میر ی ماں۔۔ثمرہ حمید خواجہ

میرے لئے

نرم ہوا کا جھونکا تھی میری ماں،

دُکھ کے مدو جزر میں سُکھ چین تھی میری ماں،

خوشیوں بھرے آنگن کو سُونا کر گئی میری ماں،

دنیا کے سارے غم اب تو اکیلے ہی سہنے پڑتےہیں،

دل کو دلاسہ دیتی ہوں۔۔

اور سوچتی ہوں کہ ہر لمحہ قریب ہی کھڑی ہے میری ماں،

بس یہی سوچ مجھے زندہ رکھتی ہے،

ورنہ یہ حقیقت تو تسلیم کرنا پڑتی ہے،

کہ خالقِ حقیقی سے جا ملی ہے میری ماں۔۔

 

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *