Aslam Awan کی تحاریر
Aslam Awan
اس وقت یبوروچیف دنیا نیوز ہوں قبل ازیں پندرہ سال تک مشرق کا بیوروچیف اور آرٹیکل رائٹر رہاں ہوں،سترہ سال سے تکبیر میں مستقل رپوٹ لکھتا ہوں اور07 اکتوبر 2001 سے بالعموم اور 16مارچ 2003 سے بالخصوص جنگ دہشتگردی کو براہ راست کور کر رہاں ہوں،تہذیب و ثقافت اور تاریخ و فلسفہ دلچسپی کے موضوعات ہیں،

 ٹی ٹی پی سے امن معاہدہ ۔۔اسلم اعوان

جنگ دہشتگردی کی کوکھ سے پیدا ہونے والے مسلح گروہوں کی جارحیت کو کند کرنے کے لئے پاکستان کو افغان طالبان کی وساطت سے ٹی ٹی پی سے ویسا ہی امن معاہدہ کرنا پڑ رہا ہے جیسا فوجی انخلاءکو محفوظ←  مزید پڑھیے

نعت کا تعظیمی بیانیہ(2،آخری حصّہ)۔۔اسلم اعوان

اور یہی مشاہدات،محسوسات،تجربات اوراحساسات مجتمع ہو کر بلآخر علم کی صورت میں ڈھلتے گئے،یوں زندگی کے مقاصد کے لئے اس چیز کو کافی سمجھا گیا کہ ہم ان مشاہدات کو حقیقی مانیں جن کے متعلق مختلف لوگ ایک جیسی شہادت←  مزید پڑھیے

اردو نعت کا تعظیمی بیانیہ(1)۔۔اسلم اعوان

ہمارے ہاں اردو شاعری اور ادب میں تنقید کا رجحان اگرچہ نیا نہیں لیکن اس میں تاحال وہ گہرائی اور وسعت پیدا نہیں ہو سکی جو مغربی محقیقن کے ہاں ملتی ہے بلکہ ابھی ہم علمی تنقیدکے بنیادی تقاضہ،غیرجانبداری،کواپنانے کی←  مزید پڑھیے

یوکرین جنگ نے یورپ کوتھکا دیا ؟۔۔اسلم اعوان

یور پ کے قلب میں واقع یوکرین کی جنگ چوتھے مہینے میں داخل ہو گئی،اگرچہ یورپی باشندے کیف کی حمایت میں بڑی حد تک متحد ہیں لیکن وہ اب اس جنگ کے معاشی نتائج کو برداشت کرنے بارے منقسم دکھائی←  مزید پڑھیے

سیاسی نظام کا زوال۔۔اسلم اعوان

چھ جون کو خیبر پختون خوا کے26 اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کی قیادت میں صوبہ بھر کی انتظامی مشینری نے ہڑتال کرکے نئی تاریخ رقم کر ڈالی،طرفہ تماشا دیکھئے کہ ڈپٹی کمشنرز کا احتجاج اسی گورنمنٹ کے خلاف تھا جس←  مزید پڑھیے

تعمیر و تخریب کی جدلیات۔۔اسلم اعوان

مسلم لیگ (ن)کے شہباز شریف کی قیادت میں اتحادی حکومت کو نہ صرف سابق وزیراعظم عمران خان کی طرف سے پُرتشدد لانگ مارچ اور دھرنوں کا بلکہ سنگین معاشی چیلنجز کا بھی سامنا ہے،پچھلے ایک ماہ میں روپے نے ڈالر←  مزید پڑھیے

جمہوری مینڈیٹ اور شخصی حاکمیت۔۔اسلم اعوان

سنہ دو ہزار چودہ کے لانگ مارچ اور پھر طویل دھرنا سے شروع ہونے والی وہ پولرآئزیشن ابھی تک تھمی نہیں،جس نے معاشی مشکلات کے دلدل میں اتارنے کے علاوہ مملکت کو ایسی ہنگامہ خیزی کے حوالے کیا جس کا←  مزید پڑھیے

رودادِ سیاست۔۔اسلم اعوان

اس وقت میرے زیرمطالعہ معروف صحافی نواز رضا کے مضامین پہ مشتمل”روداد سیاست“کی تین جلدیں ہیں،جن میں مصنف نے کم و بیش تین دہائیوں پہ محیط قومی سیاست کے نشیب و فراز کا احاطہ کیا،یہ اُن روایتی کالموں یا تجزیات←  مزید پڑھیے

مسلم دنیا فلسطینیوں کو بھلا چکی ہے؟(2،آخری حصّہ)۔۔اسلم اعوان

14 مئی 2022کو اُس تنازعہِ فلسطین کوچوہتر سال بیت گئے،جس میں ہماری تین نسلیں کھپ گئیں،جن لوگوں کی آنکھوں نے اسرائیل کی تخلیق کے مظاہر کو دیکھا وہ اسی دَرد کو سینیوں میں لیکر فانی دنیا سے کوچ کر گئے،فلسطینی←  مزید پڑھیے

