رابعہ احسن کی تحاریر
رابعہ احسن
لکھے بنارہا نہیں جاتا سو لکھتی ہوں

نمل! ایک خواب! ایک جذبہ…رابعہ احسن

جب سے دنیا کا ظہور ہوا اچهائی اور برائی ساتھ ساتھ چلتی آئی ہیں۔ برائی میں حقیقتا”بڑی کشش ہوتی ہے اسی لئےزیادہ تر لوگ کهنچے چلے جاتے ہیں کچھ جیالے تو علی لاعلان بتاتے ہیں اور کچھ کائیاں اچهائی کا←  مزید پڑھیے

شخصی آزادی سے جنم لیتے مسائل۔۔۔رابعہ احسن

اکثر ہلکی پھلکی باتیں کرتے ہوئے ایسی بھاری تلخیاں سامنے آجاتی ہیں کہ گفتگو چاہتے ہوئے بھی انتہائی ناخوشگوار ہوجاتی ہے ایسی حقیقتیں سامنے آتی ہیں جو شاید دوسروں کیلئے کوئی عام سی روزمرہ کہانی ہوں ،جو ادھر ادھر اکثر←  مزید پڑھیے

آئینہ خانہ۔۔رابعہ احسن

“عمران خان کے گھر میں پیرنی ہے اس سے پتہ کرا لیں کدھر غائب ہوا ہےاستخارہ کرائیں اس سے”۔۔۔ فیصل سبحان کے غائب ہونے پر طلال چوہدری نے پی ٹی آئی کے احتجاج کا یہ جواب میڈیا کو دیا تو←  مزید پڑھیے

آ زاد نظم کا ن م راشد اور آزادی فکر۔۔رابعہ احسن

 زندگی کی تیز رفتاریوں میں جہاں سیاسیات، ابلاغیات اور معاشیات کے ہنگاموں نے روز و شب کے چکروں میں الجھا کر ہماری ذہنی اور جسمانی ایکٹیویٹی کو جکڑ کے رکھ دیا ہے ہماری سوچیں محض مسائل اور ان کے ممکنہ←  مزید پڑھیے

قتل یا شہادت؟۔رابعہ احسن

16 دسمبر2014  کی صبح پاکستانیوں  کے لئے    دکھ کی تاریخ رقم کرگئی۔  اسی تاریخ کو  سقوط ڈھاکہ  سے  پاکستان  دو لخت ہوا تھا،تین سال پہلے اسی صبح   درجنوں ماؤں کی گود اجڑ گئی۔ماں کی گود اور  سردی کے خوف←  مزید پڑھیے

اپنی دنیا خود پیدا کر۔۔۔ رابعہ احسن

اس کی آ نکھوں کے سامنے اس وقت جو منظر تھا وہ کسی قیامت کا ہی حصہ ہوسکتا تھا وہ جو اپنے نازک احساسات اور جذبات لئے کتنی دیر سے انتظار کی گھڑیاں گن رہی تھی اپنےحنائی ہاتھوں پہ اک←  مزید پڑھیے

زندگی۔۔(نظم)۔۔ رابعہ احسن

زندگی ‎تو کبھی ایسی چپ تو نہ تھی تھی تو بیزار سی ، دل کے اندر پڑےصاف انکار سی ، خود گراں بار سی ہاں مگر جستجو کے دریچوں میں گم بہتے پانی کی لہروں پہ آنچل سے لہریں بناتی←  مزید پڑھیے

اماں کے تیس روپے۔ رابعہ احسن

آج تیسرا دن تها اس کے غبارے نہیں بکے تهے وہ سڑک پہ کهڑی کهڑی تهک گئی تو دوگلیاں چهوڑ کے لگے ہوئے ٹوٹے نلکے سے پیاس بجهانے کیلئے چهوٹے چهوٹے قدم اٹهاتی ہوئی غباروں کا تهیلا گھسیٹنے لگی، تین←  مزید پڑھیے

پیراں وے۔۔۔ رابعہ احسن

ٹائیٹل کو دیکھ کے گهبرائیے گا نہیں کیونکہ میں کسی بهی پیر کی کرامات اور طلسمات پر نہیں لکهنے والی بلکہ یہ الفاظ جب بهی میرے کانوں سے ٹکراتے ہیں مجهے لکهنے پہ اکساتے ہیں کہ میں لکهوں عورت کی←  مزید پڑھیے

کشمیر کانفرنس کینیڈا

15 جولائی بروز ہفتہ اسلامک سوسائٹی آف یارک ریجن میں فریڈم فائیٹر برہان وانی کی شہادت کی پہلی برسی کے موقع پر فرینڈز آف کشمیر نے کشمیر کانفرنس منعقد کی۔ کانفرنس کا مقصد برہان وانی کی شہادت کے بعد سے←  مزید پڑھیے

