محمداظہار الحق کی تحاریر

2040 ء میں لکھا گیا ایک کالم۔۔۔محمد اظہار الحق

منت سماجت کی مگر زمیندار نہ مانا۔ گندم پک چکی تھی۔ جب بارشوں کا سلسلہ شروع ہوا ۔فصل ڈھے گئی جو بچی اس میں دانہ گیلا تھا سکھانے کے لیے کھلیان پر ڈالا تو آندھی آگئی اور رہی سہی کسر←  مزید پڑھیے

اب خوب ہنسے گا دیوانہ۔۔محمد اظہار الحق

اوراق پارینہ میں حفیظ جالندھری کی دو نظمیں ہاتھ آئی ہیں ۔یہ المیہ ہے کہ اب ان کی تصانیف کمیاب بلکہ نایاب ہیں ۔بچوں کے لیے بھی انہوں نے کمال کی نظمیں کہیں،وہ بھی کہیں نہیں ملتیں۔ دونوں نظمیں قارئین←  مزید پڑھیے

مجرم ہیں !اے جگر گوشہ رسول ﷺ !ہم مجرم ہیں۔۔محمد اظہار الحق

اگر اب بھی ہمالیہ الٹ کر اوپر نہیں آن گرتا تو کب گرے گا ؟ اگر اب بھی بحر ہند کا پانی اس دھرتی کو نگل نہیں جاتا تو کب نگلے گا ؟ خدا کا خوف کرو اہل پاکستان ،اللہ←  مزید پڑھیے

کنے بُوئے تے کِنی باریاں نیں ۔۔محمد اظہار الحق

کتنی ہی بار لاہور آئے۔ کئی کئی دن رہے ‘مزدوری کے حوالے سے لے کر ‘ذاتی حوالوں تک’ بارہا آنا اور رہنا ہوا۔ مگر اندرون لاہور دیکھنا ‘دیکھ کر سمجھنا اور سمجھ کر دیکھنا نہ نصیب ہوا۔ اس عرصہ میں←  مزید پڑھیے

شوکت ہمارے ساتھ عجب حادثہ ہوا۔۔محمد اظہار الحق

جب پارلیمنٹ ایک دکان ہے اور دکان کے اندر مختلف سبزیاں بکنے کے لیے رکھی ہیں تو اس سےکیا فرق پڑتا ہے کہ کون سی سبزی کہاں پر رکھی جائے’ چیئرمین رضا ربانی ہوں یا مشاہد حسین یا کوئی اور’←  مزید پڑھیے

ایک کلو گرام دودھ میں ایک قطرہ گندگی۔۔محمد اظہار الحق

سینیٹ کے انتخابات میں کرنسی نوٹو ں کی بوریاں ، بیل گاڑیو ں ،کارگو ٹرینوں،ٹرکوں ،بھڑولوں میں بھر کر ایک دوسرے کے ہاں بھیجی گئیں ۔ دوروازے کھٹکھٹائے گئے ۔اندر سے جو باہر نکلا ،اس نے نوٹ گنے، قبول کئے←  مزید پڑھیے

عمران بذریعہ جان فرانسس۔۔محمد اظہار الحق

جان فرانسس سے ایک دن باتوں باتوں میں ذکر کیا کہ “دی ایج” (آسٹریلیا کے معروف روزنامہ) کو مضمون بھیجا ہے ۔ابھی تک چھپنے یا نہ چھپنے کی اطلاع نہیں آئی۔ جان مسکرایا ۔کہنے لگا ‘یہاں ایسا نہیں ہوتا۔ایک تو←  مزید پڑھیے

عمران خان بذریعہ جان فرانسس۔۔محمد اظہارالحق

جان فرانسس سے پہلی ملاقات ایک خوشگوار حادثہ تھی! یہ 2010 کی بات ہے۔ ہم میا ں بیوی میلبورن میں تھے۔ صاحبزادے نے اپارٹمنٹ چھوڑ کر صحن والا گھر لے لیا۔ اس لیے کہ اسے معلوم تھا باپ صحن کے←  مزید پڑھیے

لاہور نوکر شاہی کے نام کھلا خط۔۔محمد اظہارالحق

“لاہور نوکر شاہی “سے مراد سول سروس کے ایک خاص گروپ کے وہ چند افراد ہیں جنہوں نے اپنا مستقبل ریاست کے بجائے ایک خاندان سے وابستہ کررکھا ہے۔ لاٹ صاحب! تمہارے ساتھ سب سے بڑا المیہ یہ ہوا کہ←  مزید پڑھیے

محض کوتاہ نظر ی ہے؟یا تہہ میں کچھ اور ہے؟؟۔۔ محمد اظہار الحق

کاٹھ کی ہنڈیا چولہے پر کتنی بار چڑھ سکتی ہے؟ آمریت زدہ پنجاب حکومت کی کاٹھ کی ہنڈیا ہے ۔اس کا انجام قریب ہے! رسی بہت دراز ہوچکی !اب یہ رسی کھینچی  جارہی ہے۔ اس رسی کےساتھ بندھے ہوئے طاقتور←  مزید پڑھیے

