مرِزا مدثر نواز کی تحاریر
مرِزا مدثر نواز
مرِزا مدثر نواز
پی ٹی سی ایل میں اسسٹنٹ مینجر۔ ایم ایس سی ٹیلی کمیونیکیشن انجنیئرنگ

مرتبے والا۔۔۔مرزا مدثر نواز

دوسری بہت سی خصوصیات کے علاوہ جو خوبی مذہب اسلام کو دوسرے مذاہب سے منفرد و ممتاز کرتی ہے وہ “مساوات “ہے، یعنی بڑائی و برتری کے تمام خود ساختہ اعزازی مرتبوں کے مقابل صرف ایک ہی امتیازی معیار تقویٰ←  مزید پڑھیے

تبدیلی کا خواب۔۔۔مرزا مدثر نواز

افتخار اقبال موجودہ بر سر اقتدار سیاسی جماعت کا انتہائی جذباتی اور اس کے ہر جائز و ناجائز‘ سیاہ و سفید‘ درست و غلط اقدام پر مہر تصدیق ثبت کرنے والا کارکن ہے‘ جس نے 2018کے الیکشن میں تبدیلی کے←  مزید پڑھیے

ہم سایہ ۔۔۔۔مرزا مدثر نواز/دوسری،آخری قسط

دین اسلام میں ہر تعلق‘ رشتے اور انسان سے وابستہ ہر فرد کی اہمیت‘ احترام اور مقام کی بہت وضاحت کے ساتھ تفصیل بیان کی گئی ہے‘ بلا شبہ دین اسلام وہ دین ہے کہ جس میں غیر مسلموں کو←  مزید پڑھیے

ہم سایہ۔۔۔۔مرزا مدثر نواز/قسط1

خالد محمود حیران کن قوتِ حافظہ کے مالک‘ باصلاحیت‘ سماجی‘ ہمدرد اور شفیق استاد ہیں جنہیں ہم پیار سے بابا جی کہتے ہیں۔ بابا جی نے لاہور کے انتہائی مہنگے علاقے جوہر ٹاؤن میں بڑے شوق سے ایک کوٹھی نما←  مزید پڑھیے

ادارہ یا جاگیر۔۔مرزا مدثر نواز

ہم ایک خود پسند و خود پرست قوم ہیں جو اپنے فیصلوں میں کسی کی رائے پر نظر ثانی کی سوچ کو بھی قریب نہیں پھٹکنے دیتے‘ ساری زندگی ”میں“ کو لے َ کر گزار دیتے ہیں‘ مشورے اور سب←  مزید پڑھیے

روزہ کیوں رکھیں؟۔۔۔مرزا مدثر نواز

رمضان کا مقدس مہینہ جاری ہے جو کہ سرا سر رحمتوں‘ برکتوں‘ معافیوں اور انعامات کی بارشوں والا مہینہ ہے۔ بارہ مہینوں میں سے اس ایک مہینے میں اہلِ ایمان کو یاددہانی کی مشق(ریفریشر کورس) کرائی جات ی ہے کہ←  مزید پڑھیے

اکتائے ہوئے رہنا۔۔۔مرزا مدثر نواز

وہ انجنیئر ہے اور ایک ادارے میں بہت ہی اچھی اجرت کے ساتھ اعلیٰ پوسٹ پر ملازمت کر رہا ہے‘ شادی ہوئی تو ہمسفر بھی ڈاکٹر ملی‘ والد صاحب اکیسویں گریڈ سے ریٹائرڈ ہیں‘ بہن اور بھائی بھی ڈاکٹر ہیں‘←  مزید پڑھیے

نازیبا کلمات۔۔۔مرزا مدثر نواز

جب سے تعلیم کے شعبے نے ایک کامیاب و نفع بخش کاروبار کی شکل اختیار کی ہے‘ علم کی اصل روح ماند پڑ چکی ہے۔ تعلیم حیوانیت سے انسانیت تک کے سفر کا نام ہے‘ تعلیم کا بنیادی مقصد شخصیت←  مزید پڑھیے

مہمان۔۔۔مرزا مدثر نواز

حضرت معروف کرخیؒ کے گھر جو بھی آتا ‘آپ اس کی خدمت ایک خادم کی طرح کرتے۔ ایک دن ایسا مہمان آیا جو قریب المرگ تھا‘ اس کی جان معلوم نہیں کہاں اٹکی ہوئی تھی‘ رات کو وہ خود سویا←  مزید پڑھیے

ابھی بہت دیر ہے۔۔۔مرزا مدثر نواز

عید قریب تھی اور بچوں کو اپنی خوشی دوبالا کرنے کے لیے نئے کپڑے خریدنے کی شدید خواہش‘ جس کا اظہار انہوں نے اپنی ماں سے کیا۔بیوی نے بچوں کا مطالبہ اپنے شوہر کے سامنے رکھاجس نے تنگ دستی کی←  مزید پڑھیے