کوئی شرم ہوتی ہے کوئی حیا ہوتی ہے

پورا ملک تقریباً دوسال سے ایک فیصلے کے انتظار میں بیٹها سڑ رہا تها وہ فیصلہ جو بارہا محفوظ ہوا، مفلوج ہوا لڑکهڑاتا ہوا آج پوری دنیا کے سامنے روز روشن کی طرح عیاں ہوگیا پہلے سپریم کورٹ اور اب←  مزید پڑھیے

کارگل، کشمیر اور پاکستان

1965 اور 1971 کی جنگوں کے بعد کارگل 1999 کی جنگ پاکستان اور انڈیا کی تاریخ میں خصوصی نوعیت کی حامل ہے۔ قیام پاکستان سے لیکر آج تک پاکستان کا ایک ہی موقف رہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کے عوام←  مزید پڑھیے

آئل ٹینکراور تھنک ٹینک

ہمارے ہاں رواج ہے کہ جب کوئی انہونی بہرحال ہوجاتی ہے تو پھر ہم ملاتے ہیں بیٹھ کر کڑیوں سے کڑیاں ۔ظاہر ہے انہونی ہونے کے بعد ہی ہمیں احساس ہوتا ہے کہ اسے نہیں ہونا چاہئے تھا مگر ہونی←  مزید پڑھیے

قائدِکشمیر امان اللہ خان اور تحریکِ آزادئ کشمیر

تحریک آزادئ کشمیر سے اگر مرحوم امان اللہ اور مقبول بھٹ شہید کا نام نکال دیا جائے تو یقیناََ تحریک کی صورت آج وہ نہ ہوتی۔ 1971 میں جمود کا شکار اس تحریک میں ایک نیا عزم اور ولولہ لیکر←  مزید پڑھیے

جب گھر سے لاش اٹھاؤگے

سفاکی، درندگی اور بے حسی ہمارے آج کے معاشرے کے وہ ناسور ہیں جو ہمارے ذہن، سوچ ،کرداراور افکار میں اتنی تیزی سے سرایت کررہے ہیں کہ ہم صحیح یا غلط کی پہچان سے بے بہرہ ہوتے جارہےہیں ہم میں←  مزید پڑھیے

کرپشن کا طبقاتی نظام

پرویز مشرف کی مرہون منت میڈیا کی آزادی سے ایک فائدہ تو ہوا کہ ہم پاکستان میں اندها دهند پائی جانے والی کرپشن کو سرِ عام نہ سہی مگر پهر بهی ایک واشگاف حد تک کرپشن بول سکتے ہیں، ثابت←  مزید پڑھیے

اسلاموفوبیا اور تحریک 103

ہماری خوش نصیبی ہے کہ ہم دنیا کے پرامن ترین ملک کینیڈا کے مقیم ہیں کینیڈا نے ہمیں گھر دیا، نوکریاں اور کاروبار دئے بچوں کی تعلیم، صحت_عامہ کی بہترین سہولیات کے ساتھ ساتھ کینیڈین شہری ہونے کے یکساں حقوق←  مزید پڑھیے

نظرانداز طبقے اور سماجی تنظیمیں

نظرانداز طبقے اور سماجی تنظیمیں رابعہ احسن ہم سیاسیات پہ لکھتے ہیں سماجیات پہ خیال آرائی کرتے ہیں ،ترقیات ہمیشہ ہمارا پسندیدہ موضوع ہےاخلاقیات سے ہمارا کوئی واسطہ نہیں اور انسانیت صرف شروعات اور کاغذات تک محدود رہ جاتی ہیں۔←  مزید پڑھیے

استحصالی کے بےشمار باب

استحصالی کے بےشمار باب جب سے ہوش سنبهالا ایک ہی صورتحال کو مسلسل دیکها بهگتا بهی اور بهگتایا بهی۔ہمیشہ سے عورتوں کو حقوق کیلئے لڑتے دیکها اور مردوں کو اس لڑائی سے بهی سڑتے دیکها۔ ترقی پذیر ممالک جہاں ہر←  مزید پڑھیے

برما میں ہونے والے مظالم پر دنیا کی خاموشی

برما میں ہونے والے مظالم پر دنیا کی خاموشی رابعہ احسن ظلم کی کوئی کیٹیگری نہیں ہوتی خواہ یہ جسمانی ہو، ذہنی ہو، نفسیاتی، یا پهر عوامی ہو یا عالمی۔ آج ہم زندگی کے جس دور سے گزر رہے ہیں←  مزید پڑھیے