سفر نامہ

پوٹھی تا لال کوٹھی(سفرنامہ-قسط1) کبیر خان

’’عجائباتِ فرنگ ‘‘ ۔۔۔ کہ سفرنامہ ہے پہلا اُردوئے معلّیٰ کا اور تصنیف ہے ایک خان کمبل پوش کی۔ لگتا ہے نام سے بندہ اپنی ذات ذوات کا۔ فرمایا ہے بیچ اس تصنیف کے فاضل مصنّف نےیوں : ’’  یکبارگی←  مزید پڑھیے

میں تو چلی چین/تھوڑا تھوڑا احوال ائیرپورٹوں کی دنیاؤں کا(قسط2) -سلمیٰ اعوان

سفر کے دو موڈ ہمیشہ سے میرے لئے بڑی کشش، عجیب سی سنسنی اور کچھ کچھ تھرل جیسے جذبات و احساسات کا نمائندہ رہے ہیں ۔ٹرین اسٹیشن کی دنیا کا اپنا حسن اور ایئرپورٹ دنیا کی رنگینیاں اپنی جگہ، تاہم←  مزید پڑھیے

سفرنامہ بہاولپور(3)نور محل-محمد احمد

سنٹرل لائبریری بہاولپور دیکھنے کے بعد اب ہماری اگلی منزل بہاولپور کی تاریخ میں بہت اہمیت کا حامل اور بہاولپور کی پہنچان نور محل تھا،حقیقت یہ ہے کہ ہمیں بہاولپور دیکھنے کی تمنا بھی نور محل کی وجہ سے ہوئی←  مزید پڑھیے

سفرنامہ بہاولپور(2)سنٹرل لائبریری بہاولپور اور بہاولپور میوزیم-محمد احمد

رات کا قیام جامعہ اسعد بن زرارہ میں رہا،صبح  پانچ بجے آنکھ کھلی،چھ بجے جماعت کے ساتھ نماز ادا کی، امامت مولانا اسعد صاحب نے کروائی، قرآن پاک اچھے انداز میں پڑھ رہے تھے اور فجر میں مسنون تلاوت بھی←  مزید پڑھیے

سفرِ بلوچستان/ مُولا، جھل مگسی و بولان(2،آخری حصّہ )–ڈاکٹر محمد عظیم شاہ بُخاری

کُھلے آسمان تلے بیٹھ کر ہم نے دنیا جہان کی باتوں پر تبادلہ خیال کیا۔ سیاحت، بلوچستان کے حالات، سیاست، یہاں کے مسائل، بلوچ نوجوان اور شعور، تعلیم و ترقی، علاقے کی صورتحال سمیت کئی ایک معاملات پر میں نے←  مزید پڑھیے

میں تو چلی چین(قسط1) -سلمیٰ اعوان

وہ مشہور زمانہ کہاوت تو آپ نے ضرور سُنی ہوگی۔ارے بھئی وہی نا۔ایک دیہاتی خوبصورت چادر اوڑھ کر میلہ دیکھنے گیا اور وہاں اس کی چادر کِسی نے چھین لی۔ واپسی پر ہمسائے نے پوچھا۔ ‘‘ ہاں تو بھئی سُناؤ←  مزید پڑھیے

سفرِ بلوچستان/ مُولا، جھل مگسی و بولان(1)–ڈاکٹر محمد عظیم شاہ بُخاری

دریا سے نکل کر  میں پتھروں پہ آ بیٹھا۔ شام کے سائے گہرے ہو رہے تھے اور خنکی بھی بڑھتی جا رہی تھی۔ پتھروں پہ بیٹھے بیٹھے پیاس محسوس ہوئی تو اچانک کسی نے جگ میں دریائے مُولا کا پانی←  مزید پڑھیے

کوسٹل ہائی وے اور معصوم لیویز اہلکار/سید مہدی بخاری

سپت بیچ ہنگول کا جادوئی ساحل ہے۔ کوسٹل ہائی وے کو چھوڑتے ہوئے آف روڈ بارہ کلومیٹر اندر کی طرف واقع اس ساحل کی اپنی ہی کشش ہے۔ اس کو جانے والا راستہ دلدلی ہے۔ زمین سے پانی نکلتا رہتا←  مزید پڑھیے

سفرنامہ بہاولپور(1)-محمد احمد

تاریخ کے ایک طالب علم ہونے کے ناطے اور سیاحت سے دلچسپی کے باعث عرصہ سے بہاولپور دیکھنے کا شوق تھا،ارادہ تھا کہ دسمبر کے پہلے ہفتے میں بہاولپور کا مطالعاتی دورہ کیا جائے، اس کا ذکر برادرم محمود احمد←  مزید پڑھیے

ست رنگی خوشبو/سیّد محمد زاہد

میں تمام دنیا اور کیفیات سے خالی الذہن ہو کر بنچ پر بیٹھی اِدھر اُدھر دیکھ رہی ہوں۔ ریل کی پٹڑیوں کی چمک کے ساتھ ساتھ دوڑتی ہوئی نگاہیں دور کہیں اندھیرے میں کھو جاتی ہیں تو پھر مڑ کر←  مزید پڑھیے

