عامر عثمان عادل کی تحاریر

رب کا قرآن فریادی ہے ۔۔۔عامر عثمان عادل

نفسا نفسی کے اس دور میں آ جا کے رمضان کریم ہی وہ مہینہ ہے کہ مجھ جیسے گنہگار بڑے اہتمام سے تلاوت قرآن کو معمول بنانے کی کوشش کرتے ہیں۔ دو دن پہلے ایک مسجد میں نماز ظہر کی←  مزید پڑھیے

یہ دنیا تمہارے رہنے کے قابل نہیں ہے فرشتہ ! ہاں میری بچی۔۔۔۔عامر عثمان عادل

اچھا ہوا جو تو بھی ہم سے روٹھ گئی انسانوں کی دنیا فرشتوں کے رہنے کے قابل ہی کب ہے۔ عین وقت افطار طرح طرح کی نعمتوں سے مزین دسترخوان سامنے پڑا ہے۔۔۔ ذرا تصور کیجیے اس بدقسمت گھرانے کا←  مزید پڑھیے

آسماں تیری لحد پہ شبنم افشانی کرے ۔۔۔عامر عثمان عادل

ایک نظر اس جوان رعنا کو تو دیکھیے نظر ہے کہ ٹھہرتی ہی نہیں اس کے چہرے پہ سرخ و سپید رنگت لبوں پہ پھیلی مسکان جیسے کوئی  شہزادہ ۔۔ قاضیاں کی بھٹی فیملی جو آج کل کریم پورہ لالہ←  مزید پڑھیے

الوداع اسامہ۔۔۔۔عامر عثمان عادل

کل اسی لمحے تم ایک المناک حادثے کا شکار ہو کر ہم سے بہت دور چلے گئے۔۔ اور آج تمہارے بابا نے اپنے ہاتھوں اپنے راج دلارے کی پیشانی پر بوسہ دے کر ہمیشہ ہمیشہ کیلئے الوداع کہہ دیا ۔←  مزید پڑھیے

دتہ ڈکیت پارلیمانی پارٹی اور وزیر اعلی پنجاب ۔۔۔عامر عثمان عادل

کچھ عرصہ قبل پنجاب اور آزادکشمیر میں دتے ڈکیت کی دہشت چھائی   ہوئی تھی، ظالم اتنا نڈر تھا جہاں ڈاکہ ڈالتا گھنٹوں کے حساب سے وقت گزارتا ،گھر والوں کو محبوس بنا کر فرمائشی کھانے بنوا کر کھاتا لیکن چھلاوے←  مزید پڑھیے

پارلیمانی پارٹی کا اجلاس اور دم توڑتا استحقاق۔۔۔۔عامر عثمان عادل

پارلیمانی پارٹی کا اجلاس کسی بھی سیاسی جماعت کیلئے بہت اہمیت کا حامل ہوا کرتا ہے جس میں اسمبلی کے منتخب نمائندے اور قیادت مل بیٹھ کر رواں اجلاس کے ایجنڈے یا کسی بھی اہم ایشو پر اتفاق رائے کا←  مزید پڑھیے

افطاری کے بعد کے مناظر۔۔۔۔عامر عثمان عادل

گزشتہ چند  برسوں سے اجتماعی افطاریوں کا رحجان زور پکڑ گیا ہے شہروں میں افرادی اور اجتماعی طور پر کچھ مخیر حضرات اور رفاعی ادارے افطار دستر خوان سجاتے ہیں جو ایک خوش آئند قدم ہے جس سے راہگیروں مسافروں←  مزید پڑھیے

نسیم پٹھانی بنام سرکار۔۔۔عامر عثمان عادل

آج فیس بک پر کھاریاں کی مشہور ہستی منشیات فروشی کا ایک بڑا نام نسیم عرف کبی پٹھانی کی گرفتاری کی خبر دیکھی۔ مزے کی بات یہ تھی کہ پولیس نے اسے رنگے ہاتھوں گرفتار کیا۔ نسیم کی تصاویر کے←  مزید پڑھیے

کہتا ہوں سچ کہ جھوٹ کی عادت نہیں مجھے۔۔۔عامر عثمان عادل

بہت سال پہلے کی بات ہے زمیندار کالج گجرات سے فارغ التحصیل ہوئے کچھ ہی عرصہ گزرا تھا کوٹلہ ارب علی خان میں قائد کیمبرج سکول کے نام سے تعلیمی ادارے کی بنیاد رکھی اور یوں عملی زندگی کا آغاز←  مزید پڑھیے

شعلہ سا لپک جا ئے ہے آواز تو دیکھو۔۔عامر عثمان عادل

زباں دل کی رفیق ہو تو ادا ہونے والا ایک ایک حرف سچ کی گواہی لئے سیدھا مخاطب کے دل میں اتر جاتا ہے۔۔ فوجی وردی میں ملبوس چہرے پہ بلا کا اعتماد لئے انتہائی  باوقار انداز میں آپ نے←  مزید پڑھیے

کچھ علاج اس کا بھی اے چارہ گراں ہے کہ نہیں ۔۔۔۔عامر عثما ن عادل

میڈیا کا جن بوتل سے آزاد کیا ہوا ریٹنگ کی دوڑ میں تمام چینلز ایک دوسرے پہ سبقت لے جانے کی خاطر تمام اخلاقی حدیں پھلانگ چکے ہیں ٹاک شوز کے نام پر جس طرح عدم برداشت نفرت اور طعن←  مزید پڑھیے

یوں نہ جھانکو غریب کے دل میں۔۔۔۔عامر عثمان عادل

آج صبح حسب معمول سکول اپنے دفتر میں مصروف کار تھا کہ آیا جی میرے پاس آئیں کچھ دیر خاموش کھڑے رہنے کے بعد جھجکتے ہوئے گویا ہوئیں سر جی میرے بیٹے کا سرٹیفیکٹ دے دیں ۔میں چونک اٹھا اور←  مزید پڑھیے

نسل نو سے مکالمہ ۔۔۔عامر عثمان عادل

سکول میں ہر سال پراکٹرز کا انتخاب مکمل طور پر میرٹ پر ہوتا ہے جس کے لئے طلبہ و طالبات کو تحریری امتحان اور انٹرویو کے مراحل سے گزرنا ہوتا ہے۔ کلاس سوم سے میٹرک تک کے طلبہ و طالبات←  مزید پڑھیے

ہم مر کیوں نہیں جاتے ۔۔۔عامر عثمان عادل

بادامی باغ کے رہائشی کا نومولود بچہ اللہ کو پیارا ہو گیا ،قل سے فارغ ہوتے ہی غم زدہ باپ نے قبرستان کا رخ کیا کہ قبر پہ فاتحہ پڑھ آئے تو دکھی دل کو کچھ قرار آئے وہاں پہنچا←  مزید پڑھیے

تم قتل کرو ہو کہ کرامات کرو ہو ۔۔۔عامر عثمان عادل

ہر سو بگاڑ سا بگاڑ ہے کسی جانب سے کوئی  خیر کا سندیسہ نہیں آتا مہنگائی بد امنی لاقانونیت کا دور دورہ ہے اب تو اخبار پڑھنے کو بھی دل نہیں مانتا وہی سیاست کے جھمیلے سیاستدانوں کی ایک دوسرے←  مزید پڑھیے

رونے والوں سے کہو ان کا بھی رونا رو لیں۔۔عامر عثمان عادل

کچھ دن پہلے کھاریاں میں جی ٹی روڈ کنارے دو افراد کو قتل اور راہگیروں کو زخمی کر کے فرار ہونے والے پولیس کے نرغے میں آ گئے اور پھر جان سے گئے۔ پتہ چلا کہ یہ تینوں افراد ضلع←  مزید پڑھیے

ایک اور پولیس مقابلہ ۔۔۔۔عامر عثمان عادل

ضلع گجرات خونی دشمنیوں کے حوالے سے خصوصی شہرت رکھتا ہے کچھ ہی سال پہلے یہ آئے روز کا معمول تھا کہ کسی چوک چوراہے یا عین کچہری کے بیچوں بیچ گھات لگائے مسلح افراد اپنے مخالفین پر جھپٹ پڑتے←  مزید پڑھیے

ماورائے عدالت قتل ۔۔۔عامر عثمان عادل

میرے کچھ دوستوں کا سوال تھا کہ کیا آپ بھی ماورائے عدالت قتل کی حمایت کرنے لگے۔۔ تو عرض ہے کہ کبھی بھی میرے دل نے اس کے حق میں گواہی نہیں دی جب بھی ہتھکڑیوں میں جکڑے خون آلود←  مزید پڑھیے

دھرتی ماں کی محبت اور ماں جی کی لوریاں ۔۔۔عامر عثمان عادل

آج 23 مارچ ہے یوم پاکستان تجدید وفا کا دن، پوری قوم ایک نئے عزم و حوصلے سے سرشار اور آج رہ رہ کے مجھے ماں جی یاد آ رہی ہیں بچپن کی وہ خنک راتیں نہیں بھول پائیں  جب←  مزید پڑھیے

عالمی یوم مسرت اور خوشیوں کو ترسے لوگ ۔۔۔عامر عثمان عادل

کل اخبار کے اوراق پلٹتے ہوئے ایک سنگل کالمی خبر پر نظر پڑی پتہ چلا کہ آج عالمی یوم مسرت ہے تجسسس نے اس بارے میں جاننے کی تحریک دی ۔تفصیل اس اجمال کی یوں سامنے آئی  کہ 2012 میں←  مزید پڑھیے