خواتین مریدوں کا ریپ، گرومیت رام رحیم کو 10 سال قید

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)  بھارت کے معروف خود ساختہ مذہبی رہنما اور ریاست ہریانہ میں قائم ڈیرا سچا سودا آرگنائزیشن کے سربراہ گرومیت رام رحیم کو خواتین مریدوں کے ریپ کا جرم ثابت ہونے پر 10 برس قید کی سزا سنا دی گئی۔گرومیت رام رحیم پر 25 اگست کو فرد جرم عائد کی گئی تھی۔جس کے بعد ہریانہ پولیس نے ان کو حراست میں لے کر روہتک جیل منتقل کردیا تھا۔ہندوستان ٹائمز کی ایک رپورٹ کے مطابق گرومیت رام کیس کی سماعت کرنے والے جج کو بذریعہ ہیلی کاپٹر روہتک جیل لایا گیا جبکہ جیل کے اطراف سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے تھے۔واضح رہے کہ گرومیت رام رحیم کی ایک عقیدت مند خاتون نے 2002 میں اُس وقت کے ہندوستانی وزیراعظم اٹل بہاری واجپائی کو خط لکھ کر گرو کی جانب سے ریاست ہریانہ کے قصبے سِرسا میں واقع ہیڈکوارٹرز میں خود سمیت دیگر خواتین کے ریپ کا الزام عائد کیا تھا۔گذشتہ 15 سال سے جاری اس کیس کی 200 سماعتوں اور ہائی کورٹ کی جانب سے متعدد حکم امتناع جاری ہونے کے بعد گورمیت رام رحیم پر گذشتہ ہفتے 25 اگست کو فرد جرم عائد کی گئی تھی۔گرومیت پر فرد جرم عائد کیے جانے کے بعد مختلف علاقوں میں ہنگامے پھوٹ پڑے تھے اور پرتشدد واقعات میں 30 سے زائد افراد ہلاک اور 250 سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔یاد رہے کہ گرومیت رام رحیم نے ایک فلم ‘گاڈز میسنجر’ (خدا کا پیغام پہنچانے والا) میں بھی کام کیا، جس میں گرو نے جرائم پیشہ افراد کے خلاف لڑائی کی اور گانے بھی گائے۔

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *