خورشید ندیم کے کالم کا جواب۔۔علی محمد فرشی

میرے خیال میں تو عارضہ ایک ہی ہے ’غیر سیاسی مداخلت‘دوسرا مرض اسی کالامحالہ نتی

  • جہ ہے۔ آپ آج کے سیاسی کلچر کے مطابق درست تشخیص کر رہے ہیں لیکن 1970کے پہلے عام انتخابات تک یہ صورتِ حال نہیں تھی۔سیاست میں سرمایہ کاری کا رجحان نواز شریف کے سیاست میں قدم رکھنے سے ہوااور پھر دیکھتے ہی دیکھتے سیاسی روایت کا حصہ بن گیا۔ ۱۹۷۰ء میں اسمبلیوں میں پہنچنے والوں میں کئی ایسے ارکان تھے جن کے پاس ذاتی گھر بھی نہیں تھا۔ ملک محمد جعفر آپ کے علاقے سےمنتخب ہوکر قومی اسمبلی میں گئے تھے اور پھر وفاقی وزیر بھی رہے۔ آپ اُن کے مزاج اور سماجی سیاسی اثرورسوخ کے بارے میں بھی خوب جانتے ہوں گے، البتہ آپ کے قارئین کے لیے یہ امر دلچسپی سے خالی نہ ہوگا کہ آج کے حالات میں اُن جیسا شریف آدمی شاید یونین کونسل کا ممبر بھی نہ بن سکے۔

    ’جہانگیر ترین‘ ناگزیرکیوں؟ ۔۔خورشید ندیم
    نصف صدی پہلے کے میڈیا اور آج کے میڈیا کو بھی پیشِ نظر رکھیں تو عوام سے سیاستدانوں کا رابطہ ۹۵ فیصد زیادہ مؤثر ہے۔ ضرورت موزوں قیادت کی ہے جس کے پاس عوام کے مسائل کے حل کے لیے حقیقت پسندانہ منشور ہو۔ اخلاص، دیانت داری اور سیاسی تنظیم کسی سیاسی جماعت کی خوبیاں نہیں لازمہ ہیں۔ قحط الرجال نہیں ، نایابی رجل ہے۔ سرسید جیسا مرض شناس ہو تو علاج ناممکن نہیں، تاہم موجود منظر نامے کی تبدیلی دستیاب سیاسی جماعتوں کے بس کا روگ نہیں رہا۔ خاکم بہ دہن خانہ جنگی کی چاپ سنائی دے رہی ہے۔ اگر امید کی کوئی کرن نظر آرہی ہے تووہ داخلی نہیں بلکہ تاریخ کی عالمی کروٹ ہے۔ پوسٹ کورونا عہد میں بہت کچھ تہہ و بالاہوتا نظر آرہا ہے۔ سرمایہ داری نظام کا خاتمہ تو ممکن نہیں لیکن اسے خود کو بچانے کے لیےاپنے اندر بنیادی تبدیلیاں لانا ازحدناگزیر قرار پائےگا۔لیگ آف نیشنز کی طرح، اقوام متحدہ کا موجودہ ڈھانچہ  برقرار  رہنا ناممکن ہے۔ایسے میں کسی پاکستانی سیاست دان سے کسی جوہری تبدیلی کا خواب محض ڈوبتے کو تنکے کا سہارا ثابت ہوگا،اس محاورے کا مطلب آخری بڑی غلطی ہے۔

    مکالمہ
    مکالمہ
    مباحثوں، الزامات و دشنام، نفرت اور دوری کے اس ماحول میں ضرورت ہے کہ ہم ایک دوسرے سے بات کریں، ایک دوسرے کی سنیں، سمجھنے کی کوشش کریں، اختلاف کریں مگر احترام سے۔ بس اسی خواہش کا نام ”مکالمہ“ ہے۔

    بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

    براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

    Your email address will not be published. Required fields are marked *