کرنل ضیا شہزاد کی تحاریر
Avatar
کرنل ضیا شہزاد
کہ آپ اپنا تعارف ہوا بہار کی ہے

ٹارگٹ، ٹارگٹ، ٹارگٹ ۔۔کرنل ضیا شہزاد/آخری قسط

غلطی پہ غلطی چٹھیاں اور سندیسے کئی اقسام کے ہوا کرتے ہیں۔ محبوب کی چٹھی کے تصور سے ہی چراغ جل اُٹھتے ہیں جبکہ یاروں کے سندیسے خزاں کو بہار میں بدل دیتے ہیں۔ فوج کی دنیا میں البتہ ‘محبت←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ ،ٹارگٹ ،ٹارگٹ۔۔کرنل ضیا شہزاد/قسط24

لنگر گپ صاحبو! ہم تو لگی لپٹی رکھے بنا کہے دیتے ہیں کہ دنیا کا لذیذ ترین کھانابھی لنگر کے پکوان کے سامنے پانی بھرتا ہے۔ آپ سوچ رہے ہوں گے کہ یہ کوئی مرغ مسلم سے مزیّن کھانا ہو←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ، ٹارگٹ،ٹارگٹ ۔۔کرنل ضیا شہزاد/قسط23

شالا مسافر کوئی نہ تھیوے پوسٹنگ کے ضمن میں اللہ میاں نے ایم ایس برانچ کو خصوصی طور پر فری ہینڈ سے نواز رکھا ہے۔ ہم تو اپنے اور بیشمار ساتھیوں کے تجر بے سے اس نتیجے پر پہنچے ہیں←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ ٹارگٹ ٹارگٹ۔۔کرنل ضیا شہزاد/قسط 22

سادگی بہت سال پہلے ہمارا ایک بیٹ مین بشیر ہوا کرتا تھا جو کہ سادگی میں اپنی مثال آپ تھا۔ ایک مرتبہ کا ذکر ہے کہ ہماری یونٹ ایک طویل جنگی مشق کے سلسلے میں کھاریاں کے قریب ایک علاقے←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ ٹارگٹ ٹارگٹ۔۔کرنل ضیا شہزاد/قسط 21

گیٹ ٹو گَیدر گیٹ ٹو گَیدر یعنی میل ملاقات فوجی زندگی کا خاصہ ہے۔ سیاچن کی برف پوش چوٹیاں ہوں، کوئٹہ کے سنگلاخ پہاڑ ہوں، چولستان اور تھر کا صحرا ہو یا پنجاب کے میدانی علاقے، فوجی چاہے کہیں بھی←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ ٹارگٹ ٹارگٹ۔۔کرنل ضیا شہزاد/قسط 20

سر جی میں جاواں گئے وقتوں میں پشاور کے آرٹلری میس میں ہمہ وقت پندرہ سے بیس بیچلر آفیسرز کا ڈیرہ رہا کرتا تھا۔ ایک کمرے میں عموماً تین سے چار افسروں کا پڑاؤ ہوتا تھا۔ ایک غیر تحریری معاہدے←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ،ٹارگٹ،ٹارگٹ۔کرنل ضیا شہزاد/قسط19

سائیکل کا ڈرائیونگ لائسنس ناردرن لائٹ انفنٹری (این ایل آئی) کی کارگل کے محاذ پر شاندار کارکردگی سے سب بخوبی واقف ہیں۔ معرکہ کارگل سے پہلے این ایل آئی کی بٹالینز صرف شمالی علاقہ جات میں عسکری خدمات سر انجام←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ، ٹارگٹ، ٹارگٹ۔کرنل ضیا /قسط18

چُھٹی اور تعزیت چُھٹی سے زیادہ دلفریب لفظ شاید فوجی ڈکشنری میں ڈھونڈے سے بھی نہ ملے۔ چھٹی کی مثال عسکری زندگی کے صحرا میں ایک ہرے بھرے نخلستان کی مانند ہے جس کے تصور سے ہی روزمرہ کی کٹھنائیوں←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ ٹارگٹ ٹارگٹ ۔کرنل ضیاء شہزاد/قسط 17

چاچا کمپس رات کا وقت فوجی کارروائیوں کے لئے انتہائی موزوں تصور کیا جاتا ہے کیونکہ رات کی تاریکی میں دشمن کے خلاف سرپرائز حاصل کرنے میں آسانی ہوتی ہے۔ اسی بنا پر فوجی تربیت میں رات کے وقت آپریٹ←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ ،ٹارگٹ ،ٹارگٹ۔کرنل ضیا شہزاد/قسط 16

بِل وِل مئی 1998 میں ہماری شادی ہوئی۔ ہم فیملی کو پشاور شفٹ کرنے کا سوچ رہے تھے لیکن مشکل یہ آن پڑی کہ فوج کے اصول کے مطابق میریڈ اکاموڈیشن اور الاؤنسز کے لئے بلوغت کی حد 26 سال←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ ،ٹارگٹ ،ٹارگٹ۔کرنل ضیا شہزاد/قسط15

آئی ایم نان سوئمر! جون جولائی کے دن تھے اور نوشہرہ کا تپتا ہوا موسم۔ہمارے ڈویژن کی ایک انفنٹری یونٹ نے دو ماہ کی سرمائی جنگی مشقوں کے لئے دریائے کابل کے کنارے کیمپ کیا ہوا تھا اور ہم ان←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ،ٹارگٹ ،ٹارگٹ۔کرنل ضیا شہزاد/قسط14

پکے راگ! اگست 2012 میں جب ہم نے مجاہد آرٹلری کی ایک مایہ ناز فیلڈ یونٹ کی کمانڈ سنبھالی تو وہ کشمیر جنت نظیر کے حسین پہاڑوں پر ڈیپلائے تھی۔ ہمارا ہیڈکوارٹر ایک الگ تھلگ جگہ پر واقع تھا۔ نہایت←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ ،ٹارگٹ ،ٹارگٹ ۔کرنل ضیا شہزاد/قسط13

بجلی کے تار اور ایمنگ سرکل! سکول آف آرٹلری سے کورس کر کے واپس یونٹ میں پہنچے تو ہمیں گن پوزیشن آفیسر تعینات کیا گیا۔ اکتوبر کا مہینہ آتے ہی یونٹ تین مہینے کے لیے موسم سرما کی جنگی مشقوں←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ،ٹارگٹ،ٹارگٹ۔کرنل ضیا شہزاد۔قسط12

سند یافتہ طوطے! گنرز کو طوطوں سے تشبیہہ کیوں دی جاتی ہے اس بارے میں تو ہم یقین سے کچھ نہیں کہہ سکتے لیکن اتنا ضرور جانتے ہیں کہ بڑے سے بڑا طوطا بھی توپ چلانے اور رٹا لگانے میں←  مزید پڑھیے

ٹارگِٹ، ٹارگِٹ ، ٹارگِٹ ۔قسط 11/کرنل ضیا شہزاد

مرغے اور تیتر! یہ ان دنوں کا قصہ ہے جب یونٹسں دو دو تین تین مہینے لگاتار ایکسرسائز ایریا میں گزارا کرتی تھیں۔ خانہ بدوشی کا عالم ہوتا ۔ کبھی تو چل سو چل اس طرح سے ہوتی کہ سامان←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ،ٹارگٹ،ٹارگٹ۔قسط10،کرنل ضیا ءشہزاد

خالی کھوکھا! پی ایم اے کی حیدرپلاٹون اس لحاظ سے ایک منفرد مقام کی حامل تھی کہ اس میں زمانے کے ستائے ہوئے کیڈٹ حضرات کی اکثریت تھی۔ زیادہ تر دوستوں کو من موجی کہا جائے تو بے جا نہ←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ ،ٹارگٹ،ٹارگٹ۔قسط9

ایس آئی کیو (Sick in Quarters) کہنے کو تو تین حروف کا مجموعہ ہے لیکن اس کی تاثیر پورے مضمون سے بڑھ کر ہے۔ فوجی زندگی میں کبھی کبھار ایسا وقت بھی آ جاتا ہے جب طبیعت کی ناسازی اس←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ،ٹارگٹ،ٹارگٹ ۔قسط8

ڈوبتے کو بانس کا سہارا! پی ایم اے میں سوئمنگ کا آغاز کیا ہوا ،یار لوگوں کے لیے ایک نئی مصیبت کا دروازہ کھل گیا۔ ہم تو ٹھہرے ہی سدا کے نان سوئمرمگر ہمارے ساتھ اس صف میں کھڑے ہونے←  مزید پڑھیے

ٹارگِٹ، ٹارگِٹ ، ٹارگِٹ ۔قسط7

ہیبت ناک پروموشن! فوجی افسر پاس آؤٹ تو کندھے پر ایک پھول لے کر ہوتے ہیں تاہم اس پھول کو کھلانے کے لیے برابردو سال تک ایبٹ آباد کی پہاڑیوں کی خاک چھاننا پڑتی ہے۔ ٹھیک اسی طرح بعد کے←  مزید پڑھیے

ٹارگٹ، ٹارگٹ، ٹارگٹ، /قسط5

دیکھا جو کھا کے تیر! اکتوبر1998کی ایک کڑی دوپہر کو ہمیں گلگت کا مشکل سفر درپیش تھا۔وجہ اس کی یہ تھی کہ ہمیں اگلے چار ماہ کے لیے فورس کمانڈ ناردرن ایریاز یعنی ایف سی این اے کے ساتھ اٹیچ←  مزید پڑھیے