آصف محمود کی تحاریر
Avatar
آصف محمود
حق کی تلاش میں سرگرداں صحافی

نظریاتی بحث فکری عیاشی کے سوا کچھ نہیں۔۔آصف محمود

نظریاتی بحثیں اب دنیا میں غیر متعلق ہوتی جا رہی ہیں۔ہمارے جیسے فکری اور معاشی طور پر پسماندہ معاشروں میں مگر آج بھی یہ کاروبار عروج پر ہے۔ حقیقت مگر یہ ہے کہ آج کا نوجوان جس چاند ماری کو←  مزید پڑھیے

بچوں سے مکالمہ کیجیے۔۔آصف محمود

میں تو ایشیاء کو سبز کرنے کے دعووں سے بھی پناہ مانگتا ہوں کہ وہ مذہب کی آڑ میں فسطائیت مسلط کرنے کی کوشش ہے تو میں اس ترانے پر کیسے سر دھن سکتا ہوں کہ جب لال لال لہرائے←  مزید پڑھیے

خریدا ہوا مال واپس یا تبدیل نہ ہو گا؟۔۔۔آصف محمود

آپ ایشیاء کو سرخ یا سبز کرنے کی عظیم جدوجہد سے فارغ ہو چکے ہوں تو آئیے چند سوالات پر غور فرما لیں۔ بازاروں میں تو آپ کا اکثر جانا ہوتا ہے۔آپ کوئی چیز خریدنے جاتے ہیں ، رسید کے←  مزید پڑھیے

بائیس سالہ جدوجہد۔۔آصف محمود

تحریک انصاف کے بیانیے کا بنیادی نکتہ یہ ہے کہ ہم نے بائیس سال جدوجہد کی تب جا کر گوہر مقصود، یہ اقتدار، ہمارے ہاتھ آیا۔سوال یہ ہے اس دعوے کی حقیقت کیا ہے۔کابینہ سے آغاز کر تے ہیں ،←  مزید پڑھیے

مشرق وسطی کے خطرناک رجحانات ۔ہماری دہلیز پر/آصف محمود

مشرق وسطی کی سیاست کا آزار پاکستان کی دہلیز پر دستک دے رہا ہے ، یہ فیصلہ اب ہم نے کرنا ہے کواڑ مقفل کر لینے ہیں یا دروازے وا کر کے اس آزار کو گلے لگانا ہے۔ سوال یہ←  مزید پڑھیے

کیا ہم بھی ’ ’یہودی سازش‘ ‘کر سکتے ہیں؟۔۔۔آصف محمود

گاہے یوں محسوس ہوتا ہے وطن عزیز کے تمام نیم خواندہ محققین کرام نے ’’ یہودی سازشوں‘‘ پر پی ایچ ڈی کر رکھی ہے اور اب ان کی باقی ماندہ زندگی کا مقصد یہی ہے کہ اس عظیم تحقیق کی←  مزید پڑھیے

آزادی مارچ ۔۔۔کیا ہونے والا ہے؟/آصف محمود

مولانا فضل الرحمن کا آزادی مارچ اسلام آباد میں اتر چکا ۔ سوال یہ ہے اب آ گے کیا ہونے والا ہے؟ اس سول پر بات کرنے سے پہلے ایک وضاحت ضروری ہے کہ میرے پاس کبھی بھی ’’ اندر←  مزید پڑھیے

مولانا آ رہے ہیں۔۔۔آصف محمود

اٹھتی جوانیوں کے دن تھے جب نعرہ گونج رہا تھا: ظالمو! قاضی آ رہا ہے۔ طنطنے اور دبدبے والی وہ جماعت اسلامی تو ’’ صاحب فراش‘‘ ہو کر بستر سے جا لگی ہے اور اب اس کے ’’ غریب محترم‘‘←  مزید پڑھیے

آزادی مارچ ۔۔۔۔۔ایک سماجی مطالعہ/آصف محمود

آزادی مارچ اس وقت ہماری سیاست کا عنوان بن چکا ہے ۔ اس پر بہت کچھ لکھا جا چکا اور بہت آنے والے دنوں میں لکھا جائے گا۔ تاہم یہ معاملہ محض سیاسی نہیں ، یہ ایک سماجی معاملہ بھی←  مزید پڑھیے

بڈھے بڈھے جرنیل اور کم سن مولانا۔۔۔آصف محمود

ننھے منے مولانا بڈھے بڈھے جرنیلوں پر برس پڑے تو نوح ناروی یاد آئے کہ ’’ ابھی کم سن ہیں ُ‘‘ بگڑ گئے تو کیا ہوا، عمر ہی ایسی ہے۔ لیکن گنجینہِ معنی کا طلسم کھلا تو معلوم ہوا نشانے←  مزید پڑھیے

ہمارا فریڈم فلوٹیلا کہاں ہے؟۔۔۔آصف محمود

صبح نیند سے جاگا تو سامنے رکھے ’ ماوی مرمرا‘ کے ماڈل پر نظر پڑی۔ ماوی مرمرا فریڈم فلوٹیلا ترکی کے اس قافلے کا مسافر بردار بحری جہاز تھا جو غزہ کے محاصرے کو توڑتے ہوئے وہاں محصورین تک ادویات←  مزید پڑھیے

کیا انسانی حقوق کونسل میں قرارداد پیش کرنا ضروری تھا؟۔۔۔۔آصف محمود

اہلِ دانش خفا ہیں کہ حکومت اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل میں کشمیر سے متعلق قرارداد کیوں نہ لا سکی اور میں یہ سوچ رہا ہوں اس بے معنی مشق میں اپنی توانائی ضائع ہی کیوں کی جاتی؟ کہا←  مزید پڑھیے

ٹرمپ مودی اور کشمیر۔۔۔۔مایوسی کس بات کی؟/آصف محمود

ٹرمپ نے مودی کے پلڑے میں وزن ڈال دیا ہے تو حیرت کیسی؟ سینہ کوبی کاہے کی اور مایوسی کس بات کی؟ کیا تحریک آزادی کشمیر عزت مآب ڈونلڈ ٹرمپ کی آشیر باد سے مشروط تھی اور سدھن قبیلے کے←  مزید پڑھیے

عبایا۔۔چند گزارشات۔۔۔۔۔آصف محمود

چند سال پہلے کی بات ہے مین ایک ٹی وی چینل کے پروگرام میں مدعو تھا ۔ وہاں میرے ساتھ ’’ سول سوسائٹی ‘‘ کی نمائندہ ایک خاتون اور پاکستان ہندو کونسل کے چیئر مین ڈاکٹر رمیش کمار بھی مدعو←  مزید پڑھیے

نواز شریف ڈیل نہیں کریں گے؟۔۔۔آصف محمود

حیرت ہوئی یہ رائے ونڈ کے میاں محمد نواز شریف صاحب کا ذکر ہو رہا ہے یا اسد الصحرا، عمر مختار کی عزیمت کا بیان ہے ۔ جناب سردار خان نیازی نے سادہ سا ایک سوال پوچھا تھا، جناب راجہ←  مزید پڑھیے

شاہ محمود قریشی کیا کہنا چاہتے ہیں؟۔۔۔۔آصف محمود

شاہ محمود قریشی صاحب کا غیر معمولی بیان میرے سامنے رکھا ہے اور میں اسے سمجھنے کی کوشش کر رہا ہوں۔ آپ بھی اس مشق کا حصہ بن سکتے ہیں۔ یہ ذہن میں رکھیے یہ مراد سعید یا شیخ رشید←  مزید پڑھیے

نیا ہندوستان۔۔۔آصف محمود

مودی نے نیا ہندوستان بنا دیا ہے ۔ یوں سمجھیے پورے بھارت کو آتش فشاں پر لا کھڑا کیا ہے ۔ عالم اسباب کی نفی نہیں کی جا سکتی لیکن انسانی مشاہدہ بتاتا ہے کہ یہ بھی خدا کی سنت←  مزید پڑھیے

کشمیر ۔۔ کیا ہم امکانی حل کی طرف بڑھ رہے ہیں؟۔آصف محمود

بھارت نے جو کرنا تھا کر دیا ۔ سوال یہ ہے اب ہمارے پاس کیا آپشنز ہیں؟ کشمیر کے مسئلے پر ، جذباتی اعتبار سے میں بھی وہیں کھڑا ہوں جہاں ایک عام پاکستانی کھڑا ہے۔میں مسئلہ کشمیر کے مثالی←  مزید پڑھیے

نوٹرے ڈیم یونیورسٹی کا ’ مدرسہ ڈسکورسز‘۔۔۔۔آصف محمود

مدرسہ ڈسکورسز کے نام پر جاری فکری مشقِ ستم کا حاصل ایک بنیادی سوال ہے۔ سوال یہ ہے کہ ہمارے تہذیبی اداروں کی فکری تشکیل نو، کیا اب نوٹرے ڈیم یونیورسٹی کی سرپرستی میں ہو گی؟ وہ یونیورسٹی جس کا←  مزید پڑھیے

کیا سماجیات کو نصاب کا حصہ بنایا جا سکتا ہے؟۔۔۔۔آصف محمود

نتھیا گلی کے نواح میں ایک گوشہ عافیت میں صبح اتر نے کو ہے۔ کووں کی کائیں کائیں اور چڑیوں کی چہچہاہٹ نے جگا دیا ہے۔صبح کے پانچ بجے ہیں اور پرندوں کی موسیقی سے ماحول گویا مہک رہا ہے۔بچپن←  مزید پڑھیے