مکالمہ کی تحاریر
مکالمہ
مکالمہ
مباحثوں، الزامات و دشنام، نفرت اور دوری کے اس ماحول میں ضرورت ہے کہ ہم ایک دوسرے سے بات کریں، ایک دوسرے کی سنیں، سمجھنے کی کوشش کریں، اختلاف کریں مگر احترام سے۔ بس اسی خواہش کا نام ”مکالمہ“ ہے۔

 نٹ کھٹ کی واپسی۔ ڈاکٹر ستیہ پال آنند

ستر سے نوّے کی دہائی، تیس، پینتیس برس۔ میں جامعہ کی سطح پر ترقی کرتے ہوئے اور سیڑھیاں چڑھتے ہوئے پروفیسر ہوا، شعبے کا صدر بنا، باہر کے ملکوں میں وزیٹنگ پروفیسر کے طور پر کئی چکر لگا آیا ،←  مزید پڑھیے

خود کلامی ۔ راؤ شاہد

سکول، مسجد، کھیل کا میدان اور دوست، وقت کیسے گزر گیا پتہ ہی نہیں چلا. ٹیلی فون آیا اور چلا بھی گیا- ٹی وی دو رنگوں سے ہوتا ہوا قوس قزح کے تمام رنگوں میں گھرا اور بھاری بھرکم سے←  مزید پڑھیے

رویوں کے نشتر ۔ مصطفےمعاویہ عباسی

تحریک تقسیم ہند میں سب سے ذیادہ کردار اور قربانی بنگال کے لوگوں کی تھی۔ انکی یہ جدوجہد رنگ لائی، متحدہ ہندوستان کی خونی تقسیم کے نتیجہ میں پاکستان معرض وجود میں آیا، لیکن بنگالیوں کو پاکستان کی عوام نے←  مزید پڑھیے

سعودی عرب اورجے یوآئی کا تازہ رومانس ۔ رعایت اللہ صدیقی

(ایڈیٹرز نوٹ: صاحب مضمون نے تحریر کے ساتھ پیغام دیا کہ وہ خود جمیعت کے کارکن ہیں اور موجودہ صورتحال پہ آزردہ۔ “مکالمہ” اس تحریر کو اس امید پہ چھاپ رہا ہے کہ جے یو آئی کے ترجمان یا ہمدرد←  مزید پڑھیے

ہندو راشٹر میں دلتوں کی حالت ۔ نہال صغیر

پچھلے ہفتہ شیو سینا نے مطالبہ پیش کیا کہ ملک کو اب ہندو راشٹر قرار دے دیا جائے ۔ مجھے تعجب ہوا یہ معلوم کرکے شیو سینا اس ملک کو اب تک سیکولر تسلیم کرتی آئی ہے جبکہ حقیقت یہ←  مزید پڑھیے

فرضی ہیرو ۔ سجاد حیدر

فلم سازی آرٹ کا ایک ایسا شعبہ ہے جو ہر روز کچھ نیا لے کر آتا ہے۔ اسکے طاقتور ہونے میں کوئی کلام نہیں۔ طاقتور اقوام اسے بطور پروپیگنڈا ہتھیار استعمال کر رہی ہیں اور خوب کر رہی ہیں۔آپ اگر←  مزید پڑھیے

پیٹرو ڈالر اور امریکی پالیساں ۔ عمیر فاروق

ٹاک شو پہ کف آلود لہجے میں محترم اوریا مقبول جان جب بریٹن وڈز کا ذکر کرتے ہیں تو آنکھیں شعلہ بار ہوجاتیں ہیں اور میزبان ان کے ہاتھوں پٹتے پٹتے بچتا ہے۔ آپ کا تعلق اگر صالحین کی جماعت←  مزید پڑھیے

کیا عمران خان صرف کرکٹ کھیلنا جانتا ہے؟ محمود فیاض

عمران خان نے ساری عمر کرکٹ کھیلی اور اسی میں نام اور شہرت بھی کمائی۔ اس وقت بھی وہ کرکٹ کے ماہرین میں چوٹی کے لوگوں میں شمار ہوتے ہیں۔ کرکٹ سے ریٹائیرمنٹ کے بعد انہوں نے سیاست میں آنے←  مزید پڑھیے

ایم کیو ایم اور مقتدر ریاستی ادارے ۔ سبط حسن گیلانی ۔ برمنگھم

اس وقت پاکستانی ریاست چوطرفی مسائل میں گھری ہے۔ کشمیر۔ دہشت گردی۔ بدعنوانی۔ مشرق میں ہندوستان اورمغرب میں افغانستان سے ملحقہ سرحدیں۔بلوچستان۔ طرح طرح کے داخلی مسائل۔کمزور معیشت اور روزافزوں بڑھتی پھیلتی ہوئی آبادی۔تعلیم اورصحت کا دم توڑتا ڈھانچہ۔عفریت کی←  مزید پڑھیے