منہ اور کُھر کی بیماری۔۔محمد اظہار الحق

آپ کا کیا خیال ہے پاکستانی پنجاب کا سب سے زیادہ بد قسمت ،سب سے زیادہ بد نصیب اور سب سے زیادہ محروم توجہ حصہ کون سا ہے؟ آپ کے ذہن میں سب سے پہلے جنوبی پنجاب یعنی سرائیکی پٹی←  مزید پڑھیے

ہمارےپاس ان کاموں کے لیے وقت ہی کہاں ہے۔۔محمد اظہار الحق

وہ الاسکا سے روانہ ہوئی ۔ کیا آپ کو پتہ ہے الاسکا کہاں ہے؟ دنیا کا نقشہ دیکھیے ۔یہ کرہ ء ارض کا آخری آباد کنارہ ہے۔ انتہائی شمال میں ،کچھ کچھ شمال مغرب میں ۔ یہ امریکہ کی ریاست←  مزید پڑھیے

وکی پیڈیا سے ہارس ٹریڈنگ تک۔۔محمد اظہار الحق

شاید ہی کوئی تعلیم یافتہ یا نیم تعلیم یافتہ ‘مرد ‘یا عورت’ایسی ہو جسے”وکی پیڈیا “کا علم نہ ہو۔ ایک زمانہ تھا کہ انسائیکلو پیڈیا لائبریریوں میں پڑے ہوئے تھے۔لکھنے پڑھنے والے،تحقیق کرنے والے،بستہ بغل میں لیے،لائبریریوں کا رخ کرتے’وہاں←  مزید پڑھیے

یہ فلاں کا آدمی ہے۔۔محمد اظہار الحق

اس دن مایوسی گہرے بادلوں کی طرح چھائی ہوئی تھی ۔سمجھ میں نہیں آرہا تھا کہ کیا کیا جائے۔ کس  طرف کا رُخ کیا جائے۔کیا قلم توڑ کر پھینک دیا جائے؟ کیا لکھنا چھو ڑ دیا جائے؟ کیا دماغ کو←  مزید پڑھیے

طوطے کا وطن اور بندروں کا دادا۔۔محمد اظہار الحق

طوطے کا وطن اور بندروں کا دادا باغوں اور باغیچوں کے اس شہر میں بحرالکاہل کی طرف خنک ہوا کے جھونکے چلے آئے جارہے ہیں ۔ درجہ حرارت جوکل اس وقت تیس سے اوپر تھا ‘اٹھارہ ہوچلا ہے۔۔سفر کی شام←  مزید پڑھیے

تارکین وطن کھائی کے کنارے پر۔۔محمد اظہار الحق

تارکین وطن ایک عجیب و غریب صورت حال سے دو چار ہیں ۔ایک طرف  پہاڑ کی سر بفلک چوٹی ہے ۔دوسری طرف کھائی ہے۔مہیب گہری کھائی۔ واپس آئیں تو عزت نفس  سلامت ہے نہ مال اور جان کی سلامتی ۔پورا←  مزید پڑھیے

مسکراہٹوں اور آنسوؤں کو بھی تولا جائے گا۔۔محمد اظہار الحق

جنرل کمال اکبر صاحب تشریف لائے،ضروری بات جو کرنا تھی ،پھر کہنے لگے”بیٹھوں گا نہیں “ایک مہم درپیش ہے”۔ جنرل صاحب تھری سٹار جرنیل ہیں ۔مسلح افواج کے “سرجن جنرل”رہے۔مگر مزاج میں خالص درویش!ان کی ساری زندگی کا ماحصل دو←  مزید پڑھیے

تارکین وطن شیر کی سواری کررہے ہیں۔۔محمد اظہار الحق

اردو کا ایک معجزہ یہ بھی ہے کہ ساری دنیا میں پھیل گئی ہے۔لاس اینجلز ہو یا ناروے ‘جاپان ہو یا بارسلونا’ اردو بولنے والے سمجھنے والے لکھنے والے ہر جگہ موجود ہیں ۔ اردو کی بستیاں کرہ ارض کے←  مزید پڑھیے

وہم کی چار ٹانگیں اور رنگ سفید۔۔محمد اظہارالحق

میں آپ کو بیو قوف سمجھتا ہوں ۔ نہ صرف بیوقوف بلکہ گاؤدی! میرے دائیں ہاتھ میں گلاس ہے۔گلاس میں پانی ہے،میں پانی پیتا ہوں اور آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ میرے ہاتھ میں گلاس ہے نہ پانی! میں←  مزید پڑھیے

پارسائی کے پیکر۔۔محمد اظہار الحق

بے لوث،بے غرض،نیکوکاروں کا یہ گروہ ملک ملک پھرا،دیس دیس گھوما،ہر براعظم کی خاک چھانی،تمام بڑے بڑے ملکوں میں گیا مگر گوہر مقصود ہاتھ نہ آیا۔ پھر ایک دن تھک ہار کر اس گروہ کے ارکان بیٹھ گئے۔مایوس،نامراد۔ان کے سربراہ←  مزید پڑھیے