نیلم ایک افسانوی اور رومانوی وادی۔۔عبدالکریم

اسلام آباد کی فضا سے مون سون کے بادل چھٹ چکے تھے ۔ سڑکوں پر ٹریفک رواں دواں تھی ۔ سورج کی کرنیں تیز پڑ رہی تھیں۔ کہیں کہیں سڑک پر سراب ہماری آنکھوں کوخیرہ کردیتا۔ یہ منظر ہمارے قریب←  مزید پڑھیے

روداد ِسفر (50،آخری قسط) مذہبی فکر کی ری کنسٹرکشن۔۔شاکر ظہیر

پاکستان منتقل ہونے کے بعد بہت سی علمی محفلوں میں شرکت کی تو اندازہ ہوا کہ جو آج کی نئی نسل ہے وہ تو بہت آگے چلی گئی ہے ۔ مذہب کے حوالے سے دو انتہائیں پائی جاتی ہیں اور←  مزید پڑھیے

روداد سفر (48)چائنہ سے پاکستان واپسی کا فیصلہ۔۔شاکر ظہیر

میری بیٹی حنا کو میری بیوی نے وہیں شاہ تن گاؤں کے ایک پرائمری سکول میں داخل کروایا ۔ چھ ماہ تک وہ وہاں پڑھتی رہی ۔ آخری بار جب میں وہاں شاہ تن گاؤں میں ان کے پاس ایک←  مزید پڑھیے

روداد سفر (47)چائنہ کی ایغور برادری۔۔شاکر ظہیر

عام طور پر لوگوں کا خیال یہ ہے کہ چائنیز اچھی بیوی ثابت نہیں ہوتیں ۔ لیکن ایک معاملے میں مجھے اپنی بیوی کی ایک عادت اتنی پسند ہے  کہ بس بندہ کہتا ہے کہ اور خدا نے حور کیا←  مزید پڑھیے

روداد سفر /مولوی کے پاس صرف کہانیاں ہیں ۔۔قسط 46/شاکر ظہیر

ساتن ( shatian ) گاؤں میں ایک سال تک ہم مقیم رہے ۔ حنا بیٹی اسی اسکول میں پڑھتی تھی اور میری بیوی نے الگ مکان کرائے پر لے رکھا تھا اور وہ قرآن کلاس لیتی تھی ۔ مجھے بھی←  مزید پڑھیے

روداد سفر /عقلی دلائل اور مذہب۔۔قسط 45/شاکر ظہیر

اسی عرصے کے دوران میمونہ ایک دن ہمارے گھر آئی اور اس نے میری بیوی کو بتایا کہ اس نے اپنے بیٹے کو اپنے سسرالی شہر کے قریب ہی موجود ایک گاؤں میں قائم مدرسہ سکول میں تعلیم کےلیے داخل←  مزید پڑھیے

روداد سفر /عقلی دلائل اور مذہب۔۔قسط 44/شاکر ظہیر

تمنا عمادی صاحب کی کتاب ” الطلاق مرتان ” بہت مشکل کتاب تھی یا مجھے مشکل لگی کہ ان کا انداز بیاں ہی بہت مشکل ہے ۔ لیکن مجھے اسے سمجھنا تھا ۔ اس کی وجہ یہ تھی کہ میرے←  مزید پڑھیے

جب بحرِمرمرہ نے آگ پکڑی (دوم،آخری حصّہ)۔۔کبیر خان

’’اَیز آئی تھاٹ۔۔۔۔‘‘۔ وہ سمندرمیں کنکر مارتے ہوئے کسقدر مطمعن دکھائی دے رہا تھا۔ ’’آنے سے پہلے کبھی آپ انطالیہ آئے ہیں ؟‘‘ اُس نے بات بڑھانے کے لئے بات بڑھائی۔ ہم نے ٹیٹنی بجائی۔ وہ سمجھ تو گیا لیکن←  مزید پڑھیے

روداد سفر(حصہ 43)عقائد میں پھنسا اسلام/شاکر ظہیر

وی پی این ( VPN ) سے ایک یہ فائدہ ہوا کہ یوٹیوب پر میں نے اسلام کے حوالے سے مواد دیکھنا شروع کیا ۔ سب سے پہلے جن سے واسطہ پڑا وہ شیخ احمد دیدات ، ڈاکٹر ذاکر نائک←  مزید پڑھیے

جب بحرِمرمرہ نے آگ پکڑی (حصّہ اوّل)۔۔کبیر خان

ایک حدیث مبارکہ کی روُ سے دیکھا جائے توفتح قسطنطنیہ مسلمانوں کے لئے ہوسِ ملک گیری کی تسکین نہیں ،جزوِ ایمان تھی۔  حدیث مبارکہ ہے کہ: ”تم ضرور قسطنطنیہ کو فتح کرو گے، وہ فاتح بھی کیا باکمال ہوگا اور←  مزید پڑھیے