وہارا امباکر کی تحاریر

سخت سائنس، نرم سائنس (6)۔۔وہاراامباکر

“سائنسدان آجکل اس شائستہ فکشن کو قائم رکھنے کی کوشش کر رہے ہیں کہ تمام سائنس برابر ہے۔ ہر سائنسدان کا شعبہ اور طریقے ایک ہی جتنے مفید کام کرتے ہیں (سوائے کسی حریف کے، جو غلط سمت میں کام←  مزید پڑھیے

بیان (5)۔۔وہاراامباکر

سائنس کی مخالفت کرنے والے اگرچہ اپنی پوزیشن میں حقائق اور شواہد کو اپنے مخالف پاتے ہیں لیکن پھر بھی ان کے خیالات اتنے عام کیوں ہیں؟ یہ اہم سوال ہے۔ اور صرف کسی کے خیالات کا مذاق اڑا کر←  مزید پڑھیے

زید اور کورسیا (4)۔۔وہارا امباکر

ایک محفل میں کسی واقف کار سے بات چیت چھڑ گئی جو ناقابلِ یقین تھی۔ ہم انہیں “زید” کہہ لیتے ہیں۔ سیاست، ویکسین اور بہت کچھ اور۔ وہ کسی اور ہی متبادل حقیقت میں رہائش پذیر تھے۔ ہاں، مجھے بحث←  مزید پڑھیے

تفریق کا مسئلہ (3)۔۔وہاراامباکر

ہر کتے کی چار ٹانگیں ہوتی ہیں”۔ یہ فقرہ منطقی طور پر درست اور باربط ہے۔ اس میں ابہام نہیں (یعنی گول مول الفاظ نہیں جن کے متعدد معنی نکالے جا سکیں)۔ اس کو ایمپریکل طریقے سے ٹیسٹ کیا جا←  مزید پڑھیے

اصلی یا جعلی(2)۔۔وہاراامباکر

آئن سٹائن کے سامنے گریویٹی کی وضاحت کا مسئلہ تھا۔ نیوٹونین گریویٹی اور آئن سٹائن کی پیشکردہ تھیوری آف ریلیٹیوٹی میں آپس میں ایک پیراڈاکس تھا۔ عطارد کے مدار کا مشاہداتی ڈیٹا بھی اشارہ کر رہا تھا کہ نیوٹونین گریویٹی←  مزید پڑھیے

سائنس (1)۔۔وہاراامباکر

سچ اور جھوٹ۔ حقیقت اور فسانہ۔ ٹھیک اور غلط۔۔۔ ان میں تفریق کی جستجو انسانی کاوشوں میں سے اہم ترین ہے۔ جھوٹ کو قبول کر لینا یا سچ کا انکار کر دینا ۔۔۔ اس کے نتائج معاشروں اور قوموں کو←  مزید پڑھیے

سپیس ٹائم کی معذولی۔۔وہاراامباکر

تصور کریں وہ وقت جب آپ نے وادی کاغان کا سفر کیا تھا۔ یا گاڑیوں کے لئے کسی نئے ڈیزائن کا۔ یا اپنے قریبی دوست کے شادی کا۔ یا اس دن کا جب لاہور ریڈیو سٹیشن سے اعلان کیا گیا←  مزید پڑھیے

مچھلی کھانے والے درخت۔۔وہاراامباکر

مچھلی کھانے والے درخت کسی فکشن کہانی کے کردار لگتے ہیں لیکن یہ اصل ہیں اور ہماری زمین پر ہی ہیں۔ شمالی امریکہ کے مغربی ساحل کے کئی جنگلوں کے درخت سالمن مچھلی کھاتے ہیں۔ اور یہ ہمیں دکھاتا ہے←  مزید پڑھیے

خوشی کی سائنس؟۔۔وہاراامباکر

ماہرینِ نفسیات اس بارے میں کئی بڑی زبردست دریافتیں کر چکے ہیں کہ کیا شے ہمیں خوش کرتی ہے۔ ان میں سے کئی ایسی چیزیں ہیں جو کامن سینس کے خلاف ہیں۔ مثال کے طور پر ہم منفی تجربات سے←  مزید پڑھیے

اوٹزی کے عشق (40)۔۔وہاراامباکر

ستمبر 1991 میں ایک جرمن جوڑی کو کوہ پیمائی کرتے وقت ایک مردہ جسم ملا۔ اس کا نوے فیصد حصہ گلیشیر کی برف میں مضبوطی سے جما ہوا تھا۔ صرف سر اور کاندھے باہر تھے۔ برف میں یہ شخص بالکل←  مزید پڑھیے

مستقبل کی انجینئرنگ؟ (39)۔۔وہاراامباکر

پچھلی کئی دہائیوں سے نیوروسائنس کا ایندھن انجنیئرنگ سے آنے والی کنٹریبیوشن ہے۔ اوسلوسکوپ، ایم آر آئی مشینیں، الیکٹروڈ جیسے آلات ہیں۔ اب ہم اس وقت میں داخل ہو رہے ہیں جہاں پر یہ تعلق الٹ سکتا ہے۔ انجنیئرنگ نے←  مزید پڑھیے

بھیڑیا اور مریخ گاڑی (38)۔۔وہاراامباکر

کیلی فورنیا کے ایک تعلیمی ادارے نے آرٹس، میوزک اور فزیکل ایجوکیشن کے پروگرام بند کر دئے۔ وجہ؟ اس ادارے نے تینتیس کروڑ ڈالر خرچ کر کے کمپیوٹر، سرور، مانیٹر اور دوسری آلات خریدے تھے۔ بہت فخر اور بڑی دھوم←  مزید پڑھیے

شارٹ کٹ (38)۔۔وہاراامباکر

فلم “میٹرکس” میں مرکزی کردار نیو اور ٹرینیٹی ایک عمارت کی چھت پر ہیں۔ ایک ہیلی کاپٹر کھڑا ہے۔ نیو: “کیا تم یہ ہیلی کاپٹر اڑانا جاتی ہو؟” ٹرینیٹی: “ابھی نہیں” ٹرینیٹی اپنے ساتھی کو فون کرتی ہے اور پائلٹ←  مزید پڑھیے

وقت کے سکیل (34)۔۔وہاراامباکر

کسی تہذیب کو سمجھنے کے لئے آپ کو ایک ہی وقت میں مختلف رفتار پر ہوتی تبدیلیوں کی تہوں کو دیکھنا ہو گا۔ فیشن تیزی سے بدلتے ہیں جبکہ کسی قسم کے بزنس میں تبدیلی اتنی تیزی سے نہیں۔ عمارتوں←  مزید پڑھیے

یاد کی فزکس (33)۔۔وہاراامباکر

فرض کیجئے کہ آپ ایک ایلین ہوتے جو انسانی دماغ پہلی بار دیکھتے۔ انسان کو روزانہ کام کرتے وقت اسکا مشاہدہ کرتے۔ اس میں ڈینڈرائیٹ بڑھ اور سکڑ رہے ہوتے۔ کیمیکل پیغامات کی مقدار بدل رہی ہوتی۔ ریسپٹرز کی تعداد←  مزید پڑھیے

بے لچک یا بے لگام؟ (32)۔۔وہاراامباکر

دماغ کا ایک بڑا چیلنج زندگی کی طویل مدت کا ہے۔ جاندار کو قسم قسم کے چیلنج کا سامنا ہے۔ طرح طرح کا ماحول ہے۔ سالوں اور دہائیوں میں نئی انفارمیشن مسلسل آتی رہے گی۔ زندگی بھر سیکھنے کا چکر←  مزید پڑھیے

یاد کا گنجلک (30)۔۔وہاراامباکر

آئن سٹائن نے اپنے آخری الفاظ 1955 میں پرنسٹن کے ہسپتال میں ادا کئے۔ اپنی آخری سوچیں الفاظ میں بیان کیں۔ ہر ایک کو تجسس تھا کہ اس عظیم سائنسدان نے آخری وقت میں کیا کہا لیکن ہم کبھی بھی←  مزید پڑھیے

بچے اور بڑے (29)۔۔وہاراامباکر

بالغ بچوں پر رشک کرتے ہیں کہ وہ کس قدر آسانی سے نئی زبان سیکھ لیتے ہیں، ان کے ذہن میں نت نئے خیالات امڈ آتے ہیں۔ جہاز کی کھڑکی سے باہر جھانکنا ہو یا خرگوش کو پہلی بار ہاتھ←  مزید پڑھیے

بند ہوتے دروازے (28)۔۔وہاراامباکر

دماغ پر اپنے ابتدائی دنوں میں اس قدر تیزی سے نشان پڑتے ہیں کہ کئی بار اس وجہ سے مشکل ہو جاتی ہے۔ مثلاً، مرغابی کا بچہ انڈے سے نکلتا ہے اور پہلی حرکت کرتی ہوئی چیز کو اپنی ماں←  مزید پڑھیے

راستے (27)۔۔وہاراامباکر

آج سے پانچ ہزار سال پہلے کی دنیا کا سیاسی نقشہ بہت لچکدار تھا۔ مختلف واقعات نے اس کی سرحدوں کو مختلف سمتوں میں تشکیل دیا۔ آج یہ بڑی حد تک کسی شکل میں آ چکا ہے۔ تلواریں لہراتے اور←  مزید پڑھیے