Asangani Mushtaq Rafeeqi کی تحاریر

اس سے پہلے کہ تمہارا وقت گزر جائے۔۔۔اسانغنی مشتاق رفیقیؔ

رک کیوں گئے؟ چلتے کیوں نہیں؟ تمہارے پیروں کی وہ تیزی کیا ہوئی؟ کیا تمہارے قویٰ سچ  کمزور ہوگئے یا تم پر سستی غالب آگئی؟ تمہاری  چاپ کی وہ دھمک جس کے تصور سے زمین آج بھی کانپ جاتی ہے←  مزید پڑھیے

لوگوں میں بڑھتی ہوئی بے یقینی اور ہمارا فرض ِ منصبی۔۔۔اسانغنی مشتاق احمد رفیقیؔ

دنیا جس تیزی سے ترقی کی طرف بڑھ رہی ہے ،اسی تیزی سے اپنا اعتبار بھی کھوتی جارہی ہے۔ ہر چیز پر بے یقینی کے بادل گہرے ہوتے جارہے ہیں۔ انسان اپنی زندگی کو پُر کیف بنانے کے لئے آرام←  مزید پڑھیے