مکالمہ کا شرف۔۔۔۔ریاض علی خٹک

انسان اشرف المخلوقات ہے. اس میں بہت سے اوصاف موجود ہیں. جن میں سے ایک اعلیٰ وصف مکالمہ ہے.  جانور بھی مخلوق ہیں , مگر اشرف نہیں ہیں, اس لیے انکا مکالمہ کچھ ہی دیر میں سینگ پھنسا دیتا ہے←  مزید پڑھیے

اللہ دتہ سپاہی ۔۔۔۔۔منصور مانی

اللہ دتہ سپاہی رونے والی ماں سے پوچھو ذرا وہ کیوں کُرلا رہی ہے یہ کون جوان سال ہے جو روٹھے بچوں کو  بہلا رہی ہے وہ نہیں اب یہاں تیرا سایہ تھا جو قربتوں کا نشاں فرقتوں کی زباں←  مزید پڑھیے

چھ ستمبر، ایم ایم عالم۔۔۔۔  محمد ساجد گل ساج

(ایڈیٹر نوٹ: ایم ایم عالم کا تعلق ہمارے اس بازو سے تھا جسے مشرقی پاکستان اور اب بنگلہ دیش کہتے ہیں۔ پاکستان کا یہ بازو جدا ہوا تو عالم نے پاکستان ہی میں رہنے کا فیصلہ کیا گو بنگلہ دیش←  مزید پڑھیے

تراشیدم، پرستیدم، شکستم ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سعدیہ بٹ

ایک زمانہ تھا کہ شاعری بڑی نایاب جنس لگتی تھی. اس کا وجود محض کتابوں میں اور اطلاق صرف فلموں میں ہوتا تھا. میں تو شاعری کا سوچ کر اس وقت ایسے آہیں بھرتی تھی جیسے اب چاند پر جانے←  مزید پڑھیے

جنگِ ستمبر اور بھٹو۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ بابر عباس خان

چھ ستمبر سے کچھ ماہ قبل، میجر جنرل ٹکا خان نے برگیڈئیر افتخار کو رن کچھ کی مہم سونپی جنہوں 27 اپریل 1965 تک تمام مطلوب علاقہ بھارت سے چھین لیا. رن کچھ کی پسپائی کے بعد بھارتی وزیراعظم لال←  مزید پڑھیے

انسانیت کا جنازہ جمہوریت کے کاندھوں پر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ نازش ہماقاسمی

ڈاکٹر کا پیشہ انسانی خدمت کا بہترین مظہر ہوتا ہے اور لوگ ڈاکٹروں کو مہذب اور حقوق العباد کی پاسداری کرنے والا شخص تصور کرتے ہیں۔ ان سے بے لوث انسانی خدمات کی توقع اور ان کے بارے میں نہایت←  مزید پڑھیے

کراچی کا سیاسی منظر نامہ۔۔۔۔۔۔۔ حنا سید

کچھ وقت قبل علامہ طاہر القادری کے پاکستان آتے ہی پانامہ پیرز کے مرتے ہوئے گھوڑے میں جان پڑگئی اور عمران خان نے بھی تحریک چلانے کا اعلان کردیا۔ جس ایشو کو وفاقی حکومت دبا چکی تھی وہ ڈاکٹر طاہر←  مزید پڑھیے

کیا نواز شریف بیوقوف ہیں؟۔۔۔۔ژاں سارتر

یہ وہ عام سوال ہے جو آپ پاکستان میں عوام سے پوچھیں تو پی ٹی آئی کے نوجوان اور جذباتی کارکن فوراً سے پیشتر اثبات میں جواب دیں گے۔ پیپلز پارٹی کے کسی سنجیدہ سیاسی ورکر سے پوچھیں تو وہ←  مزید پڑھیے

“پنشن ۔۔۔۔۔۔ڈاکٹر مجاہد مرزا”

  “پنشن” میرے کڑیل سپوت کی قیمت چھ ستمبر کے خون کی قیمت جو مجھے قسط وار ملتی ہے صرف بتیس روپے چھ آنے ڈھائی سالوں کے دودھ کی قیمت بیس سالوں کی پرورش کے دام صرف بتیس روپے چھ←  مزید پڑھیے

اے رب جلیل۔۔۔۔۔نینا ابرامووا

 نظم: نینا ابرامووا (ترجمہ: مجاہد مرزا) اے رب جلیل، جو کچھ بھی دیا، مشکور ہوں میں آج خدا صبح سویرے جاگ گیا شکووں اور تقاضوں سے پر نامے پڑھے اپنے کرم کا بقچہ کھولا کسی کو غچہ دیے بنا خواہاں←  مزید پڑھیے

کیونکہ میں دانشور نہیں ہوں ۔۔۔۔عارف خٹک

( خود پہ ہنستے، قہقہے لگاتے عارف خٹک کا یہ روپ شاید آپ نے پہلے نا دیکھا ہو۔ عارف کی یہ تحریر ایک طمانچہ ہے اس معاشرے کے منہ پر اور اسکے منافقین کے منہ پر۔ ایڈیٹر) مجھے کافی لوگ←  مزید پڑھیے