حمزہ ابراہیم کی تحاریر
حمزہ ابراہیم
باقی مضامین پڑھنے کیلئے حمزہ ابراہیم کے نام پر کلک کریں-

آخوند خراسانی اور ایران کی تحریک جمہوریت (1906ء تا 1911ء)، آخری قسط ہفتم ۔۔۔ حمزہ ابراہیم

نوٹ: یہ سلسلہٴ مضامین پروفیسر ڈینس ہرمن کے مقالے کا اردو ترجمہ ہے جو اقساط کی شکل میں پیش کیا گیا ہے۔ یہ اس سلسلے کی آخری قسط ہے۔اصلی نسخے اور حوالہ جات کو دیکھنے کیلئے اس لنک کو کلک←  مزید پڑھیے

آخوند خراسانی اور ایران کی تحریک جمہوریت (1906ء تا 1911ء)، قسط ششم۔۔ حمزہ ابراہیم

نوٹ: یہ سلسلہٴ مضامین پروفیسر ڈینس ہرمن کے مقالے کا اردو ترجمہ ہے جو اقساط کی شکل میں پیش کیا جاۓ گا۔اصلی نسخے اور حوالہ جات کو دیکھنے کیلئے اس لنک کو کلک کریں: Akhund Khurasani and the Iranian Constitutional←  مزید پڑھیے

آخوند خراسانی اور ایران کی تحریک جمہوریت (1906ء تا 1911ء)، قسط پنجم ۔۔ حمزہ ابراہیم

نوٹ: یہ سلسلہٴ مضامین پروفیسر ڈینس ہرمن کے مقالے کا اردو ترجمہ ہے جو اقساط کی شکل میں پیش کیا جاۓ گا۔اصلی نسخے اور حوالہ جات کو دیکھنے کیلئے اس لنک کو کلک کریں: Akhund Khurasani and the Iranian Constitutional←  مزید پڑھیے

آخوند خراسانی اور ایران کی تحریک جمہوریت (1906ء تا 1911ء)، قسط چہارم – – – حمزہ ابراہیم

نوٹ: یہ سلسلہٴ مضامین پروفیسر ڈینس ہرمن کے مقالے کا اردو ترجمہ ہے جو اقساط کی شکل میں پیش کیا جاۓ گا۔اصلی نسخے اور حوالہ جات کو دیکھنے کیلئے اس لنک کو کلک کریں: Akhund Khurasani and the Iranian Constitutional←  مزید پڑھیے

آخوند خراسانی اور ایران کی تحریک جمہوریت (1906ء تا 1911ء)، قسط سوم ۔۔ حمزہ ابراہیم

نوٹ: یہ سلسلہٴ مضامین پروفیسر ڈینس ہرمن کے مقالے کا اردو ترجمہ ہے جو اقساط کی شکل میں پیش کیا جاۓ گا۔اصلی نسخے اور حوالہ جات کو دیکھنے کیلئے اس لنک کو کلک کریں: Akhund Khurasani and the Iranian Constitutional←  مزید پڑھیے

آخوند خراسانی اور ایران کی تحریکَ جمہوریت (1906ء تا 1911ء)، قسط دوم ۔۔ حمزہ ابراہیم

نوٹ: یہ سلسلہٴ مضامین پروفیسر ڈینس ہرمن کے مقالے کا اردو ترجمہ ہے جو اقساط کی شکل میں پیش کیا جاۓ گا۔اصلی نسخے اور حوالہ جات کو دیکھنے کیلئے اس لنک کو کلک کریں: Akhund Khurasani and the Iranian Constitutional←  مزید پڑھیے

آخوند خراسانی اور ایران کی تحریکَ جمہوریت (1906ء تا 1911ء)، قسط اوّل – – – حمزہ ابراہیم

نوٹ: یہ سلسلہٴ مضامین پروفیسر ڈینس ہرمن کے مقالے کا اردو ترجمہ ہے جو اقساط کی شکل میں پیش کیا جاۓ گا-اصلی نسخے اور حوالہ جات کو دیکھنے کیلئے اس لنک کو کلک کریں: Akhund Khurasani and the Iranian Constitutional←  مزید پڑھیے

سُپرمین اِن اسلام : ایک جعلی کتاب کا قصہ۔۔حمزہ ابراہیم

”سپرمین اِن اسلام“ کے عنوان سے ایک کتاب قیام پبلیکیشنز لاہور نے 1994ء میں پہلی بار شائع کی، جس کا موضوع امام جعفر صادقؑ کے علمی کارنامے تھے۔ کتاب کے سر ورق پر بتایا گیا ہے کہ اسے 25 مغربی←  مزید پڑھیے

1991ء کے ناکام انقلابِ عراق کو تیس سال ہوگئے۔۔حمزہ ابراہیم

عراق میں مارچ  1991 کا انقلاب جنگ خلیج میں جنگ بندی کے دوران شمالی اور جنوبی عراق میں اٹھنے والی مشہور بغاوتوں کا ایک سلسلہ تھا  جو عراق کے شیعہ اور کرد سنی  علاقوں میں اس خیال سے اٹھا کہ←  مزید پڑھیے

برصغیر کا خواجہ طوسی: علامہ تفضل حسین کشمیری۔۔۔حمزہ ابراہیم

علامہ تفضل حسین کشمیری (1727تا 1801)، جنہیں خانِ علامہ کا لقب دیا گیا، ایک شیعہ عالم، طبیعات دان اور فلسفی تھے۔ [1]وہ علمی دنیا میں جناب آئزک نیوٹن کی کتاب ” فلسفہٴ طبیعت کے ریاضیاتی اصول “اور کئی دوسرے علمی رسالوں کا عربی ترجمہ کرنے کے لئے مشہور ہیں۔ ابتدائی←  مزید پڑھیے

سانحۂ کوئٹہ: شہروں کے پھیلاؤ اور دہشتگردی میں تعلق کو سمجھنے کی ضرورت(دوسرا،آخری حصّہ )۔۔۔۔ حمزہ ابراہیم

2. شہر جب پھیلتے ہیں تو ان کے ارد گرد موجود زمینوں کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگتی ہیں۔ پاکستان جیسے غریب ممالک میں کہ جہاں بے روزگاری اور جہالت عام ہے، شہری جائیداد پر قبضے اور شہر میں←  مزید پڑھیے

سائنس کے بارے میں مولانا مودودی اور آیت الله خمینی کے نظریات

ہمارے ہاں اکثر مولانا مودودی اور آیت الله خمینی کے نظریات میں مماثلت زیرِبحث رہی ہے۔ اگرچہ سیاسی افکار میں آیت الله خمینی کو مولانا مودودی یا سید قطب کا مقلد کہا جا سکتا ہے لیکن  ایک ایسا موضوع ہے←  مزید پڑھیے

ملائیشیامیں شیعہ مسلک پر پابندی کا جائزہ(ڈاکٹر محمد فیصل موسیٰ، ڈاکٹر تان بنگ ہوئی)۔۔۔۔حمزہ ابراہیم

[نوٹ: یہ مضمون ڈاکٹر محمد فیصل موسیٰ اور ڈاکٹر تان بنگ ہوئی کے تحقیقی مقالے Mohd Faizal Musa & Tan Beng Hui, “State-backed discrimination against Shia Muslims in Malaysia”, Critical Asian Studies, 49: 3, 308-329, 2017. کا خلاصہ ہے۔یہ اہم←  مزید پڑھیے

برصغیر کے پہلے اسلامی انقلاب کا آنکھوں دیکھا احوال(میر محبوب علی دہلوی)(دوسرا،آخری حصّہ)۔۔۔۔حمزہ ابراہیم

خلاصہ یہ کہ پھر ہم سید احمد کے پاس پنجتار پہنچے، جب کہ جناب سید نے مولانا اسماعیل کو پکھلی دمتوڑ کے علاقے میں بھیج دیا تھا۔ یہ کام بھی انہوں نے سید شاہ کی آرزو کے عین مطابق اپنے←  مزید پڑھیے

برصغیر کے پہلے اسلامی انقلاب کا آنکھوں دیکھا احوال(میر محبوب علی دہلوی)(حصہ اوّل)۔۔۔۔حمزہ ابراہیم

نوٹ: [مولانا خوشتر نورانی نے اپنی کتاب ”تحریکِ جہاد اور برٹش گورنمنٹ“ میں مولانا سید میر محبوب علی دہلوی کی کتاب ”تاریخ الآئمہ فی ذکر خلفاء الامہ“ میں 1827ء میں پشاور میں قائم ہونے والی مذہبی رہنماؤں کی حکومت کے←  مزید پڑھیے

لکھنؤ میں مدحِ صحابہ ایجی ٹیشن اور مسلم لیگ 1937ء تا 1939ء (ڈاکٹر وینکٹ دُھلی پالہ)۔۔۔۔حمزہ ابراہیم

نوٹ: یہ مضمون ڈاکٹر وینکٹ دھلی پالہ کے مقالے Venkat Dhulipala, “Rallying the Qaum: The Muslim League in the United Provinces, 1937–1939”, Modern Asian Studies, Vol 44(3), pp. 603–640, 2010 کے دوسرے حصے کا ترجمہ ہے۔ خلاصہ یہ مقالہ انگریز←  مزید پڑھیے

 پاکستان کے شیعہ مخالف  تشدد میں سعودی کردارکے بارے میں مبالغے کا رد(ڈاکٹر سائمن وولف گینگ فوکث)۔۔۔حمزہ ابراہیم

نوٹ: یہ مضمون ڈاکٹر سائمن وولف گینگ فوکث کے درج ذیل مقالے کا ترجمہ ہے: Fuchs, S. W., “Faded networks: the overestimated Saudi Legacy of anti–Shi’i sectarianism in Pakistan”, Global Discourses, vol. 9, no. 4, 703–715, (2019).] خلاصہٴ مطلب اس←  مزید پڑھیے

فرقہ وارانہ دہشتگردی کے دو سو سال۔۔حمزہ ابراہیم

برصغیر پاک و ہند کے مسلمان معاشرے  میں عوامی سطح پر فرقہ وارانہ تصادم کا آغاز 1820ء میں ہوا، اور محرم  2020ء میں اس سلسلے کو جاری ہوئے دو سو سال پورے ہو چکے ہیں۔ برصغیر میں اسلام حضرت علی←  مزید پڑھیے

افغان طالبان کا ہزارہ سے برتاؤ(احمد رشید، خالد احمد)۔۔حمزہ ابراہیم

بامیان 1998: وسطی افغانستان میں ہزارہ قبیلے کے علاقے ہزارہ جات میں درجۂ حرارت نقطۂ انجماد سے گر چکا تھا۔ ہزارہ جات کا صرف دس فیصد رقبہ قابل کاشت ہے۔ اس سال گندم اور باجرے کی فصل اچھی نہیں ہوئی←  مزید پڑھیے

کوئٹہ اور افغانستان کے ہزارہ کون ہیں؟: تاریخ، نژاد اورمذہب(دوسرا،آخری حصّہ)۔۔۔حمزہ ابراہیم

جینیاتی ورثہ انسانی ارتقاء اور جینیات کا علم ہمیں یہ بتاتا ہے کہ تقریباً ایک لاکھ سال پہلے انسانوں کا ایک چھوٹا سا گروہ مشرقی افریقہ سے ہجرت کر کے مغربی ایشیاء میں آیا اور انکی اولاد اگلے ہزاروں سالوں←  مزید پڑھیے