مہمان تحریر کی تحاریر
مہمان تحریر
مہمان تحریر
وہ تحاریر جو ہمیں نا بھیجی جائیں مگر اچھی ہوں، مہمان تحریر کے طور پہ لگائی جاتی ہیں

یہ سب جانتے ہیں ۔۔جاوید چوہدری

وہ لوگ بلخ کے رہنے والے تھے‘ گھوڑے پالتے تھے اور چراگاہوں کے ساتھ ساتھ چلتے رہتے تھے‘ سردار کا نام ارطغرل تھا‘ قبیلہ بہار کے موسم میں شام کی طرف سفر کر رہا تھا‘ انگورہ ( انقرا) کے قریب←  مزید پڑھیے

چین کا ہیرو ڈاکٹر۔۔نصرت جاوید

منگل کے روز سوشل میڈیا پر جمائمہ خان کی ایک ٹویٹ نے بہت رونق لگائی ہوئی تھی۔ اسے بے تحاشہ لوگوں نے ری ٹویٹ کیا۔ اس کے حوالے سے جو بحث چھڑی وہ کئی حوالوں سے ہمارے معاشرے پر چھائی←  مزید پڑھیے

کینسر کا ’’شرطیہ علاج‘‘۔۔یاسر پیرزادہ

’یقیناً خدا کے نزدیک بدترین قسم کے جانور وہ بہرے گونگے لوگ ہیں جو عقل سے کام نہیں لیتے‘‘۔ (الانفال، آیت 22) کوئی تعویذ دھاگوں سے بیماریوں کے علاج کا دعویٰ کر رہا ہے، کوئی گٹھلیوں کے سفوف سے دل←  مزید پڑھیے

آئی ایم ایف کے تحفظات برقرار؟۔۔نصرت جاوید

عمران حکومت کےIMFکے ساتھ ہوئے بندوبست کے مطابق پاکستان کو اس ادارے سے 45کروڑ20لاکھ ڈالر کی قسط درکار ہے۔اس رقم کو ادا کرنے سے قبل آئی ایم ایف کا ایک وفد چند روز قبل پاکستان آیا تھا۔اسلام آباد میں اپنے←  مزید پڑھیے

مسلم حکومتوں میں رشوت لینے /دینے کی روایت۔۔۔(قسط اوّل)تحریر: محمدشعبان/ ترجمہ: نایاب حسن

یحیٰ بن میمون حضرمی، جو 723ء میں مصر کے قاضی مقررکیے گئے، ان کے منشیوں کاحال یہ تھاکہ بغیررشوت کے ایک فیصلہ بھی لکھنے کوآمادہ نہیں ہوتے تھے، قاضی صاحب کواس بارے میں کئی بارخبردارکیاگیا، مگرانھوں نے کوئی توجہ نہ←  مزید پڑھیے

بلاعنوان۔۔حسن نثار

اب تو لکھتے ہوئے بھی شرم آتی ہے لیکن کیا کریں ہمارا کام ہی ایسا ہے کہ ذاتی پسند ناپسند کو بالائے طاق رکھتے ہوئے ان خبروں کو بھی موضوع بنائیں جو قارئین کے علم یا معلومات ہی نہیں، آگہی←  مزید پڑھیے

گرے لسٹ میں شامل رہنے کا دھڑکا۔۔نصرت جاوید

پیر 17فروری 2020سے جو ہفتہ شروع ہوا ہے وہ کئی اعتبار سے ’’تاریخ ساز‘‘‘ شمار ہوسکتا ہے۔ اس کے دوران جو معاملات طے ہوں گے ان کے اثرات دور رس ہوں گے۔کاش ان کی اہمیت کو ہم صحافی کماحقہ اجاگر←  مزید پڑھیے

مستقل مکان برابر ہوتے ہیں۔۔جاوید چوہدری

میری ڈاکٹر امجد ثاقب سے پہلی ملاقات 1999ءمیں ہوئی تھی‘ یہ اس وقت وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کے پرسنل سیکرٹری ہوتے تھے‘ میں میاں صاحب سے ملاقات کے لیے وزیراعظم ہاﺅس گیا‘ ڈاکٹر امجد ثاقب نے مجھ ریسیو کیا←  مزید پڑھیے

شکریہ جناب انتونیو۔۔حامد میر

یہ کہانی 1960ء سے شروع ہوتی ہے۔ اس کہانی میں 1993ء میں ایک خطرناک موڑ آیا۔ 2011ء میں اس کہانی نے ایک خوبصورت موڑ لیا اور 2020ء میں یہ کہانی دنیا بھر میں پاکستان کی عزت و وقار میں اضافہ←  مزید پڑھیے

’’بجلی کے نرخ ‘‘ حکومت اور آئی ایم ایف کے مابین رسہ کشی ۔نصرت جاوید

مارچ 2020کے ختم ہونے تک پاکستان کو آئی ایم ایف سے 45کروڑ 20لاکھ ڈالر درکار ہیں۔اپنے تئیں یہ بہت بڑی رقم نہیں ہے۔ یہ مگر 6ارب ڈالر پر مشتمل اس مجموعی رقم کی ایک قسط ہے جو عالمی معیشت کے←  مزید پڑھیے

