور یہ خاکسار پہلو بدل بدل←  مزید پڑھیے

اگر گریش کرناڈ نے اوم پوری کے لیے اپنے خصوصی اختیارات کا استعمال نہ کیاہوتا تو۔۔۔چیتنیہ کے ایم

گریش کرناڈ ہمارے بیچ سے اتنے ہی سکون  اور ایمانداری کے ساتھ وداع ہو گئے، جس طرح سے انہوں نے اپنی زندگی بسرکی۔ تھیٹر کی ایک معروف  شخصیت نے ایک بارگریش کرناڈ   کو اپنی سالگرہ پر مدعو کیا تھا۔←  مزید پڑھیے

زخم سے محبت۔۔۔۔حبیب شیخ

گھر کا یہ اچھا ماحول دیکھ کر عظیم کبھی کبھی اپنے گھٹنے کو چوم لیتا ۔ اب سرجری میں صرف تین دن باقی تھے ۔ وہ سوچتا رہتا کہ اس کے لیے کیا بہتر تھا، ایک طرف سلمیٰ کی قربت←  مزید پڑھیے

کمراٹ۔۔۔۔توصیف ملک/قسط3

کالا چشمہ : کالا چشمہ ایک جگہ کا نام ہے اور وہاں جانا صرف پیسوں کا ضیاع ہے ۔۔۔ ہوٹل کی بکنگ اور سامان کمرے میں رکھنے کے بعد سکون ہو گیا ، تین بیڈ والے کمرے میں اضافی میٹریس←  مزید پڑھیے