زینب قتل کیس: مجرم عمران کو 4 مرتبہ سزائے موت کا حکم

انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے قصور کی 7 سالہ زینب کے قاتل عمران کو 4 بار سزائے موت سنا دی۔ انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کے جج سجاد احمد نے زینب زیادتی و قتل کیس کا فیصلہ سنایا۔ سماعت کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے پراسیکیوٹر جنرل احتشام قادر نے بتایا کہ عمران کو ننھی زینب کے اغوا، زیادتی، قتل اور 7 اے ٹی اے کے تحت 4،4 مرتبہ سزائے موت سنائی گئی۔ پراسیکیوٹر جنرل نے بتایا کہ عمران کو زینب سے بدفعلی پر عمرقید اور 10 لاکھ روپے جرمانے جبکہ لاش کو گندگی کے ڈھیر پر پھینکنے پر7سال قید اور 10 لاکھ جرمانے کی سزا بھی سنائی گئی۔ پراسیکیوٹر جنرل نے بتایا کہ مجرم کے پاس اپیل کرنے کے لیے 15 دن ہیں جبکہ مجرم کے پاس صدر مملکت سے رحم کی اپیل کا حق بھی ہے۔ عمران سے عدالت نے آخری وقت تک پوچھا تو اس نے اعتراف جرم کیا۔ پاکستان کی تاریخ میں پہلی دفعہ ایسا ہوا ہے کہ سائنٹیفک تحقیق کی بنیاد پر مجرم کو سزا دی جارہی ہے اور ہم ان ممالک میں شامل ہوگئے ہیں جہاں سائنسی بنیادوں اور ثبوتوں پر سزا دی جاسکتی ہے۔

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *