روبینہ فیصل کی تحاریر
روبینہ فیصل
روبینہ فیصل
کالم نگار، مصنفہ،افسانہ نگار، اینکر ،پاکستان کی دبنگ آواز اٹھانے والی خاتون

کینیڈا میں کرتار پو ر کا معجزہ۔۔۔روبینہ فیصل

کئی دفعہ بڑے بڑے سوالوں کا جواب نہ کسی علم میں، نہ کسی دانش میں، نہ دانشوروں کے ہاں اور نہ کتابوں میں ملتا ہے، وہ غیر متوقع طور پر کسی چھوٹی سی جگہ سے مل جاتا ہے۔ میرے ساتھ←  مزید پڑھیے

ایک لاش کا مقدمہ زندستان میں،اکتوبر13۔۔۔۔روبینہ فیصل

اکتوبر ,13 – 1954کو پیدا،اور 4جون 1984کو ٹرین کے نیچے آکر مر جانے والی سارہ شگفتہ جو زندگی کی صرف انتیس بہاریں ہی دیکھ پائی تھی۔۔اس سے میری ملاقات لگ بھگ 2005 میں اس کی کتاب” آ نکھیں ” میں←  مزید پڑھیے

ہم عظیم تم حقیر۔۔روبینہ فیصل

اکتوبر 31, 1984 کو ہندوستان کی وزیر ِ اعظم محترمہ اندرا گاندھی کو  صفدر جنگ روڈ پر ان کے اپنے باڈی گارڈز نے گولیوں سے چھلنی کر دیا تھا۔ آج اس بات کو 35سال ہو گئے۔۔سوال یہ اٹھتا ہے کہ←  مزید پڑھیے

مٹی ہوتی جارہی ہوں۔۔۔روبینہ فیصل

اس دھرتی کے سارے موسم دوغلے ہیں اور میرے پاس سارے پھول یک رنگے اسی لئے تو شاید یہاں میری ذات کی کلیاں پنپ نہیں رہیں چہروں سے بھرے اس شہر میں بس ایک چہرہ ڈھونڈتی ہوں فقط ایک چہرہ←  مزید پڑھیے

بچہ کیوں رو رہا ہے؟۔۔۔روبینہ فیصل/حصہ اوّل

دوبئی سے پاکستان کی فلائٹ تھی۔ دن تھا 14ستمبر سال تھا 2019۔۔میں درمیان والی سیٹوں میں سے ایک کونے والی سیٹ پر بیٹھی تھی۔میرے ساتھ والی تین سیٹوں پر تین لڑکے بیٹھے آپس میں خوش گپیوں میں مصروف تھے۔ اتنی←  مزید پڑھیے

میرے بھائی کے بچے ….روبینہ فیصل

انسان جہاں پیدا ہوتا ہے، جوان ہوتا ہے،پڑھتا لکھتا ہے، ہنستا کھیلتا ہے،اس زمین سے جب جدا ہو کر جیتا ہے تو بس تمام عمر ادھورا ہی رہتا ہے۔سب مہاجروں کی ایک سی کہانی اور ایک سی کبھی نہ ختم←  مزید پڑھیے

نتھو رام کا بھارت۔۔۔روبینہ فیصل

جب گلاب سنگھ نے عہد نامہ امرتسر کے تحت 16مارچ 1846کو انگریزوں سے کشمیر خریدا تو ریاست کا کل رقبہ 84,471 مر بع میل تھا یعنی مہاراجہ کو زمین 155روپے فی مربع میل اور ایک انسان سات یا سوا سات←  مزید پڑھیے

نہتی لڑکی۔۔۔روبینہ فیصل

1988میں جب بے نظیر صاحبہ ایک طویل جلا وطنی کے بعد پاکستان تشریف لائیں تو عوامی شاعر اور باغی حبیب جالب نے اُن کی جمہوریت کے لئے کوششوں اور قربانیوں کو خراج عقیدت ایک نظم کی صورت پیش کیا: ڈرتے←  مزید پڑھیے

کچھ قصے شہر ٹورانٹو کے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔……روبینہ فیصل

ہم جتنا چاہیں اتنا ہنس سکتے ہیں اپنی اخلاقی تنزلی پر،اپنے چھوٹے پن پر،اپنی جھوٹی اناؤں پر اور اپنے اوپر چڑھائے خولوں پر،مگر جب دن کا اختتام ہوگا تو ہمیں ایک دفعہ جی بھر کر رونا پڑے گا کہ ایسے←  مزید پڑھیے

14 جولائی کا فرانس اور ہمارا پاکستان۔۔۔۔روبینہ فیصل

اب جب کبھی بھی انقلاب پڑھنے لگتی ہوں تو مجھے ٹورنٹو میں ہو نے والی پریس کانفرس میں عمران خان سے کیے گئے اپنے سوالات اور وہ لمحات یاد آجاتے ہیں جب انقلاب جیسے خونی لفظ پر خان صاحب نہ←  مزید پڑھیے

صحافت کی مِیرا سے ایک گزارش۔۔۔روبینہ فیصل

جی ،وہی مِیرا ، انگریزی والی ۔ ۔ میرا دوست سمجھ رہا تھا کہ میں اُس سنسنی صحافی کو شاعر میرا جی سے ملا رہی ہوں ۔ ۔ اس کی تصحیح کی تو  ایک سنئیر صحافی نے کہا اس غدار←  مزید پڑھیے

تم سے میں۔۔۔۔۔۔۔روبینہ فیصل

خواب کی ایک وادی ہے اور تم میرے بہت قریب کھڑے ہو اتنے کہ تمھاری سانس کا لمس میری گردن کو چھو رہا ہے مگر تم توایک اجنبی ہو، جسے میں نے کبھی دیکھا تک نہیں پھر بھی تم صدیوں←  مزید پڑھیے

پاگل خان،پاگل پاکستان۔۔۔۔روبینہ فیصل

ہندو اکثریت والی کانگریس اور انگریز سرکار ہندوستان کی تقسیم نہیں چاہتے تھے ۔ مگر کیبنٹ مشن کو دھتکار کر نہرو اور پاٹیل نے ہندوستان کے آخری بر طانوی وائسرئے ماءونٹ بیٹن کو اس بند گلی میں لا کھڑا کر←  مزید پڑھیے

اے تحیر عشق۔۔۔۔روبینہ فیصل

ایک ناول جس میں ایک صدی کی داستان ہے۔۔۔ کچھ لوگوں کے چہرے ایسے صاف شفاف اور پاکیزہ ہو تے ہیں کہ زندگی میں اگر انہوں نے کوئی غلط کام کر بھی لیا ہو تو وقت سمندر کی لہروں کی←  مزید پڑھیے

گلوبل وارمنگ اور آج کی ماں۔۔۔۔روبینہ فیصل

“مجھے مرنے سے صرف اس لئے ڈر لگتا ہے کہ میرے بچے میری موت سے گھبرا جائیں گے، وہ تکلیف میں آجائیں گے،وہ خود کو بغیر چھت کے محسوس کریں گے، انہیں لگے گا دنیا میں اب کوئی ہاتھ ان←  مزید پڑھیے

تھری ڈی گلاسز۔۔۔روبینہ فیصل

جب بزرگوں نے اخلاقیات کے معیار مقررکئے تھے تو جدید ٹیکنالوجی نہیں تھی، اب جو بچے کچھے بزرگ ہیں وہ جدیدیت اور قدیمیت میں الجھ کر رہ گئے ہیں اور اس میں انہیں دھیان ہی نہیں کہ وہ جدید ٹیکنالوجی←  مزید پڑھیے

کسے دا یار نہ وچھڑے۔۔۔روبینہ فیصل

ہم بتول شفیع کونہیں جانتے۔۔۔ہم اتنی خوبصورت اور اتنی گہری خاتون کو کیوں نہیں جانتے ؟ ہماری بدنصیبی یا ہماری لاپرواہی ؟ ہم صرف شفیع محمد کو جانتے ہیں جو کہ ایک زبردست اداکار اور صدا کار ہونے کے ساتھ←  مزید پڑھیے

شیری کا انتقام….روبینہ فیصل

مین ہیٹن نیویارک کی ایک پررونق سڑک کے کنارے ایک درمیانے قد اور درمیانی عمر کی ایک بے ڈھنگی سی عورت کھڑی ہے۔اس کے بال ترشے ہوئے ہیں اور موٹے موٹے ہونٹوں پر گہرے گلابی رنگ کی لپ اسٹک کی←  مزید پڑھیے

طارق فتح کیسے پیدا ہوتا ہے ؟۔۔۔روبینہ فیصل

بیرون ملک پاکستانیوں میں دو چیزیں بہت زور شور سے بکتی ہیں ،ایک مذہب دوسرا حب الوطنی ۔ کوئی بھی اس کا ٹھیلا لگا لے ،منافع ہی منافع۔ المیہ یہ ہے کہ بیچنے والے صرف اپنے ذاتی منافع پر نظر←  مزید پڑھیے

جہاں استاد بھونکتا اور جاہل فرماتا ہے ۔۔۔روبینہ فیصل

قصور اس اٹھارہ انیس سال کے بچے ( میں اس کا نام جانتی ہوں مگر نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم کے نقشِ قدم پر چلتے ہو ئے میں اس ظالم کا نام نہیں لوں گی ) کا بھی نہیں جس←  مزید پڑھیے