کالم    ( صفحہ نمبر 134 )

ملک کو جرنیلوں اورججوں پر نہیں چھوڑا جاسکتا۔۔اسد مفتی

ہمارے معاشرے میں جرائم کی رفتار جس تیزی سے بڑھ رہی ہے اس سے دو ہی نتیجے اخذ کیے جاسکتے ہیں ۔پہلا نتیجہ یہ کہ انتظامیہ اور حکومت اس رفتار کو خاطر میں نہیں لاتی لہذا ان کے نزدیک کوئی←  مزید پڑھیے

عظیم رہنماؤں کااستحقاق کیسے مجروح ہوتا ہے؟۔۔ آصف محمود

 یہ تو آپ نے کئی بار سنا ہو گا کہ معزز رکن پارلیمان کا استحقاق مجروح ہو گیا لیکن کیا آپ یہ بھی جانتے ہیں کہ یہ بھائی جان استحقاق کب کیوں اور کیسے مجروح ہو جاتے ہیں؟ آئیے بھائی←  مزید پڑھیے

امریکی مقاصد آشکار ہیں۔۔۔ طاہر یاسین طاہر

امریکہ ایک طاقتور ریاست ہے۔ معاشی اور عسکری حوالے سے، ٹیکنالوجی میں اسے برتری حاصل ہے۔ اس کے تھینک ٹینکس ہمہ وقت ملکوں، خطوں اور قوموں کا تجزیہ کرنے میں لگے رہتے ہیں۔ دنیا کے ہر کونے میں امریکی مفادات←  مزید پڑھیے

سعودی عرب میں فوجی تبدیلیاں۔۔ڈاکٹر ندیم عباس

سعودی معاشرہ دہائیوں تک ایک خاص انداز میں چلایا گیا ہے، جہاں کی خبریں بھی ایک سی ہی ہوتی تھیں۔ ایک خاموش معاشرہ جس میں نہ مظاہرہ ہے، نہ احتجاج ہے، نہ الیکشن ہے، نہ ہلہ گلہ ہے۔ جیسے صحرائی←  مزید پڑھیے

شام میں کیا ہو رہا ہے۔۔ ظفرالاسلام سیفی

شام کی گلیوں میں سسکتی انسانیت کی سسکاریاں دنیا کے لیے تو تشنہ تحقیق عنوان بحث ہو سکتا ہے مگر ہمارے لیے نہیں،جھلستے لاشوں پر دامن کشاں طاغوت سمجھتا ہے کہ اس نے قیامت کے بوریے سمیٹ لیے ہیں،انسانیت کو←  مزید پڑھیے

لاپتہ افراد کیس میں عدالت غائب۔۔اے وحید مراد

عدالت عظمی میں جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے چھ لاپتہ افراد کے مقدمے کی سماعت کی۔ برسوں سے لاپتہ ان افراد کے نام مدثر اقبال، نویدالرحمان، نسیم اقبال، عبدالرحمان، عمرحیات اور عمربخت ہیں۔ لاپتہ افراد←  مزید پڑھیے

وه طوفان کہاں گیا ؟–رعایایت الله فاروقی

نوے کی دہائی کی سیاست جواں سال سیاستدانوں کی سیاست تھی، محترمہ بینظیر بھٹو، نواز شریف، مولانا فضل الرحمن، اسفندیار ولی خان، محمود خان اچکزئی اور حاصل خان بزنجو نہ صرف پہلی بار پارلیمان تھے بلکہ یہ اپنی جماعتوں کے←  مزید پڑھیے

ہمارے معاشرے ہی میدان جنگ کیوں؟۔۔ آصف محمود

کبھی آپ نے غور فرمایاکہ اس وقت صرف مسلمان معاشرے ہی کیوں میدان جنگ کا روپ دھار چکے ہیں؟ کیا یہ محض اتفاق ہے کہ جنگ کسی کی بھی ہو ، لڑی ہمارے ہاں ہی جاتی ہے اورمیدان جنگ مسلمان←  مزید پڑھیے

لاہور نوکر شاہی کے نام کھلا خط۔۔محمد اظہارالحق

“لاہور نوکر شاہی “سے مراد سول سروس کے ایک خاص گروپ کے وہ چند افراد ہیں جنہوں نے اپنا مستقبل ریاست کے بجائے ایک خاندان سے وابستہ کررکھا ہے۔ لاٹ صاحب! تمہارے ساتھ سب سے بڑا المیہ یہ ہوا کہ←  مزید پڑھیے

باد کوبیدن نامی شہر میں۔۔مجاہد مرزا

جب کولمبیا یونیورسٹی کے پروفیسر نے اپنی کتاب ’’قسطنطنیہ سے عمر خیام کے شہر تک‘‘ میں لکھا تھا ’’باکو دنیا میں استعمال کیے جانے والے تیل کا پانچواں حصہ پیدا کر رہا ہے‘‘ تب مامید امین رسول زادہ، ان کے←  مزید پڑھیے

خودکلامی۔۔۔ انعام رانا

وسی بابا بہت اچھے اور معروف لکھاری ہیں۔ کئی بار تو سمجھ نہیں آتی کہ خود انکا وزن زیادہ ہے یا انکی تحریر کا۔ مزاح کی پڑی میں تلخ بات کو لپیٹ دینا انکے بائیں ہاتھ کا کھیل ہے، اگر←  مزید پڑھیے

متحدہ مجلس عمل اور مسلمانوں کے درمیان اتحاد۔۔ڈاکٹر ندیم عباس بلوچ

امت مسلمہ پچھلی کئی صدیوں سے محکومی کا شکار ہے، اس سے بہت سے بیماریاں مسلم معاشروں کا حصہ بن گئی ہیں، ان میں سے ایک فرقہ واریت ہے۔ فرقہ واریت نے مسلم معاشروں کو بری طرح تقسیم کر دیا←  مزید پڑھیے

محض کوتاہ نظر ی ہے؟یا تہہ میں کچھ اور ہے؟؟۔۔ محمد اظہار الحق

کاٹھ کی ہنڈیا چولہے پر کتنی بار چڑھ سکتی ہے؟ آمریت زدہ پنجاب حکومت کی کاٹھ کی ہنڈیا ہے ۔اس کا انجام قریب ہے! رسی بہت دراز ہوچکی !اب یہ رسی کھینچی  جارہی ہے۔ اس رسی کےساتھ بندھے ہوئے طاقتور←  مزید پڑھیے

تصادم تو ہو رہا ہے۔۔طاہر یسین طاہر

زندگی کسی نظریئے کی بجائے خواہشوں کے پیڑ تلے گزارنے والوں پہ کڑا وقت ہے۔ فرد معاشرے کی اکائی ہے۔ یہ جملہ کئی بار دہرایا میں نے اور یہی اکائی معاشرے کا مجموعی مزاج تشکیل دیتی ہے۔ ہم جس معاشرے←  مزید پڑھیے

تختِ لاہور کی ’’ شریف سول سروس‘‘ ۔۔آصف محمود

نواز شریف پارٹی صدارت سے بھی فارغ ہو گئے ۔ اول ان کا کروفر یاد آیا پھر منیر نیازی : ’’ ہن جے ملیں تے روک کے پُچھاں ویکھیا ای اپنا حال! کتھے گئی اوہ رنگت تیری سپاں ورگی چال←  مزید پڑھیے

صرف دو آپشنز ہیں۔۔طارق احمد

ملک میں ستر سال سے جاری خاکی و سول برتری کی کشمکش ایک نئے فیز میں داخل ہو گئی  ہے۔ اور اس وقت مسلم لیگ ن کے پاس صرف دو ہی  آپشنز بچے  ہیں۔ ایک سیدھا کھلا ٹکراؤ ۔ اس←  مزید پڑھیے

کیا ہمیں سعودی عرب فوج بھیجنی چاہیے؟۔۔ آصف محمود

ایک بار پھر وہی سوال زیر بحث ہے: کیا ہمیں اپنی فوج سعودی عرب بھیجنی چاہیے؟ اس سوال کا جواب تب ملے گا جب ہم چند مزید سوالات پر غور کر لیں ۔ پہلا سوال یہ ہے کہ امور خارجہ←  مزید پڑھیے

کتاب مر نہیں سکتی۔۔اسد مفتی

کراچی فیسٹول میں شرکا کی تعداد اپنے عروج پر ہونے کے باوجود توقع سے کم تھی ۔میرے حساب سے مستقبل میں کتابیں صنعتی انقلاب سے پہلی والی شکل میں آجائیں گی۔ لگژری چیزوں کی طرح ۔ چند روز قبل کا←  مزید پڑھیے

طاقتور کی اصلاح ممکن نہیں۔۔اسلم اعوان

  عام طور پہ ہماری قومی سیاست کا محور مقتدرہ کو سمجھا گیا،اسی لئے ماضی میں بحالی جمہوریت کی ساری تحریکیوں کا نشانہ اسٹیبلشمنٹ رہی،ایسا پہلی بار دیکھنے کو ملا ہے کہ پنجاب سے اٹھنے والی طاقتور سیاسی مزاحمت کا←  مزید پڑھیے

جوڈیشل ریویو، آرٹیکل 238 اور ہمارا نقص فہم ۔۔آصف محمود

آرٹیکل 239کی ذیلی دفعہ 5 کا کہنا ہے کہ آئین میں کی گئی کسی ترمیم کو کسی عدالت میں چیلنج نہیں کیا جا سکتا ۔ ذیلی دفعہ 6 کے مطابق پارلیمان کے آئین میں ترمیم کے اختیار لامحدود ہیں ۔←  مزید پڑھیے