Batool کی تحاریر

چاہ۔۔۔۔بتول

کیا ہوا اتنے اداس کیوں بیٹھے ہو ؟ اداس؟۔۔ اداسیاں تو اب شاید مقدر  میں ٹھہر چکیں ۔۔ تمہارے لہجے سے ناامیدی جھلکتی ہے ۔۔کچھ بتاؤ گے نہیں؟ وہ چلا گیا۔۔۔۔۔! تو بلا لو واپس۔۔ آواز دے کر دیکھو۔۔۔ پلٹ←  مزید پڑھیے

بھوک۔۔۔بتول/افسانہ

باجی بھوک لگ رہی تھی کھانا مل جاۓ گا۔ دنیا جہاں کی ہمت یکجا  کر کے بھی بس اتنا ہی کہہ پائی  تھی  وہ ۔۔۔۔صبح سے کام کا کہا ہوا وہ تو تم سے ہوا نہیں ابھی تک۔۔ جب تک←  مزید پڑھیے

ایک نئے پاکستان کی معیشت کو درکار اقدامات۔۔۔بتول/مضمون برا ئے مقابلہ مضمون نویسی

ترقی کی راہوں پہ گامزن یہ سوہنی دھرتی اگر ترقی یافتہ ممالک سے پیچھے رہ  گئی  ہے تو اس کی وجہ یہ نہیں کے وسائل کی کوئی کمی ہے۔ اگر کمی ہے تو ان وساٸل کو بہتر طریقے سے بروۓکار←  مزید پڑھیے

شاید کہ ترے دل میں اتر جائے میری بات۔۔۔بتول

”یہ تحریر ایک بہت پیارے انسان کی خوبصورت سوچ کے نام“ “اگر یتیموں کا اپنا ملک ہوتا تو آبادی کے لحاظ سے دنیا میں نویں نمبر پہ ہوتا“ ۔۔ یونیسف اقوامِ متحدہ کے ادارےیونیسف کے اعداد اور شمار کے مطابق←  مزید پڑھیے

ایموجی مخلوق۔ بتول

کچھ عرصہ پہلے میسج پہ بات کرتے ہوۓ ایک دوست کو مذاق میں کچھ کہہ دیا جو ان کی نازک طبیعت پہ گِراں گُزرا۔ ہم تو خیر اِس بات سے تاعُمر لاعِلم ہی رہتے لیکن شُکر ہے انہوں نے خود←  مزید پڑھیے