مسلم دنیا فلسطینیوں کو بُھلا کی ہے(1)۔۔اسلم اعوان

11 مئی کو مقبوضہ مغربی کنارے کے شہر جنین میں الجزیرہ کی رپورٹر شیرین ابو اکلیح کو اسرائیلی فورسز نے گولی مار کے اس وقت شہیدکر دیا،جب وہ پریس کے نشان والی حفاظتی واسکٹ پہنے دیگر صحافیوں کے ہمراہ مظاہرے←  مزید پڑھیے

آئین قومی وحدت کا محورہے؟۔۔اسلم اعوان

قومی سیاست میں بڑھتی ہوئی کشیدگی نے جس قسم کی ذہنی تفریق کی فضا مہیا کی،اس کا مدوا کسی ادارے یا کسی ایک جماعت کے بس کا روگ نہیں،اس مقصد کو پانے کے لئے تمام سیاسی جماعتوں اور اداروں کی←  مزید پڑھیے

دائروں کا سفر۔۔اسلم اعوان

یورپ کی طرح ہماری قومی سیاست بھی نظریات اور اخلاقی نصب العین کے جھمیلوں سے نکل کر پھر انہی نسلی،لسانی اور گروہی تعصابات کے دائروں میں سمٹ رہی ہے جہاں نفرتوں کی دھار کے سوا کوئی اور چیز کارگر ثابت←  مزید پڑھیے

تخلیق کاروں کے مسائل/تحریر-اسلم اعوان

اقتدار کی راہداریوں سے نکلتے ہی عمران خان نے مخالفین کے ساتھ سیاسی جنگ کو شعلہ فگار بنا کے کسی حد تک اپنے جذبات کی تسکین تو حاصل کر لی ہو گی لیکن یہی کشمکش خود اسے اور ان کے←  مزید پڑھیے

ڈیجیٹل میڈیا اور بدلتے سماجی حقائق۔۔اسلم اعوان

نئی حکومت نے پی ٹی آئی گورنمنٹ کے قائم کردہ اس ڈیجیٹل میڈیا ونگ (DMW) کو بند کر دیا جس کے ذریعے سیاسی مخالفین خاص کر تنقید کرنے والے صحافیوں کی ٹرولنگ کی جاتی تھی،ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان نے←  مزید پڑھیے

جنوبی ایشیا پہ امریکی گرفت کمزور ہو گئی؟۔۔اسلم اعوان

افغانستان سے فوجی انخلاءکے بعد عمران خان کی حکومت کا خاتمہ بھی جنوبی ایشیا میں امریکی اثرات کو کم کرنے کا ذریعہ بنے گا ؟ بادی النظری میں لبرلرل ماڈریٹ اور مغرب سے مضبوط رشتہ داریوں میں بندھے ہونے کی←  مزید پڑھیے

سیاسی بحران کا اختتام؟۔۔اسلم اعوان

پانچ سالوں پہ محیط طویل کشمکش کے بعد بلآخر ملکی مقتدرہ اور سیاسی قوتیں اس بحران پہ قابو پانے میں کامیاب ہو گئیں جسکی ابتداءپانامہ کیس کے ذریعے میاں نوازشریف کو وزرات اعظمی سے ہٹانے اور بعدازاں منی لانڈرنگ کے←  مزید پڑھیے

کیا سے کیا ہو گیا،دیکھتے دیکھتے۔۔اسلم اعوان

پچھلی چار دہائیوں میں قومی سیاست میں جس نوع کی غیر معمولی تبدیلیاں رونما ہوئیں،اس نے سیاست کے خیر و شر میں تفریق کے احساس کو کنفیوژ کرکے عام لوگوں کےلئے پالیٹیکس کی ہرقدرکو بیکار اورقومی مفاد کے ہر تصورکو←  مزید پڑھیے

جمہوریت یا نراجیت؟۔۔اسلم اعوان

سپریم کورٹ نے چھ دن کی سماعت کے بعد بلآخر قومی اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر کی متنازع رولنگ کو آئین سے متصادم قراردیکر منسوخ اور وزیراعظم عمران خان کے اسمبلی تحلیل کرکے قبل از وقت انتخابات کرانے کے اقدام کو←  مزید پڑھیے

روس یوکرین مذاکرات۔۔اسلم اعوان

روس اور یوکرین کے مابین ترکی کے شہر استنبول میں جاری مذاکرات پر بدستور بے یقینی کے سائے منڈلا رہے ہیں اس لئے بات چیت کے مثبت نتائج کی توقع دن بدن کم ہوتی جائے گی،کم و بیش تین گھنٹوں←  مزید پڑھیے

تہذیب و ثقافت کی بوقلیمونی(2)۔۔اسلم اعوان

اگر ہم تہذیب کے سلبی پہلو پہ نظر ڈالیں تو اس وقت جدید تہذیب کا وسعت پذیر ارتقاءاس کرہ ارض کی کئی گداز ثقافتوں کو نگل چکا ہے خاصکر یوروپ میں مادی خوشحالی اور سائنس و ٹیکنالوجی کے باعث آسائشوں←  مزید پڑھیے