Aslam Awan کی تحاریر
Aslam Awan
Aslam Awan
اس وقت یبوروچیف دنیا نیوز ہوں قبل ازیں پندرہ سال تک مشرق کا بیوروچیف اور آرٹیکل رائٹر رہاں ہوں،سترہ سال سے تکبیر میں مستقل رپوٹ لکھتا ہوں اور07 اکتوبر 2001 سے بالعموم اور 16مارچ 2003 سے بالخصوص جنگ دہشتگردی کو براہ راست کور کر رہاں ہوں،تہذیب و ثقافت اور تاریخ و فلسفہ دلچسپی کے موضوعات ہیں،

کشمیر کا مستقبل ثالثی سے جڑ گیا ہے؟۔۔۔۔۔اسلم اعوان

اس وقت مملکت کی مشرقی و مغربی سرحدوں پہ کئی دہائیوں سے پنپنے والے جنوبی ایشیا کے دو دائمی تنازعات،کشمیر ایشو اورافغان تنازعہ،بظاہر تحلیل ہوتے نظر آ رہے ہیں اورہمارے خیال میں فریقین اب ان دونوں تنازعات کو بنیادی وجوہ←  مزید پڑھیے

عالمی سیاست کے بدلتے افق اور ہمارا قومی رویہ۔۔۔اسلم اعوان

انڈین پارلیمنٹ کی طرف سے کشمیر کی خصوصی حیثیت کا تحفظ کرنے والے آئین کے آرٹیکل 370 اور35A کو ختم کر کے لداخ کو یونین کے تابع اور وادی کی خود مختیار پوزیشن ختم کرنے کا معاملہ اس خطہ میں←  مزید پڑھیے

افغان تنازعہ اور پاکستان کا مستقبل۔۔۔۔اسلم اعوان

وزیراعظم عمران خان کے امریکی انتظامیہ کے ساتھ اپنے تلخ تعلقات کی بحالی کےلئے مذاکرات اوردونوں مملکتوں کے مابین نیٹو فورسز کی افغانستان سے محفوظ واپسی پہ اتفاق رائے کے باوجود امر واقعہ میں کسی جوہری تبدیلی کے امکانات معدوم←  مزید پڑھیے

دو ٹوک۔۔۔اسلم اعوان

اس وقت،سابق آئی جی موٹروے پولیس ذوالفقار چیمہ کے کالموں پہ مشتمل کتاب”دوٹوک“میرے سامنے ہے،جس میں شامل،قومی اورسماجی مسائل پہ بے لاگ تبصروں اورسیاسی ایشوز پر ان کے بیباک خیالات کو پڑھ کے میرے احساسات کو نئی تازگی ملی ہے،انکی←  مزید پڑھیے

مزید کتنا اختیار چاہیے؟۔۔۔۔اسلم اعوان

ہمارے مہربان دوست،ہزارہ رینج کے آر پی او،محمد علی بابا خیل کا شمار خیبر پختون خوا پو لیس کے ایماندار اور فرض شناس افسران میں ہوتا ہے،وہ ذاتی طور پہ سماجی اقدار سے آشنا اورنہایت باوقار شخصیت کے مالک ہیں،بابا←  مزید پڑھیے

کون کُندن بن کے نکلے گا ؟۔۔۔۔اسلم اعوان

قانونی تادیب اور ریاستی ضوابط کی تمام تر جکڑبندیوں کے باوجود اپوزیشن کے کہنہ مشق سیاستدان بلآخر سیاسی درجہ حرارت کو اس سطح تک پہنچانے میں کامیاب ہو گئے،جہاں حکومتی اتھارٹی اپنی اثر پذیری کھو دیتی ہے،تیرہ جولائی کی عام←  مزید پڑھیے

پیپلزپارٹی کی سرگرانی۔۔۔۔اسلم اعوان

ان دنوں پیپلزپارٹی اپنے جواں سال چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کےلیے مختلف شہروں میں جلسوں کا انعقاد کر کے خیبرپختون خوا میں پارٹی کی نشاة ثانیہ میں مصروف دکھائی دیتی ہے،بلاول بھٹو کو چارسدہ کے بعد ڈیرہ اسماعیل خان کے←  مزید پڑھیے

تنازعات میں توسیع نہیں،توازن چاہیے۔۔۔۔اسلم اعوان

مولانا فضل الرحمٰن کی اے پی سی میں اختلافات کی خبروں کے بعد حکومت اگر اپوزیشن جماعتوں کے خلاف احتسابی کاروائیوں کو محدود کرکے چھوٹے گروپوں کو مینج کرلیتی تو سیاسی اضطراب میں کچھ کمی آ سکتی تھی مگر افسوس←  مزید پڑھیے

اے پی سی ناکام ہو گئی؟۔۔۔۔اسلم اعوان

اپوزیشن جماعتوں کی وہ آل پارٹیز کانفرنس بلآخر منعقد ہو گئی جس کے انعقاد کو مولانا فضل الرحمٰن حکومت گرانے کی تحریک کا نقطہ آغاز باور کراتے رہے لیکن عملاً یہ پیش رفت خود اپوزیشن کی ذہنی تقسیم کو نمایاں←  مزید پڑھیے

انتخابی کلچر کی شروعات۔۔۔۔۔اسلم اعوان

پچھلے کئی ہفتوں سے مرکزی دھارے کے میڈیا کی پوری توجہ قومی بجٹ سے جڑے مباحث اور پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کی جعلی بنک اکاونٹس کیس میں گرفتاری کے علاوہ اپوزیشن جماعتوں کی آل پارٹی کانفرنس کے←  مزید پڑھیے

زمانے کے انداز بدلے گئے۔۔۔۔اسلم اعوان

نواز لیگ کے قائد میاں نوازشریف اور دیگر رہنماؤں کی سزاؤں اور گرفتاریوں کے بعد پیپلزپارٹی کے چیئرمین آصف علی زرداری کی گرفتاری سے ظاہر ہوتا ہے کہ مسلم لیگ کے بعد اب پی پی پی بھی”مفاہمتی“سیاست کے حصار سے←  مزید پڑھیے

پاک افغان تعلقات کا پس منظر۔۔۔۔اسلم اعوان

پچھلے ستّر سالوں میں ہم برادر اسلامی ملک افغانستان کے ساتھ ابھرنے والی مہیب کشیدگی سے دامن چھڑا پائے نہ وقت کی آغوش میں پلتے تنازعات کو تحلیل کرنے میں کامیاب ہوئے،حالات کی جبریت دیکھیے کہ1947 میں نوآزاد مملکت پاکستان←  مزید پڑھیے

قومی تاریخ کا نیا موڑ۔۔۔اسلم اعوان

چند ماہ قبل مملکت کے بندوبستی نظام میں ضم کئے گئے قبائلی اضلاع پر خیبرپختون خوا کی صوبائی انتظامیہ ابھی اپنی گرفت مضبوط نہیں کر پائی تھی کہ دم توڑتی قبائلیت کی راکھ سے سماجی انصاف،انسانی حقوق اورجمہوری آزادیوں کےدلفریب←  مزید پڑھیے

عدم تحفط،عوامی ردعمل کو ہوا دینے لگا۔۔۔۔اسلم اعوان

گزشتہ ہفتہ کے دوران خیبر پختون خوا کی دو معصوم بچیوں کی  جنسی زیادتی کے بعد قتل کے دردناک واقعات کو اگرچہ معاشرے کے مجموعی اخلاقی زوال کے تناظر میں دیکھا جا رہا ہے لیکن فی الحقیقت ان انسانیت سوز←  مزید پڑھیے

وار ڈپلومیسی کے مضمرات۔۔۔۔اسلم اعوان

ایک ایسے  لمحے  میں جب پاکستان تاریخ کی طویل ترین افغان جنگ کی  دلدل سے نکلنے  کی کوشش کے علاوہ داخلی معاشی بحران پہ قابو پانے میں سرگرداں ہے،عین اسی وقت ایران،امریکہ کشیدگی کے نتیجہ میں شط العرب اور خلیج←  مزید پڑھیے

شناخت کا بحران،حقیقت یا مغالطہ؟۔۔۔اسلم اعوان

تجزیات آن لائن کے حالیہ سہ ماہی شمارہ میں شفیق منصور کا شناخت کے موضوع پہ طویل تحقیقی مقالہ،ہم کون ہیں؟ہماری شناخت کیا ہے؟نظر سے گزرا،جسمیں فاضل مضمون نگار نے شناخت کے بحران کو زیادہ گہرائی میں جا کے دیکھنے←  مزید پڑھیے

مسلم لیگ مزاحمت کی راہ پر؟۔۔۔اسلم اعوان

جیسے وزیراعظم عمران خان نے سول بیوروکریسی اور کابینہ میں بڑے پیمانے پہ ردّ و بدل کر کے معاشی بحران سے نمٹنے کی خاطر اپنی حکومتی ٹیم کی ازسرنو صف بندی کر لی، اسی طرح مسلم لیگ نواز نے بھی←  مزید پڑھیے

سیاسی استحکام ملتا کیوں نہیں؟۔۔۔اسلم اعوان

پچھلے دس سالوں کے دوران جس سرعت کے ساتھ معاشی بحران کے دوائر وسیع ہوئے،اسی تیزی سے سیاسی تنازعات کی لکیر بھی گہری ہوتی گئی،جسکی تلخیاں اب آخری حدّوں کو چھونے والی ہیں،بظاہر یوں لگتا ہے کہ رمضان کے مقدس←  مزید پڑھیے

صدارتی نظام۔۔مخالفت کیوں؟۔۔۔اسلم اعوان

ان دنوں پارلیمانی طرز حکومت کی بجائے ملک میں صدراتی نظام رائج کرنے کے حق میں آوازیں اٹھ رہی ہیں جن کے ردعمل میں صوبائیت کی حامی سیاسی لیڈر شپ کے علاوہ وہ اہل قلم بھی صدراتی طرز حکومت کو←  مزید پڑھیے

تنازعات میں توازن چاہیے۔۔۔اسلم اعوان

 انتخابی عمل کے پہلو بہ پہلو سیاسی جماعتوں اور مقتدرہ کے درمیان پروان چڑھنے والی نامطلوب کشمکش بائیس کروڑ آبادی کی حامل اور اٹیمی قوت سے لیس مملکت کو کسی بڑے سیاسی بحران کی طرف دھکیل سکتی ہے کیونکہ مذہبی←  مزید پڑھیے