وہارا امباکر کی تحاریر

کائناتی کیلنڈر۔۔۔وہارا امباکر

اس کائنات کی عمر تیرہ ارب اسی کروڑ سال ہے۔ وقت کی اس وسعت کا ادراک کرنا آسان نہیں۔ اگر ہم اس پورے وقت کو ایک سال پر لے آئیں اور پھر کائنات کے اہم سنگِ میل دیکھیں تو وہ←  مزید پڑھیے

چار عناصر کی موت۔۔۔وہارا امباکر

اس دنیا میں ہمارے ارد گرد یہ سب کچھ کیا ہے۔ قدیم یونانی فلسفیوں نے اس کو چار عناصر میں تقسیم کیا۔ مٹی، ہوا، پانی اور آگ۔ یہی خیال دو ہزار برس تک دنیا میں مقبول رہا، پھر اس کا←  مزید پڑھیے

جیمز ویب سپیس ٹیلی سکوپ۔۔۔وہارا امبار

ہبل ٹیلی سکوپ کو خلا سے تصویریں بھیجتے ہوئے انتیس سال ہونے کو ہیں۔ اس کی جانشین جیمز ویب ٹیلی سکوپ ہے۔ سائز میں اس سے پانچ گنا بڑی۔ اس پر کام 1996 میں شروع ہوا تھا اور خیال تھا←  مزید پڑھیے

جے ایف 17 تھنڈر۔۔۔وہارا امباکر

“میں طوفان کا پہلا جھونکا ہوں، دشمنوں کے لئے عذاب، دوستوں کا دوست۔ میں اس کے لئے دہشت ہوں جو میرے مقابلے پر آ جائے۔ دن کو میرا راج، رات کی تاریکی میرا پردہ۔ تم مجھے صرف اس وقت دیکھو←  مزید پڑھیے

تیسرا ایٹم بم۔۔۔۔وہارا امباکر

مین ہٹن پراجیکٹ کامیاب ہو چکا تھا۔ ہیروشیما اور ناگاساکی پر گرائے جانے والے ایٹم بم سے بنا مشروم کلاؤڈ اور دسیوں ہزار لوگوں کی اموات اس کی کامیابی کا عملی ثبوت تھیں۔ یہ کامیابی محنت سے حاصل کی گئی←  مزید پڑھیے

دوسرے لوگ۔۔۔وہارا امباکر

ہمیں اپنی تاریخ سمجھنے کے لئے اِن گروپ اور آؤٹ گروپ کا تصور سمجھنا ضروری ہے۔ بار بار، دنیا بھر میں لوگوں گروہوں کی صورت میں دوسروں کو تشدد کا نشانہ بناتے ہیں، قتل و غارت کرتے ہیں، جنگیں لڑتے←  مزید پڑھیے

دائرے کے کنارے۔۔۔وہارا امباکر

ہم جانتے ہیں کہ دائرے کا کنارہ نہیں ہوتا۔ ہم یہ بھی جانتے ہیں کہ اگر دائرے میں چلنا شروع کریںِ اور دور چلے جائیں۔ خواہ بائیں طرف سے یا پھر دائیں طرف سے تو ہم ایک ہی جگہ پر←  مزید پڑھیے

طیفے کی چائے۔۔۔وہارا امباکر

طیفا اپنے دوست کے ساتھ بیٹھا چائے پی رہا ہے۔ چائے کی ایک چسکی لینا اس قدر معمولی واقعہ لگتا ہے کہ اس طرف دھیان بھی نہیں جاتا (اگر چائے کپڑوں پر گر گئی تو معاملہ فرق ہے) لیکن یہ←  مزید پڑھیے

آئینے میں کون؟۔۔۔وہارا امباکر

آئینے کے سامنے کھڑے ہو کر اپنے آپ کو غور سے دیکھیں۔ اس پرکشش چہرے اور دلکش سراپے کے پیچھے ایک مشینی نیٹ ورک کی مخفی کائنات ہے۔ آپس میں ایک دوسرے سے لاک ہوئی ہڈیوں کے مچان بندھے ہوئے←  مزید پڑھیے

تین غلط سچ ۔ بچوں کی تربیت۔۔۔وہارا امباکر

۱۔ ٹھیس نہ لگ جائے ان آبگینوں کو قدیم دانائی کا فقرہ ہے، “جو مارتا نہیں، وہ مضبوط کر دیتا ہے”۔ کسی کو جھٹکا لگے اور وہ ٹوٹ جائے، اس کو نازک کہتے ہیں۔ کسی کو جھٹکا لگے اور اس←  مزید پڑھیے

رومانیہ کا خوفناک تجربہ ۔ بچپن۔۔۔۔۔وہارا امباکر

بچہ سیکھنے کی جبلت رکھتا ہے۔ پیر کا انگوٹھا منہ میں لے کر چوسنا، دوڑتے ہوئے ٹکرا جانا، کلکاری پر یا چیخ پر دوسروں کا ردِعمل، کھیل، لوری، یہ سب کچھ بچے کو اس دنیا میں رہنے کا طریقہ سکھا←  مزید پڑھیے

مٹی کا برتن۔۔۔وہارا امباکر

ہزاروں سال پہلے کسی انسان نے پہلی بار برتن بنایا ہو گا۔ گیلی مٹی کبھی آگ میں گری ہو گی اور باہر آ کر سوکھ کر سخت ہو گئی ہو گی۔ اس سے سخت اور کھوکھلی شکل بنائی ہو گی←  مزید پڑھیے

دہشت گرد۔۔۔وہارا امباکر

پہلی اگست 1966 میں چارلس وہٹ مین نے یونیورسٹی آف ٹیکساس ٹاور میں اوپر جانے والے زینے پر قدم رکھا۔ پچیس سالہ نوجوان تین منزلیں چڑھ کر اوپر پہنچا۔ اس کے ساتھ اسلحے کا بیگ تھا۔ اوپر جا کر سب←  مزید پڑھیے

سیڑھی ہٹانا منع ہے۔۔۔وہارا امباکر

ساتھ والی تصویر ایک سیڑھی کی ہے۔ لکڑی سے بنی سیڑھی تین سو سال سے کیسةُ القیامة نامی چرچ پر اسی جگہ ہے۔ اس کو یہاں سے نہیں ہٹایا جا سکتا اور اس کی وجہ فزکس نہیں۔ تاریخ اور انسانی←  مزید پڑھیے

کیا سب انسان برابر ہیں؟۔۔۔۔وہارا امباکر

عالمی تعاون کے ساتھ ہونے والے بائیولوجی کے سب سے بڑے پراجیکٹ ہیومن جینوم پراجیکٹ نے اپنے نتائج 2001 میں شائع کئے۔ یہ جس قدر کامیاب تھا، اتنا ہی ناکام بھی۔ کامیاب اس لئے کہ اس سے ہمیں زندگی کی←  مزید پڑھیے

جھیل کا عفریت ۔۔۔ وہارا امباکر

مغربی کیمرون کا آتش فشانی علاقہ آسیب زدہ تصور کیا جاتا تھا۔ مقامی قبائل میں نایوس جھیل سے نکلنے والے عفریت کے قصے مشہور تھے جو رات کو ڈرایا کرتا تھا۔ یہاں کی زرخیز زمین میں آسانی سے اگنے والے←  مزید پڑھیے

فزکس کے دو ٹھنڈے نوبل پرائز۔۔۔وہارا امباکر

ٹھوس، مائع اور گیس۔ مادے کی یہ تین حالتیں آپس میں خاصی ملتی جلتی ہیں۔ ان میں فرق صرف ان کے پارٹیکلز کی آپس میں فورس میں ہے ورنہ پارٹیکل خود الگ الگ ہیں اور اچھی طرح ان کی شناخت←  مزید پڑھیے

سمندر کی تہہ میں ۔ مصنوعی مرجان۔۔۔۔۔وہارا امباکر

امریکی ریاست ڈیلاوئیر میں دریائے ہند بحر اوقیانوس میں گرتا ہے۔ یہاں سے سولہ میل دور اگر سمندر میں اسی فٹ نیچے غوطہ لگایا جائے تو عجب نظارہ دیکھنے کو ملے گا۔ سمندری زندگی کا ایک شہر آباد ہے۔ چھوٹی←  مزید پڑھیے

جب غرور ٹوٹتا ہے، تب عروج ملتا ہے ۔۔۔۔۔ وہارا امباکر

ستاروں بھری رات میں آسمان کا نظارہ ہمارے چھوٹے پن کا احساس دلانے کو کافی ہے۔ ہم کون ہیں؟ یہ کائنات کیا ہے؟ ان سوالوں کے ملتے جواب انسانی انا پر مسلسل ضربیں لگاتے آئے ہیں۔ ہم اس سے چھوٹے←  مزید پڑھیے

جب شکاری شکار تھا۔۔۔وہارا امباکر

جنوبی افریقہ کے شہر توانگ میں 1924 میں ایک کان کن نے ایک اہم چیز دریافت کی۔ ایک بچے کی کھوپڑی کا فاسل۔ یہ انسان نما آسٹریلوپیتھیکس افریقانس تھا۔ اس اہم نمونے کو توانگ چائلڈ کہا جاتا ہے۔ اس نے←  مزید پڑھیے