جنہیں ترک اپنا ہیرو مانتے ہیں ،وہ عبد الرحمن پشاوری کون ہیں؟۔۔۔:ڈاکٹر سہیل خان

عبدالرحمان پشاوری 6 دسمبر 1886ء کو پشاور میں پیدا ہوئے۔ پشاور کے میونسپل بورڈ سکول سے ساتویں کا امتحان پاس کیا۔ کرکٹ اور فٹ بال کے مایہ ناز کھلاڑی تھے۔ چھ گیندوں پر چھ کھلاڑی آؤٹ کرنے کا ان کا←  مزید پڑھیے

ثابت کرو کہ تم وجود رکھتے ہو۔۔یاسر پیرزادہ

فلسفے کا استاد کمرے میں داخل ہوا اور اپنے شاگردوں سے بولا ’’آج میرا آخری لیکچر ہے، آج میں تم سے ایک سوال پوچھوں گا، اِس سوال کے جواب سے مجھے اندازہ ہوگا کہ میں نے جو فلسفہ پڑھایا وہ←  مزید پڑھیے

نہ آر نہ پار نہ بیچ منجدھار؟۔۔حسن نثار

آج کا عنوان ہی زندگی کی سب سے بڑی اذیت ہے اور امتحان بھی۔ انسان نہ ڈوبتا ہو نہ تیرتا ہو، نہ جیتا ہو نہ مرتا ہو، نہ فارغ ہو نہ کچھ کرتا ہو، نہ مایوس ہو نہ کوئی امید←  مزید پڑھیے

توبہ کا وقت مخصوص ہے۔۔جاوید چوہدری

میری سردار کامران کے ساتھ پہلی ملاقات مصر کے سفر کے دوران ہوئی‘ یہ شفیق عباسی کے ساتھ تھے‘ میں ہم خیال گروپ کو حضرت یوسف ؑ‘حضرت موسیٰ ؑ اور فرعون رعمیسس دوم کے بارے میں بتا رہا تھا‘ سردار←  مزید پڑھیے

حکومتی ’’رولز آف بزنس‘‘ کی زد میں آئے یوٹیوبز۔۔نصرت جاوید

بدھ کی رات سے اکیلا بیٹھا دیوانوں کی طرح ہنسے چلاجارہا ہوں۔بہت دنوں سے میرے چند بہت ہی پُرخلوص چاہنے والے اصرار کئے چلے جارہے تھے کہ دیگر کئی صحافیوں کی طرح میں بھی اپنا یوٹیوب چینل شروع کردوں۔میں بڑھاپے←  مزید پڑھیے

کس میں جرات ہے۔۔جاوید چوہدری

میرے بچپن کی بات ہے‘ ہماری گلی میں ایک دکان دار ہوتا تھا‘ اس نے زندگی میں بے شمار کام کیے لیکن کوئی بھی کام نہ چل سکا‘ وہ ایک مکمل فیل بزنس مین تھا مگر پھراس نے کریانے کی←  مزید پڑھیے

’’توہین عمران‘‘ کا ’’توہین بلاول‘‘ سے بدلہ ۔۔نصرت جاوید

بنا کسی بحث کے مراد سعید صاحب کی کہی تمام باتیں مان لیتے ہیں۔منگل کے روز قومی اسمبلی میں ایک دھواں دھار خطاب کے ذریعے جواں سال وزیر مواصلات نے ہمیں یہ بتایا کہ پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین درحقیقت←  مزید پڑھیے

ہمیں صرف آنسو نہیں بہانے۔۔حامد میر

وقت گزرنے کا پتا ہی نہیں چلا۔ عاصمہ جہانگیر کو یہ دنیا چھوڑے دو سال گزر بھی گئے۔ گیارہ فروری کو اُن کی دوسری برسی پر ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان نے اسلام آباد میں عاصمہ جہانگیر میموریل لیکچر کا←  مزید پڑھیے

پھر کچھ کالے قول۔۔حسن نثار

کالے قول اسی لئے سنبھال رکھے ہیں کہ جب باقی ہر شے سے بے زاری اور اکتاہٹ عروج پر پہنچ جائے تو خاکسار خاموشی سے کالے قولوں کی ’’پناہ گاہ‘‘ یا ’’گناہ گاہ‘‘ میں عافیت تلاش کرے۔ ٭ …..مہنگائی مصنوعی←  مزید پڑھیے

کتاب میلے تو ہیں، پڑھنے والے کہاں ہیں؟۔۔یاسر پیرزادہ

چند دن پہلے لاہور میں کتاب میلہ ہوا، ہم بھی دوستوں کے ہمراہ وہاں گئے، گاڑی لگانے کی جگہ نہیں تھی، کھوے سے کھوا چھل رہا تھا، لوگ بال بچوں سمیت پہنچے ہوئے تھے، دھڑا دھڑ کتابیں خرید رہے تھے۔←  مزید پڑھیے