Ismail Gul Khilji کی تحاریر

عورت کمتر نہیں۔۔اسماعیل گُل خلجی

میں بچپن سے ایک مشہور کہاوت سنتا آ رہاں ہوں کہ “عورت مرد سے کمتر ہے” یہ کہاوت کسی حد تک درست ہے اور وہ اس لئے کہ عورت اپنے کچھ اوصاف اور ان کے اظہار میں مرد سے کمتر←  مزید پڑھیے

غلام دانشور۔۔اسماعیل گُل خلجی

جیسے جسم  کو روح  کی ضرورت ہوتی ہے ویسے ہی  معاشرے کو      عقلمندوں  اور  دانشوروں کی  ضرورت ہوتی ہے۔ کسی بھی معاشرے کی ترقی میں دانشور کا کردار انتہائی اہم ہوتی ہے ۔ دانشور حضرات اپنے علم کی←  مزید پڑھیے

محنت کشوں کا عالمی دن۔۔اسماعیل گُل خلجی

مزدور کسے کہتے ہے؟ اہل علم کے مطابق مزدور کی تعریف یہ ہے: ” کو ئی بھی ایسا شخص جو اپنی انفرادی قوت کو فروخت کر کے اپنا معاش حاصل کرے مزدور کہلاتا ہے” ہر سال یکم مئی کو بطور←  مزید پڑھیے

پاکستان میں بے روزگاری۔۔اسماعیل گُل خلجی

بے روزگار اس شخص کو کہا جاتا ہے جو کوئی کام کرنا چاہتا ہو اور اس کام کی اہلیت بھی رکھتا ہو لیکن اسے کام نہ ملے ۔ بے روزگاری پاکستان کے بڑے مسائل میں سے ایک ہے ۔ معاشرے ←  مزید پڑھیے

بیت الخلا ایک ضرورت ہے۔۔اسماعیل گُل خلجی

ذرا سوچیے! چاہے آپ مہمان ہو ں یا میزبان آپ رفع حاجت کرنا چاہتے ہیں لیکن گھر میں بیت الخلا موجود نہیں اور نہ ہی آپ کو گھر کے باہر پبلک ٹوائلٹ یعنی عوامی بیت الخلا کی سہولت میسر ہے،←  مزید پڑھیے