مایا تہذیب کی بربادی کا راز کھل گیا

مایا تہذیب کے خاتمے کے بارے میں کئی نظریات پیش کئے گئے، لیکن ان نظریات کو ثابت کرنے کیلئے جو ثبوت پیش کئے گئے وہ غیر تسلی بخش ہیں۔

مایا سلطنت موجودہ دور کے گوئٹے مالا میں واقع تھی۔ یہاں کے باشندوں کو زراعت، ظروف سازی، تحریر اور ریاضی میں کمال حاصل تھا۔ چھٹی صدی عیسوی میں یہ سلطنت عروج پر تھی لیکن 900 عیسوی میں اس کے کئی بڑے شہر ویران ہو چکے تھے۔

Image result for maya civilization

کئی صدیوں تک تحقیق کار اس کھوج میں لگے رہے کہ آخر اتنی تیزی سے اتنی عظیم تہذیب کا خاتمہ کیسے ہوا؟ پر اب شاید اس گتھی کو بھی سلجھا لیا گیا ہے۔

ایک جریدے ‘سائنس’ میں شائع ہونے والی نئی رپورٹ کے مطابق قابل تعین ثبوتوں سے اس بات کی تصدیق ہوئی ہے کہ مایا تہذیب کا خاتمہ خشک سالی سے ہوا۔ اس نتیجے پر پہنچنے کے لیے ماہرین نے جزیرہ نما یوکاتان کی جھیل چیچانکاناب کا تجزیہ کیا ہے۔

Image result for maya civilization

ماہرین نے جھیل کی تہہ میں موجود تلچھٹ کے آکسیجن اور ہائیڈروجن آئسوٹوپ کا تجزیہ کیا۔ یہ جھیل مایا سلطنت کے وسط میں تھی، اس لیے یہاں سے آب و ہوا کا درست نمونہ ملا ہے۔ تجزیے سے پتا چلا کہ جس علاقے میں جھیل ہے، وہاں تقریباً چار سو سالوں تک سالانہ بارشوں میں 41 سے 54 فیصد کمی رہی ہے۔

Image result for maya civilization

یہ بھی پتا چلا ہے کہ اس علاقے میں ہوا میں نمی کا تناسب 2 سے 7 فیصد تک گر گیا تھا۔ کم بارشوں اور ہوا میں کم ہوتے نمی کے تناسب نے مایا تہذیب کی زراعت کا تباہ کر دیا۔ چونکہ یہ سلسلہ کئی سو سالوں تک چلتا رہا ہے اس لیے مایا تہذیب کے ہنر مند بھی اپنے کے لیے خوراک کے ذخیروں کا بندوبست نہیں کر سکے۔ یہی چیز بتدریج ان کے خاتمے کا سبب بنی۔

Image result for maya civilization

اس سے پہلے ایک تحقیق میں کہا گیا تھا کہ جنگلات کی کٹائی سے موسم خشک ہوا، ہوا میں نمی کا تناسب کم ہوا اور زمین کی زرخیزی ختم ہوگئی، جس سے مایا سلطنت کا خاتمہ ہوا۔

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *