احساس۔۔سلمیٰ سیّد

SHOPPING

فضاء میں تیرتی ٹھنڈک
ہوا میں ناچتی بارش نے میری نیند توڑی تھی
گئے برسوں کی چاہت روح کے اطراف بکھری تھی
کسی کے لمس کی خواہش بدن میں جاگ اٹھی تھی
محبت ہی محبت بس رگوں میں رقص کرتی تھی
ابھی اس کیف میں تھی میں
کوئی یہ چیخ کر بولا
ذرا تم کو نہیں احساس میری بھی خبر
لے لو
میرا کمبل میرے سینے تلک کردو
میں اس فالج زدہ انسان کی محرم ہوئی ہوں اب
مجھے موسم مجھے چاہت مجھے بارش سے کیا مطلب !

SHOPPING

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست 2 تبصرے برائے تحریر ”احساس۔۔سلمیٰ سیّد

براہ راست تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *