حبیب شیخ کی تحاریر

آزاد نگاہیں۔۔۔حبیب شیخ

رشیدہ کو نقاب پہننے سے سخت نفرت تھی لیکن وہ اپنے شوہر عمران کے اصرار پر گھر سے باہر برقعہ اور نقاب کی پابندی کرتی تھی ۔ آج اچانک عمران نے رشیدہ کو بتایا کہ اسے نقاب سے منہ ڈھانپنے←  مزید پڑھیے

سوال بستی۔۔۔۔حبیب شیخ

کیا یہی سوال نامی بستی ہے؟ آ جاؤ آ جاؤ کیا تمہیں بھی نکال دیا ہے؟ ہاں، انہوں نے مجھے شہر بدر کر دیا ہے۔ یہاں کچھ شہر سے نکالے ہوئے باسی رہتے ہیں ۔ لیکن تم تو ابھی بالکل←  مزید پڑھیے

زخم سے محبت۔۔۔۔حبیب شیخ

گھر کا یہ اچھا ماحول دیکھ کر عظیم کبھی کبھی اپنے گھٹنے کو چوم لیتا ۔ اب سرجری میں صرف تین دن باقی تھے ۔ وہ سوچتا رہتا کہ اس کے لیے کیا بہتر تھا، ایک طرف سلمیٰ کی قربت←  مزید پڑھیے

کیا انسانی ذہن کو ارتقاء کی ضرورت ہے؟۔۔۔۔۔۔مبصّر: حبیب شیخ

میں نے اصلاحِ ذات کے بارے میں کچھ کتابیں پڑھی ہیں لیکن میرے نزدیک “A New Earth – Awakening to Your Life’s Purpose” اب تک کی بہترین کتابوں میں سے ایک ہے۔ مصنف Eckhart Tolle ایکھرٹ ٹولے کو دکھوں سے←  مزید پڑھیے

میں اس سال بھی ناکام رہا ۔۔۔۔۔حبیب شیخ

اس سال بھی ہمیشہ کی طرح میرا دھوم دھام سے استقبال کیا گیا ۔ مساجدکودلہنوں کی طرح سجایا گیا۔ گھروں اور دکانوں کو روشنیوں کی زینت سے سنوارا گیا ۔ ہر طرف لوگ ایک دوسرے کو مبارکباد دےرہےتھے ، ایک←  مزید پڑھیے

پنجرہ۔۔۔۔۔حبیب شیخ

1948 میں فلسطینیوں کے جبری انخلا ء کی یاد میں منائے جانے والے دن النكبة (15 مئی) کے نام دو دن سے قلقیلیہ میں کرفیو  نافذ تھا۔ عبدالعزیز نے دوسرے روز شام کو کلثوم اور دونوں بچّوں کے ساتھ کھانا←  مزید پڑھیے

درویشوں کا ڈیرہ۔۔۔مصنف۔ خالد سہیل ،رابعہ الرباء /تبصرہ حبیب شیخ

خط لکھنے کی روایت اگرچہ بہت قدیم ہے لیکن ا س کو اردو ادب میں شامل کرنے کی اہمیت مرزا غالب کے خطوط سے شروع ہوئی ہے۔ میں نے ثانوی اسکول میں غالب کے ادبی خطوط پڑھے تھے۔ اس کے←  مزید پڑھیے