بیٹی نہ دینا۔۔۔۔مرزا مدثر نواز

وہ چار بھائی اور تین بہنیں ہیں‘ سارا گھرانہ تعلیم یافتہ‘ با شعورو بااخلاق ہے۔ ایک دفعہ اس نے مجھے بتایا کہ اس کی ماں ان کے لیے ایک دعا کثرت سے مانگتی ہے کہ اے پروردگار‘ میری اولاد کو←  مزید پڑھیے

حسنِ صورت۔۔۔۔مرزا مدثر نواز

ایک شخص اصلاح نفس کی خواہش رکھتا تھا‘ وہ اس غرض سے ایک شیخ کی خدمت میں حاضر ہوا‘ شیخ نے اسے کچھ اور وظائف پڑھنے کی تاکید کی اور اس نے اس پر عمل کرنا شروع کر دیا۔ شیخ←  مزید پڑھیے

پیغام آگے پہنچائیں ورنہ۔۔۔مرزا مدثر نواز

اسّی اور نوے کی دہائی میں موبائل اور انٹرنیٹ سروسز نے عوام کی زندگی کو ابھی اپنی لپیٹ میں نہیں لیا تھا۔ فوٹو کاپی کا کاروبار اپنے عروج کے دن دیکھ رہاتھا۔ اس دور میں ہوش سنبھالے لوگ بخوبی ایسے←  مزید پڑھیے

میں آزاد ہوں۔۔۔۔مرزا مدثر نواز

اس کے آباؤ اجداد نے بابر کے دور میں ہرات سے ہندوستان ہجرت کی جو جانے پہچانے سکالر اور منتظم تھے۔ اس نے ابتدائی تعلیم گھر پر اپنے والد اور مختلف اساتذہ سے حاصل کی کیونکہ اس کے والد اسے←  مزید پڑھیے

واضح انکار۔۔مرزا مدثر نواز

وہ دونوں ایک ہی ادارے میں ملازمت کرتے ہیں ‘ ادارے میں شمولیت کا دن اور گروپ مشترکہ ہے‘ بخوبی ایکدوسرے کو جانتے ہیں اور کچھ عرصہ پہلے ایک ہی اقامت گاہ میں مقیم تھے۔ ایک کے پاس ان دنوں←  مزید پڑھیے

عاشق۔۔۔۔۔مرزا مدثر نواز/تیسری ،آخری قسط

زید بن سعنہ جس زمانہ میں یہودی تھے‘ لین دین کا کاروبار کرتے تھے‘ آپﷺ نے ان سے کچھ قرض لیا‘ میعاد ادامیں ابھی کچھ دن باقی تھے‘ تقاضے کو آئے‘ آپ کی چادر پکڑ کر کھینچی اور سخت سست←  مزید پڑھیے

عاشق۔۔۔۔۔مرزا مدثر نواز/قسط2

اپنے محبوب کے عشق میں ڈوبا ہوا سیالکوٹ کا باسی اپنے پروردگار سے دعا کرتا تھا کہ ؂تو غنی ازہر دو عالم من فقیر اے مالک تو دونوں جہانوں سے بے نیاز ہے اور میں ایک سائل و فقیر ہوں←  مزید پڑھیے

عاشق ۔۔۔مرزا مدثر نواز/قسط1

سر پر سفید ٹوپی‘ بین والی سادہ سی قمیض‘ پاؤں میں لیلن کے چپل پہنے‘ ہاتھوں میں سٹیل یا سلور کی پرات (چنگیر) اور ڈول اٹھائے‘ مدرسہ کے طالبعلم جنہیں درویش کہا جاتا تھا‘ مغرب کے بعد ہر گھر سے←  مزید پڑھیے

کیسے سمجھائیں۔۔۔مرزا مدثر نواز

تعلیم محمدی ﷺ میں جماعت کے افراد پر ان کی قوت کے بقدر جماعت کے دوسرے افراد کی نگرانی فرض ہے‘ اسی اخلاقی فرض کا دوسرا شرعی نام ’’امر بالمعروف و نہی عن المنکر‘‘ (یعنی اچھی باتوں کے لیے کہنا←  مزید پڑھیے

صرف میں ہدایت یافتہ ہوں۔۔۔۔مرزا مدثر نواز

ایک دفعہ ایک دوست مجھے اپنے کزن سے ملانے لے گیاجو لاہور میں رائے ونڈ روڈ پر واقع ایک مدرسے  میں مفتی بننے کی تعلیم حاصل کر رہا تھا اور اب مفتی ہے۔ گفتگو کے دوران میں نے مفتی صاحب←  مزید پڑھیے